پارلیمانی انتخاب میں شمالی کینراسے ہوگا جے ڈی ایس کا امیدوار؛ کیا اُترکنڑا لوک سبھا حلقہ میں کانگریس کے پاس مضبوط لیڈر نہیں ؟

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 11th March 2019, 2:24 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

بھٹکل 11؍مارچ (ایس او نیوز) وزیر اعلیٰ کمارا سوامی کے پولیٹکل سیکریٹری ایچ این کوناریڈی کے حوالے سے میڈیا میں   خبریں آرہی ہیں کہ   جنتادل ایس اور کانگریس کے درمیان پارلیمانی سیٹوں کے بٹوارے پر جو فیصلہ ہوا ہے اس کے مطابق جے ڈی ایس کے لئے ریاست میں 10سیٹیں مختص رہیں گی ، اور ان دس سیٹوں میں ضلع شمالی کینرا کی سیٹ بھی شامل ہے۔ سمجھا جارہا ہے کہ  اُترکنڑا میں  جنتادل کی طرف سے  انند اسنوٹیکر اُمیدوار ہوں گے۔

میڈیا میں آنے والی رپورٹوں پر ضلع کے عوام سوال کررہے ہیں کہ کیا اُترکنڑا میں کانگریس کے پاس کوئی قابل لیڈر نہیں ہے جو مخالف پارٹی  کو شکست دے سکیں ؟ عوام کے ایک بڑے طبقے کا کہنا ہے کہ  اسمبلی انتخابات میں ضلع میں ایک بھی جے ڈی ایس  اُمیدوار کامیاب نہیں ہوپایا، البتہ  کانگریس کو دوسیٹوں پر کامیابی ملی تھی، اس بات کو  دیکھتے ہوئے سمجھا جاسکتا ہے کہ ضلع اُترکنڑا میں جے ڈی ایس بے حد کمزور ہے، مگر اس کے باوجود ضلع میں جے ڈی ایس اُمیدوار کو کھڑا کرنے کو لے کر ضلع انچارج وزیر پر عوام سوال اُٹھارہے ہیں کہ کہیں وہ  کسی اور  کا ہاتھ مضبوط کرنے کے لئے تو ایسا نہیں کررہے ہیں ؟

اُترکنڑا میں جنتادل اُمیدوار پر سمجھوتہ تقریباً طئے: رپورٹس کے مطابق کوناریڈی نے سرسی میں منعقدہ اخباری کانفرنس کے دوران بتایا کہ آئندہ دو دنوں کے اندر پارلیمانی کمیٹی کی میٹنگ میں امیدواروں کے تعلق سے قطعی فیصلہ کیا جائے گا البتہ  کینرا سیٹ پر جنتادل کے امیدوارکو انتخابی اکھاڑے میں اتارنے کی بات تقریباً طے ہوچکی ہے۔پارٹی کے اعلیٰ لیڈروں کے درمیان اس پر بات چیت آخری نتیجے پر پہنچ رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ جے ڈی ایس سپریمو دیوے گوڈا نے کانگریس سے 12سیٹوں کا مطالبہ کیا تھا اب جے ڈی ایس کے لئے دس سیٹوں پر بات طے ہوگئی ہے۔

انہوں نے جنتا دل کے کارکنان سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اس مرتبہ پارلیمانی انتخابات میں بی جے پی کو شکست دینا ہی اولین مقصد اور نشانہ ہے۔اس لئے کسی بھی حلقے میں ٹکٹ چاہے کانگریس کو ملے یا جنتادل کے امیدوار کو ملے ، ہر حالت میں متحد ہوکر بی جے پی کو شکست دینا ہی ہم سب کا مقصد ہونا چاہیے۔کوناریڈی نے مثال پیش کرتے ہوئے کہا کہ شیموگہ کے ضمنی انتحاب میں مشترکہ امیدوار میدان میں اتارنے سے بی جے پی کو شکست ہوجانے کی بات سب کے ذہن نشین رہنا چاہئے۔

