آئندہ ایک سال میں ہونگے پارلیمانی انتخابات۔ اننت کمار ہیگڈے مرکز میں رہیں گے یا ریاست میں؟

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 26th May 2018, 8:21 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں | اسپیشل رپورٹس |

بھٹکل 26/جون  (ایس او نیوز) جون ۲۰۱۴ ؁ء میں اپنا پہلا سیشن شروع کرنے والی پارلیمان کی میعادمئی ۲۰۱۹ ؁ء کو ختم ہونے جارہی ہے۔ یعنی اس کا مطلب یہ ہے کہ آئندہ ایک سال کے اندر پارلیمانی انتخابات منعقد ہونگے۔ 

حالات پر خصوصی نظر رکھنے والوں کے علاوہ عام لوگوں کو بھی اس بات احساس ہوگیا ہے کہ ایک میعاد سے دوسری میعاد تک پہنچتے پہنچتے سیاسی ماحول پوری طرح بدل چکا ہے۔سوال یہ اٹھ رہا ہے کہ کیا آئندہ درپیش انتخاب میں حکومت کی ناکامیاں اپنا کوئی رول ادا کریں گی یا پھر جو حالات ہیں، انہیں میں خوش رہنے والا ماحول سامنے آئے گا، اور موجودہ حکومت کو ہی دوبارہ بر سر اقتدار آنے کا موقع دیا جائے گا۔

ضلع شمالی کینر ا  کی اگر بات کی جائے تو یہاں بھی کچھ تبدیلیاں ہونے کے امکانات نظر نہیں آرہے ہیں۔یہاں سب سے بڑا ایک سوال یہ کیا جارہا ہے کہ کیا اس مرتبہ پارلیمانی نشست پر موجودہ وزیر اننت کمار ہیگڈے انتخابی اکھاڑے میں اتریں گے یا پھر وہ ریاستی سطح پر ابھرنے کے لئے نئی حکمت عملی کے تحت اس سے دور رہیں گے۔کیونکہ اکثر لاپتہ رہ کر چھ مہینے میں ایک بار کبھی دہلی اور کبھی سرسی میں دکھائی دینے والے اننت کمار ہیگڈے اچانک ریاستی سیاست میں پچھلے کچھ مہینوں سے سرگرم ہوگئے ہیں۔اب ان کی دوڑ بھاگ صرف ضلع میں نہیں بلکہ ریاست بھر میں دکھائی دینے لگی ہے۔دوسری پارٹی کے لیڈروں کو بی جے پی میں شامل کروانے میں اننت کمار کا بڑا اہم رول صاف نظر آرہا ہے۔پارٹی کی طرف سے بھی اننت کمار ہیگڈے کو پارٹی کا ریاستی نائب صدر بنایا گیا ہے۔

پچھلے چھ مہینوں میں ان کی مشغولیت کو دیکھتے ہوئے انہیں ریاستی وزیراعلیٰ بنائے جانے کی بھی افواہیں اڑنے لگی تھیں۔اور کچھ مواقع پر اننت کمار ہیگڈے نے اپنی تقاریر میں اس بات کا بھی اشارہ کیا ہے کہ وہ اب پارلیمانی انتخاب میں حصہ لینے کا ارادہ نہیں رکھتے ۔پانچ مرتبہ رکن پارلیمان بناکر بھیجا یہی کافی ہے۔اسی پس منظر میں جانکاروں کاکہنا ہے کہ اننت کمار نے ریاستی گدی پر نشانہ سادھ لیا ہے۔اس اندازے کو تقویت دینے والا اشارہ اس بات سے بھی مل جاتا ہے کہ اس مرتبہ ریاستی اسمبلی کے لئے امیدواروں کو منتخب کرنے میں بھی کئی نشستوں پر اننت کمار نے اپنی بات منوائی ہے اور ہائی کمان سے اپنے پسندیدہ امیدوار کو ٹکٹ دلایا ہے۔اس لئے سیاسی پنڈتوں کا ایک حلقہ اننت کمار کو ریاستی سیاست میں قدم جماتے ہوئے دیکھ رہا ہے اور توقع یہ کی جارہی ہے کہ اس مرتبہ پارلیمانی الیکشن میں بی جے پی کی طر ف سے کوئی اور چہرہ میدان میں اترے گا۔

