شاہ سلمان نے سرکاری استغاثہ میں "انسدادِ بدعنوانی" کے دفاتر کی منظوری دے دی

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 11th March 2018, 8:11 PM | خلیجی خبریں |

ریاض 11مارچ(ایس او نیوز؍ آئی این ایس انڈیا )سعودی فرماں روا شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے مملکت میں سرکاری استغاثہ کے اندر خصوصی شعبوں کے قیام کی منظوری دی ہے جو بدعنوانی سے متعلق معاملات کی تحقیقات اور اس سلسلے میں استغاثہ کی کارروائی کریں گے۔ یہ شعبے براہ راست اٹارنی جنرل سے مربوط ہوں گے۔سعودی عرب کے اٹارنی جنرل شیخ سعود بن عبداللہ المعجب کے مطابق شاہ سلمان کی جانب سے مذکورہ دفاتر کے قیام کی منظوری ہر قسم کی بدعنوانی کے خلاف جنگ میں سعودی فرماں روا کی بھرپور توجہ اور دل چسپی کا مظہر ہے۔ اس کا مقصد وطن اور اس کے وسائل کا تحفظ ہے۔اٹارنی جنرل نے باور کرایا کہ خادم حرمین شریفین اور سعودی ولی عہد بدعنوانی کے خلاف جنگ اور اس معاشرتی لعنت کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کی شدید خواہش رکھتے ہیں۔واضح رہے کہ حالیہ شاہی فرمان سے قبل بدعنوانی کے مقدمات کو پبلک سروس کرائم ڈپارٹمنٹ کے تحت نمٹایا جاتا تھا۔

ایک نظر اس پر بھی

سعودی عرب: سرکاری شعبہ کی31 مئی سے بتدریج بحالی اوراندرون ملک پروازیں چلانےکا اعلان

سعودی عرب نے اتوار31 مئی سے اندرون ملک پروازوں کی بحالی کا اعلان کیا ہے اور کہا ہے کہ سرکاری شعبے کے ملازمین بھی اسی تاریخ سے بتدرج اپنے دفاتر میں آنا شروع ہوجائیں گے اور 14 جون تک تمام سرکاری عملہ دفاتر میں مکمل طور پر حاضر ہوجائے گا۔