لندن میں راہول گاندھی کی کانفرنس میں‘خالصتان زندہ باد‘ کے نعرے

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 26th August 2018, 11:11 PM | ملکی خبریں | عالمی خبریں |

نئی دہلی؍ لندن26 اگست (ایس او نیوز؍ ایجنسی) برطانیہ میں کانگریس پارٹی کے صدر راہول گاندھی کی کانفرنس میں علیحدگی پسند خالصتان تحریک کے حامیوں نے ’خالصتان زندہ باد‘ کے نعرے لگائے۔ میڈیا  رپورٹ کے مطابق کانگریس پارٹی کے صدر راہول گاندھی کے آخری اجلاس سے خطاب سے قبل خالصتان تحریک کے 3 حامیوں نے کانفرنس میں شرکت کرنا چاہی تاہم راہول گاندھی کی آمد سے قبل ہی اسکاٹ لینڈ یارڈ نے انہیں باہر نکال دیا تھا۔

مذکورہ واقعہ لندن کے مغربی علاقے میں انڈین اوورسیز کانگریس یو کے کی میگا کانفرنس کے طے شدہ مقام پر گزشتہ شام پیش آیا۔

راہول گاندھی کی آمد سے قبل خالصتان تحریک کے کارکنوں کا ایک گروہ کانفرنس کے مقام پر آیا اور ’ خالصتان زندہ باد ‘ کے نعرے لگائے جس کے بعد اسکاٹ لینڈ یارڈ کے افسران نے انہیں وہاں سے نکال دیا۔

ان نعروں کے بعد کانفرنس کے سیکڑوں شرکا نے ’ کانگریس پارٹی زندہ باد’ کے نعرے لگائے۔

کانفرنس سے اپنے تعارفی خطاب میں آل انڈیا کانگریس کمیٹی کے اوورسیزڈپارٹمنٹ کے چیئرمین سیم پتروڈا نے کہا ’ ہمارا پیغام جمہوریت، آزادی، ترقی اور روزگار سے متعلق ہے، ہم چاہتے ہیں کہ آپ یہ پیغام آگے بڑھائیں،2019 میں ہونے والے انتخابی نتائج بھارت کا مستقبل بتائیں گے۔

بھارتی تارکین وطن کو مہاتما گاندھی کے عالمی پُرامن احتجاج کا پیغام دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہم سب جانتے ہیں سوشل میڈیا پر جھوٹ جنگل کی آگ کی طرح پھیلتا ہے، میڈیا اکثر ہمارے ساتھ انصاف نہیں کرتا، ہمیں آپ ہم وطنوں کی ضرورت ہے کہ میڈیا تک صحیح پیغام پہنچایا جائے کیونکہ کوئی ایک چھوٹی سی غلطی بھی بہت نقصان دہ ہوسکتی ہے۔

انہوں نے بھارتی وزیراعظم نریندر مودی پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے دعویٰ کیا تھا کہ اقتدار میں آنے سے پہلے بھارت میں کوئی ترقی نہیں ہوئی تھی۔

سیم پتروڈا نے کہا کہ ’جب وہ ایسا کہتے ہیں تو وہ صرف کانگریس پارٹی کو ہی نہیں بلکہ بھارتی شہریوں کو بے عزت کررہے ہوتے ہیں لیکن اس میں میڈیا ان کے ساتھ ہے۔‘

خیال رہے کہ ہندوستان کی ریاست پنجاب میں ببر خالصہ، پھندران والا ٹائیگر فورس آف خالصتان، خالصتان کمانڈو فورس، خالصتان زندہ باد فورس، دیش میش ریجمنٹ اور خالصتان لبریشن فورس سمیت کئی تنظیمیں آزاد ریاست کے لیے مسلح جدو جہد کر رہی ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

وزیراعظم مودی کا حملہ:4سال پہلے کسی نے سوچابھی نہیں تھا کہ سکھ فسادمعاملے میں کانگریس لیڈر کوسزا ملے گی