جنتادل ایس میں ایک ہی خاندان والوں کی سیاست ہونے کے تعلق سے پوچھے گئے سوال پر انہوں نے کہا ہم سب لوگ دیوے گوڈا کے نواسے اور پوتوں کی طرح ہیں۔ ریاست میں جنتادل 20سیٹیں تک جیتنے کے قابل ہے۔جس امیدوار کی بھی جیت یقینی ہوگی صرف اسی کو ٹکٹ دی جائے گی ، اس سے ہٹ کر رشتے داری کی بنیاد پرٹکٹ تقسیم نہیں کیے جائیں گے۔

اس موقع پر کوناریڈی نے مرکزی حکومت پر الزام لگایا کہ وہ ریاستی حکومت کے ساتھ سوتیلا سلوکررہی ہے اور قحط سالی سے متاثرہ افراد کے لئے طلب کی گئی امداد مناسب مقدار میں فراہم نہیں کررہی ہے۔ اس کے علاوہ ہمارے اراکین پارلیمان بھی پارلیمنٹ میں علاقے سے متعلق مسائل کو اٹھا نہیں رہے ہیں۔ جنتادل کے صدر بی آر نائک نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ ضلع شمالی کینراکے مسائل حل کرنے کی طرف زیادہ توجہ دینے کی ضرورت ہے تاکہ یہاں کے پارٹی اراکین کے اندر جوش او رحوصلہ پیدا ہو۔ اس علاقے میں وزیر اعلیٰ کمارا سوامی کے بارے میں عوام کے اندر بہت ہی اچھے تاثرات پائے جاتے ہیں۔ اس وجہ سے جنتادل پارٹی کے اراکین انتخاب کے موقع پراپنی پارٹی کے لئے عوام کے سامنے جاکر ووٹ مانگنے کی پوزیشن میں ہیں۔انہوں نے کہا کہ’’ ضلع شمالی کینرا کی سیٹ جنتادل کو ملنے کی امید ہے، لیکن چاہے کانگریس کو ملے یا پھر جے ڈی ایس کو، ہمارے لئے فرقہ پرستوں کو شکست دینا ہی اہم بات ہوگی۔‘‘

جنتادل کے لیڈر ششی بھوشن ہیگڈے نے کہا کہ’’پتہ نہیں کیوں ملیناڈو کے عوام نے جنتادل سے رکن اسمبلی منتخب کرنے کا من نہیں بنایا تھا۔ اب ہمارے لئے خدمات انجام دینے کی نیت سے سرکاری سطح پر کونا ریڈی ہمارے پاس آئے ہوئے ہیں۔ لہٰذا سیٹ چاہے کسی بھی پارٹی کو ملے ، لیکن ہم دونوں پارٹی والوں کو چاہئے کہ اپنے آپ کو ایک ہی سمجھ کر انتخاب میں جیت حاصل کرنے کے لئے کام کریں۔‘‘

ایک نظر اس پر بھی

جنوبی کینرا ایم پی نلین کمار کٹیل نے کی مہاتما گاندھی کے قاتل ناتھو رام گوڈسے کی حمایت

بھوپال سے بی جے پی کی پارلیمانی امیدوار پرگیہ سنگھ ٹھاکور نے مہاتما گاندھی کے قاتل ناتھو رام گوڈسے کی ستائش کرتے ہوئے کہا تھا کہ وہ ایک اصلی دیش بھکت تھا۔ اس متنازعہ بیان کی ہرطرف سے مذمت ہورہی تھی مگراس کی حمایت میں اب ضلع جنوبی کینرا کے ایم پی نلین کمار کٹیل اور ضلع شمالی ...

