سیاست ایوان کے باہر چھوڑدیں اور پالیسی سازی میں خدمات مہیا کریں:وینکیانائیڈو 

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 5th August 2018, 12:50 AM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

نئی دہلی:4/ اگست (ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا) نائب صدر جمہوریہ جناب ایم وینکیا نائیڈو نے کہا کہ پارلیمنٹ کے ارکان کو اپنی سیاست کو ایوان کے باہر چھوڑ دینا چاہیے اور غریبوں کے فائدے کے پروگرام اور پالیسیوں کی تیاری میں اپنی بہترین خدمات پیش کرنا چاہیے۔ انھوں نے یہ بات آج یہاں راجیہ سبھا کے نومنتخب اور نامزد ارکان کے واقفیت پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔نائب صدر جمہوریہ نے کہا کہ ہم سب کے لیے قوانین مقدس ہیں اور ہر سبھی قانون سے بندھے ہیں۔ انھوں نے مزید کہا کہ قوانین عوامی اہمیت کے حامل امور کو اٹھانے کے لیے مناسب آلہ فراہم کرتے ہیں۔ قانون کی تعمیل سے ہی ہم دستیاب اوقات کو موثر طریقے سے بروئے کار لاسکتے ہیں۔نائب صدر جمہوریہ نے کہا کہ پارلیمانی جمہوریت متنوع خیالات کے اظہار کے لئے مناسب موقع فراہم کرتی ہے۔ جب کبھی کسی مدعا پر بحث ہوتی ہے تو کثیر جہتی نقطہ نظر ظاہر ہوتے ہیں اور حتمی قانون مزید جامع ہونے کی توقع ہوتی ہے۔راجیہ سبھا کے ضابطوں کا ذکر کرتے ہوئے نائب صدر جمہوریہ نے کہا کہ ان ضابطوں کی تعمیل سے ایوان کے احسن طریقے سے چلانے میں مدد ملتی ہے۔ مذکورہ واقفیت پروگرام سے آپ سبھی کو ان اہم ضابطوں سے واقف ہونے میں مدد ملے گی۔

ایک نظر اس پر بھی

جے پی سی سے جانچ کرانے کا راستہ ا بھی کھلا ہے، عام آدمی پارٹی نے کہا،عوام کی عدالت اورپارلیمنٹ میں جواب دیناہوگا،بدعنوانی کے الزام پرقائم

آپ کے راجیہ سبھا رکن سنجے سنگھ نے کہا ہے کہ رافیل معاملے میں جمعہ کو آئے سپریم کورٹ کے فیصلے کے باوجود متحدہ پارلیمانی کمیٹی (جے پی سی) سے اس معاملے کی جانچ پڑتال کرنے کا اراستہ اب بھی کھلا ہے۔

رافیل پر سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد ، راہل گاندھی معافی مانگیں: بی جے پی

فرانس سے 36 لڑاکا طیارے کی خریداری کے معاملے میں بدعنوانی کے الزامات پر سپریم کورٹ کی کلین چٹ ملنے کے بعد کانگریس پر نشانہ لگاتے ہوئے بی جے پی نے جمعہ کو کہا کہ کانگریس پارٹی اور اس کے چیئرمین راہل گاندھی ملک کو گمراہ کرنے کیلئے معافی مانگیں۔

بھٹکل کے مرڈیشور میں دو لوگوں پر حملے کی پولس تھانہ میں دو الگ الگ شکایتیں

تعلقہ کے مرڈیشور میں کل جمعرات کو  دو لوگوں پر حملہ اور پھر جوابی حملہ کے تعلق سے آج مرڈیشور تھانہ میں دو الگ الگ شکایتیں درج کی گئی ہیں اور پولس نے دونوں پارٹیوں کی شکایت درج کرتے ہوئے چھان بین شروع کردی ہے۔