بھٹکل میں لائٹ فشنگ کا تنازع۔ روایتی ماہی گیروں نے اپنایا احتجاج کا راستہ؛ دو گروہوں کے درمیان اشتعال اور کشیدگی کے بعد عارضی طو رپر مسئلہ حل

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 11th March 2018, 1:10 AM | ساحلی خبریں |

بھٹکل 10؍مارچ (ایس او نیوز) پرشیئن بوٹس والے ماہی گیر لائٹ فشنگ کا طریقہ اپناتے ہیں، اس پر سرکار کی طرف سے ضلع شمالی کینرا میں پابندی لگی ہوئی ہے۔ مگر اس کے باوجود کھلم کھلا قانون کی خلاف ورزی کرتے ہوئے اسی طریقے پر مچھلیاں پکڑنے کا کام انجام دیا جارہا ہے جس کے خلاف روایتی طرز پر ماہی گیری کرنے والوں نے تنازع کھڑا کیا ہوا ہے۔

اس مسئلے کو حل کرنے کے لئے بھٹکل میں دو دن قبل ماہی گیروں کی اہم میٹنگ منعقد کی گئی تھی اور اس پر کافی بحث و مباحثہ کے بعد بھی کوئی نتیجہ نہیں نکلاتھا۔ 9مارچ کو جب قانون کی ان دیکھی کرتے ہوئے تقریباً 15 پرشیئن بوٹس والے لائٹ فشنگ سے مچھلیاں پکڑ کر کنارے پر لائے تو کشتیوں سے مچھلیاں خالی کرنے اور اس کی نیلامی کرنے میں روایتی طرز کے ماہی گیروں نے رکاوٹ کھڑی کردی ۔ان لوگوں نے ضد پکڑ لی کہ غیر قانونی طور پر شکار کی گئی مچھلیاں بھٹکل بندرپر خالی کروانے یا فروخت کرنے کی اجازت کسی حال میں نہیں دیں گے۔ جب دونوں گروہوں کے درمیان اشتعال اور کشیدگی کا ماحول پید ا ہوگیا تو محکمہ ماہی گیری بھٹکل کے اسسٹنٹ ڈائریکٹرروی نے موقع پر پہنچ کردونوں گروہوں کوسمجھانے بجھانے کی کوشش کی۔ پہلے تو بھٹکل بند رپر ہی ہنگامی میٹنگ منعقد کرنے کی تجویز پر غور کیا گیا ، مگر چونکہ وہاں پر ماہی گیر بڑی تعداد میں موجود تھے اس لئے ہاتھا پائی کی نوبت آنے کے  خدشہ کو دیکھتے ہوئے محکمہ ماہی گیری کے دفتر میں میٹنگ کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔جس میں فشنگ بوٹ، پرشیئن بوٹ اور دیسی کشتیوں میں ماہی گیری کرنے والوں کی تنظیموں سے دس دس نمائندوں کو شرکت کرنے کی اجازت دی گئی۔لیکن اس میٹنگ کے دوران ہر کوئی اپنی بات پر اڑا رہنے کی وجہ سے مسئلہ حل ہونے کے بجائے اور زیادہ پیچیدہ ہوگیا۔

اسسٹنٹ ڈائریکٹر روی نے محکمہ ماہی گیری کے ضلع ڈپٹی ڈائریکٹر کوبذریعہ فون بھٹکل کی اس صورتحال سے واقف کروایا۔اوران سے گفتگو کے بعد پرشیئن بوٹس والوں کے دعوے کو مسترد کرتے ہوئے کسی طور پر بھی لائٹ فشنگ کی اجازت نہ دینے کا فیصلہ سنایا اور متنبہ کیا کہ اگر خلاف ورزی ہوگی تو پھر ان کے خلاف قانونی کارروائی کرنا ضروری ہوجائے گا۔اس پر پرشیئن بوٹس یونین کے نمائندوں نے اپنی بے اطمینانی کا مظاہرہ کرتے ہوئے کہا ہم اس ناانصافی کو قبول نہیں کرسکتے ،کیونکہ کاروار اور ملپے وغیرہ میں لائٹ  فشنگ کی اجازت دی جارہی ہے، صرف بھٹکل میں ہم لوگوں پر ہی کیوں پابندی لگائی جارہی ہے۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ اگر لائٹ فشنگ پر پابندی لگانی ہی ہے تو کرناٹکا کے پورے ساحلی علاقے میں ہر جگہ اس کا اطلاق ہونا چاہیے۔ایسی صورت میں ہم لائٹ فشنگ پر پابندی کی حمایت کریں گے۔

