لوہے کا سامان لدا ہوا ٹرک اغوا کرنے کا پر اسرار معاملہ :کیا کمٹہ کے اسحاق اور ریحان زندہ ہیں؟ 

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 12th January 2018, 11:19 PM | ساحلی خبریں |

کمٹہ،12؍جنوری (ایس او نیوز)کوپل سے 24نومبر کولوہے کا سامان لاد کر کولہاپور جانے والا ٹرک ، اس کا ڈرائیور اور کلینر لاپتہ ہوجانے کا معاملہ پراسرار ہوتا جارہا ہے۔ کئی دنوں سے اس کیس کو سلجھانے میں لگی ہوئی پولیس کو امید بندھی تھی کہ تلاری گھاٹ پر دو لاشوں کے جو باقیات ملے ہیں ، وہ شایدکمٹہ سنتے گولی کے رہنے والے ٹرک ڈرائیور محمد اسحاق (34سال) اور کلینرریحان(20سال) کے ہوسکتے ہیں اوراس طرح یہ معمہ حل ہوجائے گا۔

لیکن اس معاملے میں نیا موڑ اس بات سے آگیا ہے کہ کمٹہ پولیس تلاری گھاٹ پر سڑی گلی حالت میں ملی لاشوں کے باقیات کی شناخت کے لئے اسحاق  اور ریحان کے گھر والوں کولے کر جب تک مہاراشٹر ا کے چندگڑھ پہنچ پاتی ، تب تک ان لاشوں کو دفنادیا گیاتھا۔اس طرح اب یقین سے یہ کہا نہیں جاسکتا کہ وہ لاشیں واقعی ٹرک ڈرائیور اور کلینر کی ہی تھیں، کیونکہ ظاہری شناخت کے لئے خاندان والوں کے پاس کوئی موقع ہی نہیں رہا۔

چندگڑھ مہاراشٹرا کے پولیس انسپکٹرکا کہنا ہے کہ اس معاملے کو سلجھانے کے لئے اب دونوں کے گھروالوں سے خون کا نمونہ حاصل کرلیا گیاہے، تاکہ ڈی این اے ٹیسٹ کے ذریعے اس سلسلے میں حتمی بات سامنے آجائے۔ڈی این اے کی رپورٹ چند گڑھ پولیس کو ایک ہفتے کے اندر ملنے کی توقع کی جارہی ہے۔ ان دونوں لاشوں کے بارے میں چندگڑھ پولیس نے بتایا کہ ایک لاش کا وزن تقریباً80کیلو  اور دوسری لاش کاوزن تقریباً50سے60کیلو گرام تھا۔ جبکہ لاپتہ ہونے والے اسحاق اور ریحان دونوں میں سے ہرایک کا وزن 50کیلو گرام سے زیادہ نہیں تھا۔اس وجہ سے یہ شک اور زیادہ قوی ہوگیا ہے کہ شاید وہ دو لاشیں گم شدہ ڈرائیور اور کلینر کی نہیں تھیں۔شکوک میں مزید اضافہ اس بات سے بھی ہوجاتا ہے کہ مہاراشٹرا کے دوسرے علاقے سے متعلقہ پولیس اسٹیشن میں دو اور نوجوانوں کے لاپتہ ہونے کی شکایت درج ہے۔ اس کے علاوہ مقامی افراد کا کہنا ہے کہ تلاری گھاٹ پر جو سڑی گلی لاشیں ملی تھیں اس میں سے ایک لاش خاتون کی لگ رہی تھی۔جہاں یہ لاشیں برآمد ہوئی تھیں اس کے اطراف میں 80کیلو میٹر تک کوئی آبادی نہیں ہے۔ اوراس سے پہلے بھی کئی بار یہاں اس قسم کی لاشیں برآمد ہوچکی ہیں۔

ان حالات کے پس منظر میں لاکھ روپے مالیت کے سامان کے ساتھ غائب ہونے والے ٹرک ڈرائیور اور کلینر کا یہ معمہ پولیس کے لئے مزید الجھنوں کا سبب بن گیا ہے ۔کیونکہ لاپتہ ہونے کے 20 -25دن بعدخالی ٹرک تو بر آمد ہوگیا تھا جس کا رنگ بدل دیا گیا تھا، مگر ڈرائیور اور کلینر کا اب تک بھی کوئی اتہ پتہ چل نہیں پایا ہے ۔ اور یہ سوال اپنی جگہ بنا ہوا ہے کہ اگر وہ لوگ زندہ ہیں تو پھر اپنے گھر لوٹنے یارابطہ قائم کرنے کی کوشش کیوں نہیں کررہے ہیں۔ اور اگر ان کا قتل ہوچکا ہے تو پھر ان کی لاشیں کہاں ہیں؟

ایک نظر اس پر بھی

22نومبر کووزیر اعظم نریندرمودی کے ہاتھوں رکھا جائے گا ’سٹی گیس ‘ کا سنگ بنیاد۔ منصوبے میں منگلورو شہر بھی شامل

مرکزی حکومت کی اسکیم’سٹی گیس‘ کا سنگ بنیاد وزیر اعظم نریندر مودی ہاتھوں22نومبر کو شام 4بجے نئی دہلی کے وگیان بھون میں رکھا جائے گا۔ اس منصوبے کے تحت آئندہ رسوئی گیس سلینڈروں کے بجائے براہ راست پائپ کنکشن کے ذریعے گھر گھر پہنچائی جائے گی۔

کاروار میں اترکنڑا ماہی گیروں کی جانب سے احتجاج کے بعد گوا حکومت پربڑھ گیا مچھلی کی درآمد پر لگائے گئے نئے قانون کو ہٹانے کا دبائو

کاروار میں اترکنڑا ماہی گیروں کی جانب سے احتجاج کے بعد گوا حکومت  مچھلی کی درآمد پر لگائے گئے نئے قانون کو ہٹانے کا دبائو بڑھ گیا ہے۔ کاروار میں ہوئے  سخت احتجاج کو دیکھتے ہوئے پیر کو گوا کے پنجی میں آل انڈیا فشرمین کانگریس (AIFC) اور گوا بوٹ یونین کے درمیان مسئلہ کے حل کے لئے ...

ضلع اُترکنڑا میں 23،24،25 نومبر کو ووٹرلسٹ میں ناموں کے  اندراج کے لئےچلائی جائے گی خصوصی مہم : کاروار میں ڈپٹی کمشنر ایس ایس نکول کا بیان

ہندوستانی الیکشن کمیشن کی ہدایات کے مطابق 23،24اور 25نومبر کو اترکنڑا ضلع میں ووٹرس کے نام اندراج کے لئے خصوصی مہم کا اہتمام کئے جانے کی اطلاع ڈپٹی کمشنر ایس ایس نکول نے دی۔