وزیر اعظم نریندر مودی نے 1984سکھ مخالف فسادات میں انصاف میں تاخیر کا خاکہ پیش کرتے ہوئے منگل کو کہا کہ کسی نے نہیں سوچا تھا کہ کانگریس لیڈر کو معاملے میں مجرم ٹھہرایا جائے گا۔

تین ریاستوں میں شکست کے بعداب بی جے پی صدر امت شاہ دہلی میں بوتھ انچارج کودیں گے ٹپس

بھارتیہ جنتا پارٹی(بی جے پی)کے صدر امت شاہ 2019کے لوک سبھا انتخابات کی تیاری کو لے کر دہلی کے اندرا گاندھی انڈور (آئی جی آئی)اسٹیڈیم میں پارٹی کی دہلی یونٹ کے قریب 12000بوتھ انچارج کو اتوار کو انتظام کی تجاویز دیں گے۔

انیس عامری ایک ’دہشت گرد سیل‘ کا حصہ تھا: جرمن میڈیا

برلن میں دو برس قبل ایک کرسمس مارکیٹ پر ٹرک کے ذریعے حملہ کرنے والا انیس عامری’تنہا بھیڑیا‘ نہیں تھا بلکہ ممکنہ طور پر اس کا تعلق ایک سلفی سیل سے تھا، جس نے اسے اس حملے میں مدد دی تھی۔جرمن میڈیا پر ہفتے کے روز سامنے آنے والی رپورٹوں کے مطابق برلن کرسمس مارکیٹ حملے کے فقط دو ...

فرانسیسی شہروں میں زرد جیکٹوں والے مظاہرین کا احتجاج

فرانس کے مختلف شہروں میں زرد جیکٹوں والے حکومت مخالف مظاہرین مسلسل پانچویں ویک اینڈ پر احتجاج کے لیے جمع ہیں۔ صدر ایمانوئل ماکروں کی حکومت کے خلاف مظاہروں کا یہ سلسلہ ایندھن کی قیمتوں میں اضافے پر شروع ہوا تھا۔ فرانسیسی دارالحکومت پیرس میں مظاہرین کی پرتشدد کارروائیوں کو ...

سری لنکا کے برخاست وزیراعظم پر پارلیمان کا اعتماد

رواں برس اکتوبر میں برخاست کیے جانے والے سری لنکن وزیراعظم رانیل وکرمے سنگھے نے پارلیمنٹ میں اعتماد کا ووٹ حاصل کر لیا ہے۔ آج بدھ کو ہونے والی رائے شماری میں 225 رکنی ایوان میں وکرمے سنگھے کی حمایت میں 117 اراکین نے ووٹ ڈالا

امریکی فوج نے شمالی شام میں مبصر چوکیاں قائم کر دیں

امریکی وزارت دفاع نے اعلان کیا ہے کہ اْس کی افواج نے شمالی شام میں مبصر چوکیاں قائم کر دیں ہیں۔ اس اعلان میں ان چوکیوں کی تعداد اور مقامات کی وضاحت نہیں کی گئی ہے۔ اسی علاقے میں شامی کردوں کی ملیشیا وائی پی جی ایک بڑے علاقے پر قابض ہے

برطانوی وزیر اعظم کو درپیش قیادت کا چیلنج: کیوں اور کیسے؟

برطانوی پارلیمان کے ارکان نے قدامت پسند وزیر اعظم ٹریزا مے کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک پیش کر دی ہے، جس پر رائے شماری آج بدھ بارہ دسمبر کو ہو رہی ہے۔ سوال یہ ہے کہ یہ تحریک پیش کیے جانے کے بعد اب ہو گا کیا ۔برطانوی وزیر اعظم ٹریزا مے نے اسی ہفتے پیر کا دن یورپ کے مختلف ممالک کے ...