شاہ سلمان کے دورِ حکومت میں سعودی عرب میں تاریخی ڈھا نچہ جاتی اصلاحات

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 3rd June 2018, 11:32 AM | خلیجی خبریں |

ریاض،2جون ( ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا )شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے 2015میں شاہ عبداللہ کے انتقال کے بعد عنانِ اقتدار سنبھالی تھی۔ان کے زیر قیادت حکومت نے تب سے اب تک بڑے پیمانے پر مرحلہ وار ڈھانچا جاتی اصلاحات پر عمل درآمد کیا ہے۔اس کا مقصد سعودی عرب میں خواہشات پر مبنی ترقیاتی اہداف کا حصول ہے۔شاہ سلمان نے ہفتے کے روز محنت ، اسلامی امور اوراطلاعات و ثقافت کے ورزا کو تبدیل کردیا ہے۔انھوں نے ایک شاہی فرمان کے ذریعے ثقافت کی اطلاعات سے الگ ایک نئی وزارت قائم کردی ہے۔انھوں نے مقدس شہر مکہ کے لیے الگ سے ایک شاہی کمیشن اور ماحول کے تحفظ کے لیے ایک کمیشن کے قیام کا اعلان کیا ہے اور ساحلی شہر جدہ میں واقع تاریخی جگہوں کے تحفظ کے لیے ایک اتھارٹی کے قیام کی منظوری دی ہے۔شاہی فرامین کے تحت داخلہ ، ٹیلی مواصلات ، ٹرانسپورٹ ،توانائی ، صنعت اور معدنیات کی و زارتوں میں متعدد نائبین کا تقرر کیا گیا ہے۔شاہ سلمان نے شاہی کمیشن برائے ینبوع اور جبیل اور شاہ عبداللہ سٹی برائے جوہری اور قابل تجدید توانائی کے نئے سربراہوں کا بھی تقر ر کیا ہے۔تجزیہ نگاروں نے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ سعودی عرب میں انتظامی اصلاحات کا مقصد ریاستی اداروں کو افسر شاہی کی سرخ فیتے کی روایتی پابندیوں اور رکاوٹو ں سے آزاد کرنا ہے کیونکہ ان کی وجہ سے انتظامیہ کی کارکردگی اور فعالیت متاثر ہو رہی ہے۔ان کے بہ قول ڈھانچا جاتی اصلاحات دراصل موثر کارکردگی کے مقصد کے حصول کے لیے ایک مسلسل عمل ہیں۔مختلف اعلیٰ عہدوں پر نئے تقرر اور وزراء سے یہ بھی ظاہر ہوتا ہے کہ مختلف سرکاری محکموں میں اب نجی شعبے کو بھی شریک کار کیا جارہا ہے۔جیسا کہ نجی شعبے سے تعلق رکھنے والی کاروباری شخصیت احمد بن سلیمان الراجحی کو محنت اور سماجی ترقی کی وزرات کا قلم دان سونپا گیا ہے۔انھیں علی بن ناصر الغفیص کی جگہ یہ ذمے داری سونپی گئی ہے۔حکومتی ذرائع کے مطابق سعودی عرب کی 90 فی صد وزارتوں میں انڈر سیکریٹریز تعینات نہیں۔ نئی اصلاحات سے ان وزارتو ں میں اب اعلیٰ تعلیمی اہلیت اور قابلیت کے حامل افراد کے بہ طور انڈر سیکریٹری تقرر کی راہ ہموار ہوگی۔

ایک نظر اس پر بھی

فرش سے عرش تک لبیک اللھم کی صدائیں،مناسک حج کا آغاز؛ عرفات پہنچنے والے لاکھوں افراد میں 175025 ہندوستانی عازمین بھی شامل