ایک نظر اس پر بھی

کاروار: بارش ہونے پر پہاڑ کھسکنے کا خدشہ : عوام خوف زدہ

ریاست کے ضلع کورگ اور ریاست کیرلا  میں بارش کی وجہ سے جو سنگین حالات پیدا ہونے سے وہاں جو آفت بپا ہوئی ہے وہ تو سب کے سامنے ہے ، یہاں کاروار تعلقہ کے ارگا ، سنکروباگ میں  ایک پہاڑ جیسے تیسے کھود کر   ادھورہ چھوڑ دینے سے خطرے کی گھنٹی بجارہاہے، اب پہاڑ کو نکال باہر کرنے کے دوران ...

کاروارساحل پر بیرونی ریاستوں کی ماہی گیر کشتیاں : ہفتہ بھر سے لنگر ڈالے تمل ناڈو، کیرلا وغیرہ کی بوٹس

بحرہ عرب میں چلنے والی طوفانی موجوں کی تاب نہ لاکر گذشتہ ایک ہفتہ سے پڑوسی ریاستوں کی ماہی گیر کشتیاں کاروار ساحل پر ڈیرہ ڈالے ہوئے ہیں۔ جہاں انہیں کھانے پینے کا انتظام کیاجارہاہے، اسی طرح کاروار بندر گاہ سے پڑوسی ریاستوں کے ماہی گیر اناج وغیرہ خرید کر لے جارہے ہیں۔ کیرلا اور ...

بھٹکل کے قریب منکی میں زمین کو لے کر ایک شخص کاقتل، بیوی زخمی؛ ملزم گرفتار

پڑوسی تعلقہ ہوناور کے منکی میں زمین کے معاملے کو لے کر ایک بھائی نے دوسرے بھائی کا قتل کردیا جبکہ اُس کی بیوی جو بیچ بچائو کرنے کی کوشش کررہی تھی،  زخمی ہوگئی، واردات آج پیر دوپہر کو منکی کے  تالمکّی میں  پیش آئی ۔

بھٹکل میں یوم آزادی کے موقع پر ویژن انڈیا مشن فاؤنڈیشن کے زیراہتمام تحریری مقابلہ؛ جیتنے والوں کو انعامات کی تقسیم

ویژن انڈیا مشن فاؤنڈیشن کے ذریعے ہائی اسکو ل طلبہ کے لئے جو تحریری مقابلہ منعقد کیاگیا تھااس میں اول دوم اور سوم مقام پانے والے طلبہ کو جشن آزادی کے موقع پرمنکولی میں واقع فاؤنڈیشن کے دفتر میں منعقدہ پروگرام کے دوران انعامات تقسیم کیے گئے۔

مڈکیری میں سیلاب سے متاثرہ علاقہ کے دورہ کے وقت ہی زمین کھسک گئی؛ ایم پی اور ایس پی بال بال بچ گئے

ضلع کورگ کے مڈکیری عرف مرکیرہ کے رکن اسمبلی اپاجو رنجن کے  بارش سے متاثرہ علاقوں کا  دورہ کرنے کے موقع پر اچانک زمین کھسکنے کی واردات پیش آئی ہے، بتایا گیاہے کہ ان کے ہمراہ ضلع کورگ کی ایس پی ڈاکٹڑ سومنا پنّیکر بھی موجود تھی۔

ریاست کرناٹک میں جاری موسلادھار بارش کی وجہ سے کئی اضلاع متاثر؛ مڈکیری میں قیامت صغریٰ کا منظر

بادل کے پھٹ پڑنے اور جگہ جگہ پہاڑاور زمینات کے کھسکنے سے کورگ ضلع کی حالت بہت ہی سنگین ہوگئی ہے۔ندیوں میں طغیانی ، تیز رفتار سے بہتا پانی ، کھسکتے پہاڑ و زمین کی وجہ سے کورگ ضلع  میں قیامت صغریٰ کا منظر ہے۔ جان ومال کے بھاری نقصان کو دیکھتے ہوئے راحت کاری کے لئے آرمی اور نیوی کے ...

