انکم ٹیکس ریٹرن داخل کرنے کے لیے پین کارڈ کے ساتھ آدھارکارڈ جوڑنا ضروری: سپریم کورٹ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 7th February 2019, 12:39 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،06 ؍فروری (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) سپریم کورٹ نے کہا ہے کہ انکم ٹیکس ریٹرن داخل کرنے کے لئے پین کارڈ کو آدھار کارڈ کے ساتھ جوڑنا لازمی ہے۔

جسٹس اے کے سیکری اور جسٹس ایس عبداالنذیر کی بنچ نے کہا کہ عدالت پہلے ہی اس معاملے میں فیصلہ سناتے ہوئے انکم ٹیکس قانون کی دفعہ 139 اے اے کو صحیح ٹھہرا چکی ہے۔عدالت عظمی نے شریا سین اورجے شری ستپڑے کو سال 2018-19کا انکم ٹیکس ریٹرن پین کارڈ نمبر کو آدھارسے جوڑے بغیر ہی داخل کرنے کی اجازت دینے کے دہلی ہائی کورٹ کے حکم کے خلاف مرکز کی اپیل پر یہ ہدایت دی۔بنچ نے کہا کہ ہائی کورٹ نے اس حقیقت کے پیش نظر اس کا حکم دیا تھا کہ معاملہ عدالت میں غور کے لیے زیر التوا ہے۔اس کے بعدچونکہ عدالت نے اس معاملے میں گزشتہ سال 26 ستمبر کو فیصلہ سنا دیا اور انکم ٹیکس قانون کی دفعہ 139 اے اے کو برقرار رکھا ہے، تو پین کارڈ نمبر کو آدھار سے جوڑنا لازمی ہے۔

بنچ نے مرکز کی اپیل کا نمٹارا کرتے ہوئے واضح کیا کہ ٹیکس سال 2019-20کے لیے انکم ٹیکس ریٹرن عدالت کے فیصلے کے مطابق داخل کرنا ہوگا۔پانچ رکنی آئینی بنچ نے 26 ستمبر، 2018 کو اپنے فیصلے میں مرکز کی آدھارمنصوبہ کو آئینی طور پر جائز قرار دیتے ہوئے کہا تھا کہ انکم ٹیکس ریٹرن دائر کرنے اور پین نمبر کے مختص کیلئے آدھار کارڈ لازمی ہوگا لیکن بینک اکاؤنٹس کیلئے آدھارکارڈ ضروری نہیں ہے۔اسی طرح موبائل کنکشن کے لیے ٹیلی کمیونیکیشن سروس کی فراہمی کے لیے بھی آدھار کارڈ نہیں مانگ سکتے ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

کورٹ نے راجیو سکسینہ کو بیرون ملک جانے کی اجازت دینے والے عدالت کے فیصلے پر روک لگائی

سپریم کورٹ نے آگسٹا ویسٹ لینڈ ہیلی کاپٹر سودے سے منسلک منی لانڈرنگ معاملے میں سرکاری گواہ راجیو سکسینہ کو دیگر بیماریوں کا علاج کرانے کے لئے بیرون ملک جانے کی اجازت دینے کے دہلی ہائی کورٹ کے حکم پر بدھ کو روک لگا دی