غیرملکی درانداز کشمیر میں تباہی پھیلا رہے ہیں، گورنر راج ہی واحد حل : بھیم سنگھ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 21st September 2017, 11:16 PM | ملکی خبریں |

جموں، 21 ؍ستمبر(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)نیشنل پنتھرس پارٹی کے سرپرست اعلی پروفیسر بھیم سنگھ نے صدر جمہوریہ رامناتھ کووند پر زور دیا ہے کہ وہ جموں وکشمیر آئین کے سیکشن92 اور ہندستانی آئین کی دفعہ 370کے تحت کارروائی کریں جس سے جموں وکشمیر میں رہنے والے ہندستانی شہریوں کو دراندازوں کی وجہ سے ہورہی مزید تباہی اور اموات سے بچایا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ جموں وکشمیر کا واحد حل گورنر راج ہے جسے جموں وکشمیر کے گورنر صدر کی اجازت سے لگانے کے مجاز ہیں۔

پروفیسر بھیم سنگھ نے کہاکہ پارلیمنٹ یا ہندستانی حکومت کا کوئی بڑا کردار نہیں رہ گیا ہے بس انہیں چاہئے کہ صدر جمہوریہ کوسیکورٹی، تحفظ اورجموں وکشمیر کے لوگوں کو، جو گزشتہ تین برسوں سے ظلم و ستم کے شکار ہیں، مفاد میں کام کرنے کی اجازت دے دینی چاہئے ۔ریاست میں گورنر راج ہی واحد حل ہے۔

پنتھرس سربراہ نے ہندستان کے صدر سے کہا کہ وہ جموں وکشمیر کے آئین کے سیکشن92کے تحت گورنر کو گورنر راج نافذ کرنے کا مشورہ دیں اور گورنر کو مشورہ دینے کے لئے ایک ایمرجنسی کونسل قائم کی جائے۔انہوں نے گورنر پر بھی زور دیا کہ سماج کے جمہوریت پسند، قانون کی حکمرانی اور جموں وکشمیر میں امن کی بحالی کے خواہش مند حقیقی نمائندوں سے مذاکرات شروع کئے جائیں۔انہوں نے کہاکہ حریت کانفرنس سمیت تمام سیاسی جماعتوں کے نمائندوں کو بات چیت کی دعوت دی جانی چاہئے جس سے ریاست میں آئندہ اسمبلی انتخابات کے لئے مناسب ماحول قائم ہوسکے۔پنتھرس سپریمو نے تمام سیاسی جماتوں کے کارکنوں اور نا م نہاد پتھر پھینکنے والوں کو فوری طورپر رہا کئے جانے کا بھی مطالبہ کیا۔

ایک نظر اس پر بھی