دنیا بھر سے ہر قوم و نسل کے تقریبا 30 لاکھ عازمین حج جس میں ہندوستان کے 175025 عازمین بھی شام ل ہیں،  بیت اللہ کیلئے مکہ مکرمہ میں ہیں جو عمرے کی ادائیگی کے بعد رات سے ہی بسوں اور دیگر گاڑیوں میں سوار ہوکر اور پیدل منیٰ پہنچ رہے ہیں۔

بھٹکل کے ہونہار طالب العلم صلاح الدین ایوب سدی باپا نے لی پیرس سے ماسٹر ڈگری

بھٹکل انجمن انجینرنگ کالج سے ڈگری حاصل کرنے والے صلاح الدین ابن ایوب سدی باپا نے فرانس کے مشہور شہر  پیرس سے  ماسٹر آف ڈگری حاصل کرتے ہوئے  قوم و ملت کا نام روشن کردیا ہے۔ موصوف معروف قومی سماجی  خدمت گار  مرحوم ظفر علی  معلم کے  نواسے اور مسقط  سرکاری اسپتال کی ڈاکٹر ...

سعودی عربیہ کو الوداع کہہ کر وطن لوٹنے کے بعدساحلی علاقے میں ICSE اور انگریزی میڈیم اسکولوں میں بڑھ گئے بچوں کے داخلے 

سعودی عربیہ میں غیر وطنی باشندوں اور ملازمین کے تعلق سے نئے اور سخت قوانین سے پریشان ہو کر غیر رہائشی ہندوستانیوں کے وطن واپس لوٹنے کے بعد ان کے بچوں کو اسکولوں میں داخل کرانے  کا مسئلہ بھی کافی سنگین ہوگیا ہے۔ مسئلہ یہ ہے کہ ریاست کرناٹک کے کسی بھی اسکول میں داخل  کرنے کی ...

سعودی کے نئے قانون سے ہندوستانی عوام سخت پریشان؛ 15 ماہ میں 7.2 لاکھ غیر ملکی ملازمین نے سعودی عربیہ کو کیا گُڈ بائی؛ بھٹکل کے سینکڑوں لوگ بھی ملک واپس جانے پر مجبور

سعودی عرب میں ویز ے کے متعلق نئے قانون کا نفاذ ہوتے ہی بھٹکل کے ہزاروں لو گ اپنی صنعت کاری، تجارت اور ملازمت کو الوداع کہتے ہوئے وطن واپس لوٹنے پر مجبورہوگئے  ہیں۔ اترکنڑا ضلع کے اس خوب صورت شہر بھٹکل کے  قریب 5000 لوگ سعودی عربیہ میں برسر روزگار تھے جن میں سے کئی لوگ واپس بھٹکل ...

بھٹکل مسلم جماعت بحرین کا خوبصورت عید ملین پروگرام 

بھٹکل مسلم جماعت بحرین نے 28/جون 2018ء کو عید ملن کی تقریب مشہور ڈپلومیٹ ریڈیشن بلو(Diplomat  Radssion  Blu) فائیو اسٹار ہوٹل میں بنایا۔ محفل کاآغاز تقریباً رات 10بجے عزیزم محمد اسعدابن محمدالطاف مصباح کی خوبصورت قرآن سے ہوا۔ محمد عاکف ابن محمد الطاف مصباح نے قرآن کاانگریزی ترجمہ پیش ...

بھٹکل :صحافتی میدان کے بے لوث اورمخلص خادم  ساحل آن لائن کے مینجنگ ایڈیٹر  ایوارڈ کے لئے منتخب

اترکنڑا ضلع ورکنگ جرنالسٹ اسوسی ایشن کی طرف سے دئیے جانےو الےمعروف ’’جی ایس ہیگڈے  اجِّبل ‘‘ ایوارڈ کے لئے اپنی جوانی کی ابتدائی  عمر سے ہی سوشیل میڈیا کے ذریعے صحافت کی دنیا میں قدم رکھتے ہوئے ایمانداری کے ساتھ قوم وملت کی بے لوث اور مخلصانہ خدمات انجام دینے والے ساحل آن ...