’لائٹ فشنگ‘ میں مصروف ماہی گیر کشتیاں ضبط

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 10th February 2018, 8:33 PM | ساحلی خبریں |

کاروار ، 19؍فروری(ایس او نیوز) ضلع شمالی کینرا کی حدود میں تیز روشنی کے ذریعے ماہی گیری’لائٹ فشنگ‘ پر پابندی لگی ہوئی ہے۔ اس کی خلاف ورزی کرنے پر بحرعرب کے اس علاقے میں لائٹ فشنگ مصروف 6ماہی گیر کشتیوں کو ضبط کرلیا گیا ہے۔کوسٹ گارڈ کی طرف سے چھاپہ مارنے کی یہ کارروائی 6اور8جنوری کوکی گئی اور ضبط شدہ کشتیاں اگلی کارروائی کے لئے پولیس کے حوالے کی گئیں۔

محکمہ ماہی گیری کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر نے ان ماہی کشتیوں کے مالکان پر جرمانہ عائد کیا ہے۔کوسٹ گارڈکے کمانڈنگ افیسر اویناش چیٹ گُپی نے اپنے عملے کے ساتھ یہ کارروائی انجام دی۔

ایک نظر اس پر بھی

بنٹوال میں ٹپر ٹرک کی ٹکر سے موٹر بائک سوار ہلاک۔ دوسراشدید زخمی

نیشنل ہائی وے 75پر ٹول ناکے کے قریب پیش آنے والے حادثے میں ایک ٹپر ٹرک نے موٹر بائک کو ٹکر ماردی جس کے نتیجے میں بائک سوار موقع پر ہی ہلاک ہوگیا جبکہ بائک کی پچھلی سیٹ پر سوار شخص شدیدزخمی ہوگیا اور اس کی حالت بہت ہی نازک بتائی جارہی ہے۔

موڈبیدری میں شراب کے نشے میں دھت ڈرائیور کی وجہ سے سیریل ایکسیڈنٹ۔تین زخمی 

گاندھی نگر میں ایک شراب کے نشے میں دھت ڈرائیور نے دو مقامات پر گاڑیوں کو ٹکر ماری جس کی وجہ سے تین افراد زخمی ہوگئے ۔ موصولہ رپورٹ کے مطابق کیرالہ کا رہنے والا ساجو کمارنشے کی حالت میں جیپ ڈرائیو کرتے ہوئے منگلورو سے موڈبیدری کی طر ف آرہا تھا۔

بنٹوال میں کانگریس اور بی جے پی اراکین کے درمیان تصادم۔4زخمی

دو دن کے وزیر اعلیٰ بی ایس ایڈی یورپا کی طرف سے استعفیٰ دئے جانے کے بعدریاست کے مختلف مقامات پر جے ڈی ایس اور کانگریس کے کارکنان نے جشن منایا۔ اسی سلسلے کی ایک کڑی کے طور پرمنائے جارہے جشن کے دوران وٹلا کے کیلنجا نامی مقام پر بی جے پی اور کانگریس حامیوں کے درمیان تصادم ہوگیا جس ...

بی جے پی سرکار گرتے ہی بھٹکل میں جشن کا ماحول؛ کانگریس کے حمایتی ریلی کی شکل میں نکل کر شمس الدین سرکل پر چھوڑے پٹاخے

ریاست کرناٹک میں 55 گھنٹوں والی بی جے  پی سرکار گرنے کی اطلاع موصول ہوتے ہی بھٹکل میں جشن کا ماحول دیکھا گیا، بالخصوص  کانگریس کی حمایتی نوجوان کثیر تعداد میں بائک ریلی کےذریعے  نیشنل ہائی وے سے گذرتے ہوئے شمس الدین سرکل پر پہنچ کربلند ٹاور   پر کانگریس کا جھنڈا لہرایا، پھر ...