خاشقجی کے اغوا اور قتل سے متعلق رپورٹیں من گھڑت ہیں : خالد بن سلمان کا بیان

Source: S.O. News Service | By Staff Correspondent | Published on 9th October 2018, 5:59 PM | خلیجی خبریں |

دبئی9اکتوبر ( آئی این ایس انڈیا ؍ایس او نیوز) واشنگٹن میں سعودی عرب کے سفیر شہزادہ خالد بن سلمان نے باور کرایا ہے کہ تحقیقات کے ذریعے صحافی جمال خاشقجی کے معاملے میں کئی ایک انکشافات سامنے آئیں گے۔

منگل کے روز اپنے ایک بیان میں خالد بن سلمان نے واضح کیا کہ اگرچہ تحقیقات ابھی اختتام کو نہیں پہنچی ہیں تاہم اس کے باوجود گزشتہ چند روز میں بے ہودہ نوعیت کے افواہوں کا بازار گرم ہوگیاہے۔سعودی سفیر نے کہا کہ "سب سے بہتر طریقہ یہ ہے کہ اِن پروپیگنڈوں پر بات نہ کی جائے۔ بالخصوص جب کہ معاملہ مملکت کے ایک لا پتا شہری سے متعلق ہو جس نے اپنی زندگی کا بڑا حصّہ اپنے وطن کی خدمت کے لیے وقف کر دیا ہے۔شہزادہ خالد کا کہنا تھا کہ "بے شک مملکت میں جمال خاشقجی کا خاندان انتہائی تشویش کا شکار ہے اور اسی طرح ہمیں بھی تشویش لاحق ہے۔ جمال کے سعودی عرب میں بہت سے دوست ہیں اور میں ان میں سے ایک ہوں۔ کئی معاملات میں اختلافات کے باوجود ہم نے اپنے رابطوں کو برقرار رکھا ۔شہزادہ خالد بن سلمان نے زور دے کر کہا کہ "خاشقجی کے استنبول میں سعودی قونصل خانے میں چھپائے جانے یا مملکت کی جانب سے اغوا یا قتل کیے جانے کے حوالے سے تمام تر افواہیں جھوٹی اور بے بنیاد ہیں۔ ترکی سے حاصل ابتدائی معلومات کے مطابق وہ قونصل خانے سے نکلنے کے بعد لا پتہ ہوئے۔ تاہم جب مملکت کی جانب سے تحقیقات کا آغاز ہو گیا تو پھر الزامات بھی بدل گئے اور یہ بات پھیلائی گئی کہ وہ قونصل خانے کے اندر لا پتا ہوئے۔ بعد ازاں جب ترک حکام اور میڈیا کو قونصل خانے کی عمارت کے مکمل معائنے کی اجازت دے دی گئی تو ایک بار پھر الزامات میں تبدیلی آئی اور یہ شرم ناک پروپیگنڈا کیا گیا کہ خاشقجی کو کام کے اوقات میں قونصل خانے میں قتل کر دیا گیا جب کہ درجنوں ملازمین اور غیر ملکی افراد بھی موجود ہوتے ہیں۔ معلوم نہیں اس نوعیت کے پروپیگنڈے کے پیچھے کس کا ہاتھ ہے۔خالد بن سلمان نے باور کرایا ہے کہ سعودی عرب اور اس کے سفارت خانے کے لیے اس وقت اہم ترین امر خاشقجی کی سلامتی اور اس بات کا ظاہر ہونا ہے کہ حقیقت میں کیا ہوا۔ انہوں نے کہا کہ جمال خاشقجی گزشتہ چند ماہ کے دوران باقاعدگی کے ساتھ استنبول میں سعودی قونصل خانے آتے رہے ہیں۔واشنگٹن میں سعودی سفیر نے زور دیا کہ استنبول میں سعودی قونصل خانے پر لازم ہے کہ وہ مقامی حکام کے ساتھ مکمل تعاون کرے تا کہ یہ انکشاف سامنے آ سکے کہ خاشقجی کے روانہ ہونے کے بعد کیا واقعہ پیش آیا۔ شہزادہ خالد کے مطابق مملکت نے ترکی کی حکومت کی موافقت سے اپنی ایک سکیورٹی ٹیم بھی استنبول بھیجی ہے تا کہ وہ اپنے ترک ہم منصبوں سے اس تعلق گفت و شنید ہورہی ہے ۔ شہزادہ خالد بن سلمان نے باور کرایا کہ مملکت کی جانب سے جمال خاشقجی کی تلاش کے سلسلے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی جائے گی۔
 