اس اعتراض کا جواب دیتے ہوئے ماہی گیری کے افسر نے کہا کہ کہیں بھی لائٹ فشنگ کی اجازت نہیں دی جارہی ہے۔اور اس پابندی کو پوری طرح لاگو کرنے کا تیقن ضلع ڈپٹی ڈائریکٹر نے دیا ہے۔اس پر پرشیئن بوٹس کے نمائندوں نے کہا کہ آج انہیں بندر پر مچھلیاں خالی کرنے کاموقع دیا جائے ۔ دو تین دن تک وہ لائٹ فشنگ بند رکھیں گے اور اگر ملپے یا کاروار میں لائٹ فشنگ شروع کی گئی تو وہ بھی بھٹکل کے اطراف میں اس پر عمل کریں گے۔ پولیس نے صورتحال کو پرامن بنائے رکھنے کے لئے اپنے طور پر بندوبست کررکھاتھا۔ ایسالگتا ہے کہ تکرار اور تناؤ  کا ماحول کچھ دیر کے لئے تھم گیا ہے، لیکن یہ کہنا مشکل ہے کہ  مسئلہ پوری طرح حل ہوگیا ہے، دیکھئے آگے آگے ہوتا ہے کیا!

ایک نظر اس پر بھی

مینگلور کے قریب بنٹوال میں نابالغہ کی عصمت دری کی کوشش : تین ملزم گرفتار

چہارم جماعت میں زیر تعلیم نابالغہ کی عصمت دری کی کوشش کئے جانے کا واقعہ بنٹوال تعلقہ پانے منگلورو کے قریب گوڈینبلی میں پیش آیاہے۔ اس سلسلے میں بنٹوال شہری تھانہ پولس نےمعاملے کو لےکر تین ملزموں کو گرفتار کیا ہے۔

ہانگل کے ہیرور میں ہوئے تشدد کے واقعات اور غریب مسلمانوں کی گرفتاریوں کے بعد اے پی سی آر ٹیم نے کیا ہانگل دورہ؛ ایس پی سے کی ملاقات

ضلع ہاویری کے ہانگل تعلقہ کے ہیرور میں گنیش تہوار کے دوران ہوئے تشدد کے واقعات کے بعد  کئی غریب مسلمانوں کی گرفتاریوں نیز کئی مسلمانوں کے  تشدد میں زخمی ہونے  کی اطلاعات کے بعد  اے پی سی آر (اسوسی ایشن فور پروٹیکشن آف سیول رائٹس) کی ایک ٹیم  ہانگل پہنچی اور متاثرہ علاقہ کا ...

کیا یلاپور کے رکن اسمبلی ہیبار کودی جائے گی وزارت ؟ کیا دیش پانڈے کو ملے گا لوک سبھا کاٹکٹ ؟ ضلع کی سیات میں ہورہی ہے زبردست ہلچل

یلاپور کے کانگریس رکن اسمبلی شیورام ہیبار وزارت کے لئے شروع کی گئی کسرت کے نتیجے میں ضلع کی سیاست میں ہلچل پیدا ہوگئی ہے۔ دوسری مرتبہ رکن اسمبلی کے طورپر منتخب ہونے والے شیورام ہیبار ، وزارت کے لئے بضد معلوم ہوتےہیں۔ انہیں مطمئن کرنے کےلئے کانگریس کے سنئیر وزیر دیش پانڈے کو ...