بلگاوی میں لیجسلیچر کا سرمائی اجلاس 3تا13 دسمبر: کمار سوامی

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 12th October 2018, 12:38 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،11؍اکتوبر(ایس او نیوز) ریاستی لیجسلیچر کا سرمائی اجلاس 3؍ دسمبر سے بلگاوی میں شروع ہوگا۔ ریاستی حکومت نے یہ فیصلہ لیا ہے کہ یہ اجلاس 3؍ سے 13دسمبر تک بلگاوی کے سورنا سودھا میں منعقد کیا جائے گا ۔ بتایا جاتاہے کہ وزیراعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی نے اس سلسلے میں کانگریس قائدین سے تبادلۂ خیال کیا ہے اور اس بات چیت کے نتیجے میں ہی طے ہوا ہے کہ بلگاوی کا دس دنوں کا لیجسلیچر اجلاس 3 تا 13دسمبر منعقد کیا جائے۔ ریاستی کابینہ میں عنقریب اس سلسلے میں فیصلہ لے کر باضابطہ اعلان کردیا جائے گا۔ وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کمارسوامی نے گزشتہ لیجسلیچر اجلاس میں بجٹ پر بحث کا جو اب دیتے ہوئے شمالی کرناٹک کی طرف مکمل توجہ دینے کا وعدہ کیا تھا۔ اور یہ بھی یقین دلایاتھا کہ بلگاوی کے سورنا سودھا میں لیجسلیچر اجلاس کے اہتمام کے ذریعے شمالی کرناٹک کے سلگتے مسائل کو سلجھانے کی طرف پوری توجہ دی جائے گی۔ کرناٹک کو متحد رکھنے اور شمالی کرناٹک کو علیحدہ ریاست بنانے کے مطالبے کو مسترد کرنے کی پہل کرتے ہوئے کمار سوامی نے شمالی کرناٹک میں بعض سرکاری محکموں کو بلگاوی منتقل کرنے کا بھی اعلان کیا۔ اس کے ساتھ ہی چند محکموں کے دفاتر دھارواڑ بھی منتقل ہوئے ہیں۔ اب بلگاوی میں لیجسلیچر کا سرمائی اجلاس منعقد کرنے کے فیصلے کی وجہ سے شمالی کرناٹک کی طرف توجہ اور بھی زیادہ بڑھ جائے گی۔ حالانکہ بعض خبروں میں کہاجارہا تھا کہ ریاستی حکومت بلگاوی میں لیجسلیچر اجلاس منعقد کرنے کے معاملے میں تذبذب کا شکار ہے، لیکن کانگریس قائدین سے ملاقات کے بعد واضح طور پر یہ بات سامنے آگئی ہے کہ حسب روایت لیجسلیچر کا سرمائی اجلاس بلگاوی میں ہی منعقد ہوگا۔

ایک نظر اس پر بھی

ریاستی وزارت سے مہیش کا استعفیٰ منظور

پانچ ریاستوں کے اسمبلی انتخابات میں کانگریس اور بی ایس پی کے درمیان مفاہمت کی کوشش ناکام ہوجانے کے نتیجے میں ریاستی کابینہ سے استعفیٰ دینے والے بی ایس پی کے وزیر این مہیش کو استعفیٰ واپس لینے کے لئے منانے میں جے ڈی ایس قیادت کی کوشش ناکام ہوجانے کے بعد آج وزیراعلیٰ نے مہیش کا ...

ای اسٹامپ پیپر اب آن لائن دستیاب ہوگا

کسی طرح کے دستاویزات تیار کرنے کے لئے درکار ای اسٹامپ کاغذ کی دستیابی اب تک ایک بہت بڑا مسئلہ ہوا کرتی تھی، 100 روپے کے اسٹامپ پیپر کے لئے بھی بھاری رقم ادا کرکے اسے حاصل کرنا پڑتا تھا،

دیوے گوڈا سدرامیا اور ڈی کے شیوکمار ایک ساتھ انتخابی مہم چلائیں گے

سابق وزیر اعظم ایچ ڈی دیوے گوڈا نے طے کیا ہے کہ تین لوک سبھا اور دو اسمبلی حلقوں کے ضمنی انتخابات کے مرحلے میں وہ اپنے دو کٹر سیاسی حریفوں سابق وزیراعلیٰ سدرامیا اور ریاستی وزیر آبی وسائل ڈی کے شیوکمار کے ہمراہ ایک ساتھ انتخابی مہم میں حصہ لیں گے۔