کیجریوال نے کیرل کے وزیراعلیٰ سے ملاقات کی ،کہا :بی جے پی کے خلاف سب ساتھ آئیں

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 20th April 2017, 11:01 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی، 19؍اپریل(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا )ملک کی تمام اپوزیشن پارٹیاں2019 کے لوک سبھا انتخابات سے پہلے مہاگٹھ بندھن کی فراق میں ہیں۔اسی سمت میں دہلی کے وزیر اعلی اور عام آدمی پارٹی کے سربراہ اروند کیجریوال نے کیرل کے وزیر اعلی پنرائی وجین سے آج ملاقات کی ۔ناشتے پر ہوئی اس ملاقات کے بعد کیجریوال نے کہا یہ ملاقات اچھے رشتوں کے تحت ہوئی ہے، اور اس کا کوئی سیاسی مطلب نہیں نکالاجانا چاہیے ۔حالانکہ ایک نئے اتحاد کے سوال پر کیجریوال نے کہا کہ ملک میں احتجاج اور اختلاف کو جس طریقے سے دبانے کی کوشش کی جا رہی ہے، ان طاقتوں کے خلاف سب کو ساتھ آنے کی ضرورت ہے۔کیجریوال نے کہا کہ سوشل میڈیا سمیت تمام جگہوں پر جس طرح سے لوگوں کو ڈرانے کی کوشش کی جا رہی ہے، ہر طبقے کو ان طاقتوں کے خلاف ساتھ آنے کی ضرورت ہے۔غور طلب ہے کہ کیجریوال اس سے پہلے 2015میں تریپورہ کے وزیر اعلی مانک سرکار اور بنگال کی وزیر اعلی ممتا بنرجی کے ساتھ دہلی میں ملاقات کر چکے ہیں۔اس کے علاوہ بھی کئی مواقع پر سی پی ایم لیڈروں اور ممتا بنرجی کے ساتھ کجریوال کی ملاقات ہوئی ہے۔دراصل کیجریوال سے ملاقات کے بعد کیرالہ کے وزیر اعلی پنرائی وجین نے کہاکہ لگتا ہے کہ مرکز کی حکومت دہلی کی حکومت کو منتخب حکومت نہیں مانتی ہے اور اسے اپنے ماتحت مانتی ہے۔وجین نے کہا کہ وہ دہلی حکومت کی حمایت کرتے ہیں، نئے ابھرتے اتحاد کے سوال پر پنرائی وجین نے کہا اس کی ضرورت ہے۔بی جے پی جیسی طاقتوں کے خلاف سبھی پارٹیوں کو ساتھ آنے کی ضرورت ہے ، لیکن بغیر کانگریس کے، کیونکہ کانگریس کے لیڈر بی جے پی میں ہی جا رہے ہیں۔واضح رہے کہ سی پی ایم صرف تریپورہ اور کیرالہ میں اقتدار میں ہے ،جبکہ عام آدمی پارٹی دہلی کے علاوہ صرف پنجاب میں ہی مضبوط پوزیشن میں ہے۔ایسے میں ملک میں ایک کردار میں ایسے چھوٹی پارٹیوں کے ساتھ آنے کے باوجود بھی کسی اتحاد کی بڑی تصویر سامنے نظر نہیں آتی ہے ۔

ایک نظر اس پر بھی

علی گڑھ مسلم یونیورسٹی ٹیچرس ایسوسی ایشن کی جانب سے سالانہ ڈنر کا اہتمام;وائس چانسلر پروفیسر طارق منصور سمیت دیگر معززین کی شرکت

علی گڑھ مسلم یونیورسٹی ٹیچرس ایسوسی ایشن کی جانب سے یہاں اے ایم یو اسٹاف کلب میں سالانہ ڈنر کا اہتمام کیا گیا، جس میں بطور مہمان خصوصی وائس چانسلر پروفیسر طارق منصور نے شرکت

سیلاب متاثرین کی راحت رسانی میں کوتاہی ناقابل برداشت،مقامی انتظامیہ کوسخت ہدایات;کشن گنج کے ایم پی مولانااسرارالحق قاسمی کی نگرانی میں سیلاب متاثرین کے درمیان اشیاء خوردنی کی تقسیم

سیلاب کی تباہی سے دوچارکشن گنج،پورنیہ اور سیمانچل کے دیگر اضلاع میں جاں بحق ہونے والے افراد کی تعداد اب تک ڈیڑھ سوسے متجاوزہوچکی ہے