اب سعودی عرب میں مرتد کی سزا کو منسوخ کرنے کی خبریں ، تاہم مملکت نے کی تردید

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 3rd December 2017, 8:03 PM | عالمی خبریں |

ریاض،3دسمبر ( ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)سعودی عرب میں مرتد کی سزا کو منسوخ کردئے جانے کی خبریں گردش کررہی ہیں۔ بعض اخبارات کی رپورٹوں میں دعوی کیا جارہا ہے کہ سعودی حکومت نے خفیہ طور پر مرتد سے متعلق قانون میں تبدیلی کرتے ہوئے مرتد کی موت کی سزا ختم کردی ہے۔تاہم سعودی عرب نے ایسی خبروں کی سختی سے تردید کی ہے ۔سعودی عرب کی پریس ایجنسی ایس پی اے کے مطابق حکومت کے ذمہ دار ذرائع کا کہنا ہے کہ مرتد سے متعلق قانون اور مرتد کی سزا ریاست کے بنیادی عدالتی نظام کا حصہ ہے، اس میں کوئی تبدیلی کی گئی ہے اور نہ ہی ایسا کرنے کا سوچا جا رہا ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ سعودی عرب میں مرتد کی سزا منسوخ کیے جانے سے متعلق تمام اطلاعات اور خبریں من گھڑت اور بے بنیاد ہیں۔پبلک پراسیکوٹر نے ملک میں دستور کے خلاف من گھڑت افواہیں پھیلانے والوں کے خلاف سخت اقدامات کا فیصلہ کیا ہے۔گلف ڈیجیٹل نیوز کے ایک رپورٹ کے مطابق پبلک پراسیکوٹر نے ملک میں دستور کے خلاف من گھڑت افواہیں پھیلانے والوں کے خلاف سخت اقدامات کا فیصلہ کیا ہے۔قابل ذکر ہے کہ دن دنوں سعودی عرب سے متعلق متعدد افواہیں پھیلائی جارہی ہے ۔ کچھ دنوں قبل خبر آئی تھی کہ سعودی عرب میں عید میلاد النبی کی چھٹی کا اعلان کیا گیا ہے ، جو بھی محض افواہ ہی نکلی ۔

ایک نظر اس پر بھی

کرد ملیشیا کی عفرین میں ترکی کے خلاف اسدی فوج سے معاہدے کی تردید

شام کے علاقے عفرین میں ترک فوج کا مقابلہ کرنے والی کردملیشیا ’کرد پروٹیکشن یونٹ‘ کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں ان خبروں کی سختی سے تردید کی ہے جن میں دعویٰ کیا گیا تھا کہ کرد ملیشیا نے ترکی کا مقابلہ کرنے کے لیے اسدی فوج کے ساتھ ساز باز کرلیا ہے۔