سکیورٹی وارننگ کے سبب کویت نے بیروت کے لیے پروازیں روک دیں

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 14th April 2018, 1:10 PM | عالمی خبریں |

بیروت13اپریل (ایس او نیوز؍ آئی این ایس انڈیا)کویت کی فضائی کمپنی نے جمعرات کے روز سے لبنان کے دارالحکومت بیروت کے لیے اپنی پروازیں روک دینے کا اعلان کیا ہے۔ کویت کی سرکاری خبر رساں ایجسنی کونا کے مطابق اس بات کا اعلان بدھ کی شب تاخیر سے جاری ہونے والے ایک بیان میں کہی گئی۔بیان کے مطابق یہ فیصلہ لبنان کے اطراف فضائی حدود میں ہوابازی کے خطرے سے متعلق سکیورٹی انتباہات کی بنیاد پر کیا گیا۔بیان میں مزید کہا گیا کہ قبرص کے حکام کی جانب سے سنجیدہ نوعیت کے سنجیدہ سکیورٹی انتباہات کے کویت کی فضائی کمپنی اپنے عزیز مسافروں کی سلامتی کے واسطے 12 اپریل سے اگلا نوٹفکیشن آنے تک بیروت کے لیے اپنی پروازوں کا سلسلہ موقوف کر رہی ہے۔واضح رہے کہ منگل کی شام فضائی سلامتی کی یورپی تنظیم (یورو کنٹرول) نے فضائی کمپنیوں کو متنبہ کیا تھا کہ وہ آئندہ 72 گھنٹوں کے دوران شام پر فضائی حملوں کے امکان کے سبب مشرق وسطی میں خبردار رہیں۔یورو کنٹرول کا کہنا تھا کہ مذکورہ عرصے کے دوران فضا سے زمین میں مار کرنے والے میزائل یا کروز میزائل اور یا پھر ایک ساتھ دونوں کا استعمال کیا جا سکتا ہے۔ اس کے علاوہ وائرلیس نیوی گیشن سسٹم کے عمل میں وقفے وقفے سے خلل پڑنے کا بھی امکان ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

نیویارک کے مرکزی علاقے میں زیر زمین بھاپ پائپ لائن پھٹنے سے دھماکے

نیویارک شہر کے فائر ڈپارٹمنٹ نے کہا ہے کہ مین ہیٹن کی گلیوں میں زیر زمین گزرنے والا ایک ہائی پریشر بھاپ کا پائپ پھٹ گیا جس کے نتیجے میں ففتھ ایونیو کے مرکز میں واقع ایک سوراخ سے بھاپ نکل کر ہوا میں پھیلنا شروع ہو گئی۔

ترک بچوں اور خواتین کا جنسی استحصال کرنے والا خود ساختہ مذہبی رہنما گرفتار

استنبول کی ایک عدالت نے بزعم خود ایک اسلامی فرقے کے رہنما اور ٹی وی پر تبلیغ کرنے والی شخصیت عدنان اوکتار کو 115 دیگر پیروکاروں سمیت مختلف الزامات کی مزید تفتیش کے لئے پولیس کے حوالے کر دیا ہے۔ عدنان اوکتار پر جرائم پیشہ گینگ قائم کرنے، دھوکادہی اور جنسی استحصال کے الزامات ہیں۔

مقتدیٰ الصدر نے مظاہرین کی حمایت کردی ،نئی حکومت کی تشکیل مُوَخَّر کرنے کا مطالبہ

عراق کے سرکردہ شیعہ لیڈر مقتدیٰ الصدر نے ملک کے جنوبی صوبوں میں احتجاج کرنے والے مظاہرین کی حمایت کردی ہے او ر تمام متعلقہ سیاست دانوں پر زور دیا ہے کہ وہ مظاہرین کے بہتری شہری خدما ت کی فراہمی کے مطالبات پورے ہونے تک نئی حکومت کی تشکیل کے لیے مذاکرات کا سلسلہ معطل کردیں ۔