بارش کے متاثرین کی بھرپور مدد کرنے شیوکمار کا مطالبہ

ریاستی وزیر برائے آبی وسائل ومیڈیکل ایجوکیشن ڈی کے شیوکمار نے کہا ہے کہ ریاست کے کورگ ، ملناڈ اور پڑوسی ریاست کیرلا میں مسلسل بارش کے سبب سیلاب کی جو صورتحال پیدا ہوئی ہے اس سے متاثرہ خاندانوں کی مدد کے لئے ریاستی عوام کو فراخدلی سے قدم بڑھانا چاہئے۔

مرحوم حضرت مولانا محمد سالم قاسمی کے کمالات و اوصاف ۔۔۔۔۔۔۔۔ بہ قلم: خورشید عالم داؤد قاسمی

دار العلوم، دیوبند کے بانی امام محمد قاسم نانوتویؒ (1832-1880) کے پڑپوتے، ریاست دکن (حیدرآباد) کی عدالتِ عالیہ کے قاضی اور مفتی اعظم مولانا حافظ محمد احمد صاحبؒ (1862-1928) کے پوتے اور بیسویں صدی میں برّ صغیر کےعالم فرید اور ملت اسلامیہ کی آبرو حکیم الاسلام قاری محمد طیب صاحب قاسمیؒ ...

اردو میڈیم اسکولوں میں نصابی  کتب فراہم نہ ہونے  سے طلبا تعلیم سے محروم ؛ کیا یہ اُردو کو ختم کرنے کی کوشش ہے ؟

اسکولوں اور ہائی اسکولوں کی شروعات ہوکر دو مہینے بیت رہے ہیں، ریاست کرناٹک کے 559سرکاری ، امدادی اور غیر امدادی اردو میڈیم اسکولوں اور ہائی اسکولوں کے لئے کتابیں فراہم نہ  ہونے سے پڑھائی نہیں ہوپارہی ہے۔ طلبا ، اساتذہ اور والدین و سرپرستان تعلیمی صورت حال سے پریشان ہیں۔

بھٹکل کڑوین کٹّا ڈیم کی تہہ میں کیچڑ اور کچرے کا ڈھیر۔گھٹتی جارہی ہے پانی ذخیرہ کی گنجائش

امسال ریاست میں کسی بھی مقام پر برسات کم ہونے کی خبرسنائی نہیں دے رہی ہے۔ عوام کے دلوں کو خوش کرنے والی بات یہ ہے کہ بہت برسوں کے بعد ہر جگی ڈیم پانی سے لبالب ہوگئے ہیں۔لیکن اکثریہ دیکھا جاتا ہے کہ جب برسات کم ہوتی ہے اور پانی کا قحط پڑ جاتا ہے تو حیران اور پریشان ہونے والے لوگ ...

سعودی عربیہ سے واپس لوٹنے والوں کو راحت دلانے کا وعدہ ؛ کیا وزیر اعلیٰ کمارا سوامی کو کسانوں کا وعدہ یاد رہا، اقلیتوں کا وعدہ بھول گئے ؟

انتخابات کے بعد سیاسی پارٹیوں کو اقتدار ملنے کی صورت میں کیے گئے وعدوں کو پورا کرنا بہت اہم ہوتا ہے۔ جنتادل (ایس) کے سکریٹری کمارا سوامی نے بھی مخلوط حکومت میں وزیرا علیٰ کا منصب سنبھالتے ہی کسانوں کا قرضہ معاف کرنے کا انتخابی وعدہ پورا کردیااور عوام کی امیدوں پر پورا اترنے کا ...