مدھیہ پردیش:شیوراج سرکارکے خلاف جج کریں گے سائیکل یاترا

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 13th August 2017, 3:29 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،12اگست(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)ملک کی عدلیہ ان دنوں چرچے میں ہے۔ اب جہاں کچھ دنوں پہلے کلکتہ ہائی کورٹ کے ریٹائر جسٹس کرن کا معاملہ سرخیوں میں تھا، اب وہیں مدھیہ پردیش کے ایک ایڈیشنل ڈسٹرکٹ جج آر کے شرینواس کا معاملہ سرخیوں میں ہے۔ عدلیہ کے بعض قوانین کی مخالفت کرتے ہوئے کچھ جج مسلسل بحث میں بنے ہوئے ہیں۔مدھیہ پردیش ہائی کورٹ نے ایڈیشنل ڈسٹرکٹ جج شری نواس کو ڈسپلن شکنی کے لیے معطلی آرڈرتھمادیاہے۔ اس کی مخالفت میں شرینوواس نے فیصلہ کیاہے کہ اب وہ ایک سائیکل یاترا نکالیں گے۔آپ کو بتا دیں کہ گزشتہ 15 مہینوں میں چار بار ٹرانسفر ہونے کی مخالفت میں شری نواس گزشتہ ہفتے ہائی کورٹ کے باہر دھرنے پر بیٹھے تھے۔ دھرنے پر بیٹھنے سے پہلے ہی شرینواس کو نیمچ ضلع میں ٹرانسفر کر دیا گیا تھا۔ پہلے توانہوں نے اس تبادلے کی مخالفت کی لیکن بعد میں پوسٹ جوائن کر لی۔ اس کے کچھ ہی گھنٹوں کے اندر اندر ہائی کورٹ نے ڈسپلن شکنی کے لیے انہیں معطلی آرڈر تھما دیا تھا۔ ان کی یہ سائیکل یاترا ان کی آخری پوسٹنگ کی جگہ نیمچ سے شروع ہوکر جبل پور تک ہوگی، جہاں پر مدھیہ پردیش ہائی کورٹ واقع ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

بی جے پی کی نوٹ بندی اور جی ایس ٹی کا اثر گجرات انتخابات کے نتائج میں نظر آئے گا: اکھلیش یادو 

سماجوادی پارٹی کے سربراہ اکھلیش یادو نے کہا ہے کہ نوٹ بندی اور جی ایس ٹی کی وجہ سے تاجروں پر کافی برا اثر پڑا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کسان مخالف اور تاجر مخالف پالیسیوں کی وجہ سے بی جے پی کا گراف نیچے آتا جا رہا ہے۔

گجرات میں سات انتخابات میں دو بار ووٹنگ کے فیصدی میں کمی، دونوں بار بی جے پی کو نقصان تو کانگریس کا فائدہ 

گجرات میں ہفتہ کو پہلے مرحلہ میں19ضلعوں میں کی89نشستوں پرتقریباً 68فیصدی ووٹنگ ہوئی اس بار 2012کے اسمبلی انتخابات سے تقریباً 3فیصدی ووٹنگ ہوئی۔ 2012 میں پہلے مرحلے میں19 میں سے15 اضلاع میں ووٹنگ ہوئی تھی۔

خواتین کمیشن نے زائرہ وسیم کے ساتھ ہوئی چھیڑ خانی کو بتایا انتہائی شرمناک فعل 

قومی خواتین کمیشن نے زائرہ وسیم کے ساتھ شرمناک حادثہ قرار دیا ہے ۔زائرہ وسیم نے سوشل میڈیا کے ذریعے وستارا ایئر لائنزکی فلائٹ سے دہلی سے ممبئی جانے والی پرواز میں جس طرح ہراساں کیے جانے کی بات کہی ہے وہ بھارتی تہذیب و ثقافت کے شرم کی بات ہے ۔