ایک نظر اس پر بھی

خاشقجی کے قتل میں سعودی ولی عہد کے براہِ راست ملوث ہونے کا کوئی ثبوت نہیں: پومپیو

امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے ایک بار پھرباور کرایا ہے کہ سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کا صحافی جمال خاشقجی کے قتل کے ساتھ براہ راست کوئی تعلق نہیں اور انہیں اس کیس میں ملوث کرنے کا کوئی ٹھوس ثبوت نہیں ملا ہے۔امریکی وزیرخارجہ نے خاشقجی قتل کیس کے حوالے سے سعودی ...

شارجہ میں منکی کمیونٹی کی خوبصورت گیٹ ٹو گیدر تقریب؛ کرناٹک کے وزراء نے کی شرکت؛ منکی میں غریبوں کے لئے چالیس مکانات دینے کا اعلان

منکی کمیونٹی (یو اے ای) کی جانب سےگذشتہ روز شارجہ میں اتحاد و ملن کے نام پر   گیٹ ٹو گیدر کی ایک خوبصورت تقریب منعقد کی گئی جس میں کرناٹک کے وزراء نے بھی شرکت کی اور  منکی کے عوام کی کثیر تعداد ایک پلیٹ فارم پر نظر آنے پر نہایت  خوشی کا اظہار کیا۔ پروگرام میں  بچوں سمیت ...

18بیرونی ممالک میں ملازمت کرنے والوں کویکم جنوری سے لازمی طور پر آن لائن رجسٹریشن کرنا ہوگا

بیرونی ممالک میں ملازمت کرنے والوں کے لئے مرکزی حکومت نے ایک نئی شرط لاگو کردی ہے جس کے مطابق یکم جنوری 2019 ؁ء سے امیگریشن چیک ناٹ ریکوائرڈECNRوالا پاسپورٹ رکھنے والے ملازمین کے لئے لازمی ہوگا کہ وہ اپنا آن لائن رجسٹر کروائیں۔

سابق وزیراعظم دیوے گوڈا کی دبئی آمد پر تہنیتی پروگرام؛ پہلے ملک کے اندرونی مسائل حل کرنے کی طرف توجہ ہونی چاہئے؛ گوڈا نے مودی پر کسا طنز

سابق وزیراعظم  ایچ ڈی دیوے گوڈا کی دبئی آمد کے موقع پر کرناٹکا این آر آئی فورم کی جانب سے دبئی میں گذشتہ روز دیوے گوڈا کے لئے تہنیتی پروگرام کا انعقاد کیا گیا جس میں یہ بات بھی بتائی گئی کہ ریاست کرناٹک سے وزیراعظم منتخب ہونے والے دیوے گوڈا واحد شخص ہیں۔ پروگرام میں شال اوڑھ ...

دمام میں کاسرگوڈ کے ایک شخص کی لاش کی تین سال بعد تدفین

دمام سعودی عربیہ میں تین سال قبل انتقال کرگئے پڑوسی تعلقہ  کاسرگوڈ کیرالہ کے حسینار کنہی (۵۷سال) نامی ایک شخص کی لاش کو تین سال بعد دفنایا گیا۔ بتایا جاتا ہے کہ مرحوم حسینار کنہی کے پاسپورٹ پر درج اس کے  ہندوستانی پتے میں کچھ خامیاں تھیں اور پتہ نامکمل تھا اس لئے سعودی پولیس ...