سی پی آئی ایم کارکن قتل معاملے میں آر ایس ایس اور بی جے پی کے 7کارکنان کوسزائے عمر قیداورفی کس 1لاکھ روپے جرمانہ

کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا (ماکسسٹ) کے پی پویتھرن نامی کارکن کوقتل کیے جانے کے 12سال بعد اس جرم کا ارتکاب ثابت ہونے پر آر ایس ایس اور بی جے پی سے تعلق رکھنے والے 7کارکنان کو عدالت نے عمر قید کی سزا سنائی ہے۔

بھٹکل میونسپالٹی انتخابات کے لئے51 اُمیدواروں نے داخل کیا پرچہ نامزدگی؛ 9 اُمیدوار بلامقابلہ منتخب ہونا طئے؛ 29 مئی کو ہوں گے انتخابات

بھٹکل میونسپالٹی کے لئے 29 مئی کو ہونے والے انتخابات میں جملہ 23 سیٹوں کے لئے 51 اُمیدواروں نے  53 پرچہ نامزدگیاں داخل کی ہیں۔ جمعرات کو پرچہ داخل کرنے کی آخری تاریخ تھی جس کے ساتھ ہی  یہ صاف ہوگیا ہے کہ جملہ 23 سیٹوں میں  سے 9 سیٹوں پر کوئی مقابلہ نہیں ہوگا کیونکہ ان سیٹوں  پر صرف ...

منکی میں عورت اور اُس کی دو بیٹیوں کی نعشیں ملنے کا معاملہ؛ ہوگئی شناخت ؛ کیا اُس کے شوہر نے ہی ان تینوں کا قتل کرایا ؟

قریبی علاقہ منکی میں گذشتہ روز ایک خاتون اور دو لڑکیوں کی نعشیں  سمندر کنارے برآمد ہوئی تھیں، جس کے تعلق سے شبہ ظاہر کیا جارہا تھا کہ انہوں نے خودکشی کی ہوگی، مگر اس معاملے میں ایک نیا موڑ آگیا ہے جس کے مطابق  گمان کیا جارہا ہے کہ اُسی کے شوہر نے  اُس کا قتل کیا ہے۔

بنگلور میں 23/ مئی کو ووٹوں کی گنتی کے دوران امتناعی احکامات نافذ

23 مئی کو لوک سبھاانتخابات کے نتائج کا اعلان ہورہا ہے۔ انتخابات کے نتائج ظاہر ہونے کے مرحلے میں کوئی ناخوشگوار صورتحال پیدا نہ ہونے پائے اس کے لئے شہر کے پولیس کمشنر سنیل کمار نے 23مئی کی صبح چھ بجے سے شہر بھر میں امتناعی احکامات نافذ کرنے کا اعلان کیا ہے۔

کرناٹک کے کندگول اور چنچولی حلقوں میں آج ہوگی پولنگ؛ 85 پولنگ بوتھوں کو قرار دیا گیا ہے حساس

ریاست کرناٹک  کے دو اسمبلی حلقوں کندگول اور چنچولی کے لئے آج اتوار کو  ووٹ ڈالے جائیں گے۔ دونوں حلقوں پر کامیابی درج  کرنے کے لئے کانگریس جے ڈی ایس اتحاد اور بی جے پی نے ایڑی چوٹی کا زور لگایا ہے۔

محمد محسن کی فرض شناسی کو پھر نشانہ بنانے کی کوشش، الیکشن کمیشن تادیبی کارروائی کے لئے ہائی کورٹ سے رجوع

اڈیشہ میں انتخابی مشاہد کے طور پر متعین کرناٹک کیڈر کے آئی اے ایس افسر محمد محسن نے وزیراعظم مودی کے ہیلی کاپٹر کی تلاشی لے کر جس فرض شناسی کا ثبوت پیش کیا اسے فرض شکنی قرار دیتے ہوئے الیکشن کمیشن نے نہ صرف انہیں معطل کردیا بلکہ اب ایسا لگتا ہے کہ الیکشن کمیشن نے انہیں نشانہ ...