اترکنڑا ضلع میں بندوق برداروں کی تعداد صرف ایک فی صد: لائسنس کی تجدید کو لے کر اکثر بے فکر

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 8th October 2017, 8:54 PM | ساحلی خبریں | اسپیشل رپورٹس |

کاروار:8/ اکتوبر (ایس اؤنیوز)اترکنڑا ضلع جغرافیائی وسعت اور جنگلات سے گھراہواہے اس کی آبادی میں بھی خاصی اضافہ ہواہے لیکن ضلع میں صرف ایک فی صد لوگ ہی بندوق رکھتے ہیں،ضلع میں فصل کی حفاظت کے لئے 8163اور خود کی حفاظت کے لئے 930سمیت جملہ  9093لوگ ہی لائسنس والی بندوقیں رکھتے ہیں۔

اترکنڑا ضلع میں چند ہی کسان اپنی فصل کی نگرانی اور حفاظت کے لئے مجبوری میں لائسنس والی بندوق رکھتے ہیں بقیہ کسانوں کو لائسنس کے متعلق کچھ زیادہ جانکاری نہیں ہے۔ اور نئی بندوق لائسنس کے لئے درخواست دینے والوں کی تعداد نہیں کے برابر ہے ۔ فصل کی حفاظت کے لئے 79اور خود کی حفاظت کے لئے 8سمیت صرف 87لوگ ہی لائسنس کے انتظارمیں ہیں۔ امکان ہے کہ ضلع میں ایسے بہت سارے لوگ ہوں گے جو لائسنس کے بغیر بندوق رکھتے ہیں لیکن پتہ چلا ہے کہ ضلعی عوام کو بندوق کے متعلق زیادہ  معلومات نہیں ہے۔

ویسے اترکنڑا ضلع ریاست میں گن داروں کی فہرست میں دوسرے نمبر پرہے ، ضلع کے جغرافیائی وسعت اور آبادی کی شرح کے مطابق بندوق دھاریوں کی تعداد اپنےحساب سے ہے، لیکن جو لوگ لائسنس رکھتےہیں قانون کے تحت اس کی تجدید کو لے کر کہا جاسکتاہے کہ اس سلسلے میں عوام زیادہ بیدار نہیں ہیں۔ اس کا سبب یہی ہےکہ ضلع کے 9093لائسنس والی بندوق رکھنے والوں میں 3910لوگوں نے  اپنے بندوق کے لائسنس کی تجدید نہیں کرائی ہے۔فصل کی نگرانی کے 3522بندوق بردار اور 388خود کی حفاظت کے لئے بندوق رکھنے والے لائسنس تجدید کے متعلق کچھ زیادہ فکر مند نظر نہیں آتے۔ جس میں یلا پور تعلقہ میں تحفظِ فصل کی 937اور خود حفاظتی کے 22سمیت کل 959اور سرسی تعلقہ میں تحفظ فصل 864اور خود حفاظتی کے 94جملہ 958لوگوں نے  اپنے لائسنس کی تجدید نہیں کی ہے۔ بقیہ تعلقہ جات میں بندوق لائسنس کی تجدید نہ  کرانے والوں کی تعداد اتنی زیادہ تو نہیں ہے لیکن لائسنس والی بندوق خریدنے کے بعد لائسنس کی تجدید کی طرف دھیان نہیں دینےکا پتہ چلاہے۔

ضلع کے دیگر تعلقہ جات کے بالمقابل بھٹکل تعلقہ میں بندوق برداروں کی تعداد کم ہے، بھٹکل تعلقہ میں فصل کی حفاظت کے لئے صرف 467 لوگ بندوق رکھتے ہیں تو خود کی حفاظت کے لئے 153 سمیت صرف 620 لوگوں کے پاس ہی لائسنس کی بندوق  ہیں۔ بھٹکل کے بالمقابل سرسی اور یلاپور تعلقہ جات میں سب سے زیادہ لائسنس والے بندوق بردار ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

کل جمعرات کو مرڈیشور میں منایا جائے گا عالمی یوم یوگا

کل جمعرات 21 جون کو  تعلقہ کے مرڈیشور آر این شٹی  ریسڈینٹیل  میں عالمی یوم یوگا منایا جائے گا اس بات کی اطلاع مرڈیشور یوگا سمیتی کے صدر  منجپا نائک نے دی ہے۔ اخبار نویسوں سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ  پروگرام صبح چھ بجے شروع ہوکر 7:30 تک جاری رہے گا۔

کمٹہ میں بس نے دی راہ گیر کو ٹکر؛ شدید طور پر زخمی راہ گیر منی پال لے جانے کے دوران ہلاک

سرکاری کے ایس آر ٹی سی بس نے ایک راہ گیر کو ٹکر ماردی جس کے نتیجے میں راہ گیر شدید زخمی ہوگیا، جسے مقامی اسپتال میں ابتدائی طبی امداد کے بعد منی پال روانہ کیا گیا ہے۔ حادثہ  تعلقہ کے بیٹکولی دیہات میں  بدھ کی صبح پیش آیا۔

کاروار چیک پوسٹ پر محکمہ محصول نے مارا ایک لاری پر چھاپہ؛ 1.19 لاکھ مالیت کی گوا کی شراب برآمد

یہاں جوئیڈا کے قریب  گوا۔ انموڈ  سرحد پر واقع پولس چیک پوسٹ پر آج بدھ صبح محکمہ  محصولات (ایکسائز)  کے آفسران نے ایک لاری پر چھاپہ مارا اور اُس میں سے ایک لاکھ سے زائد مالیت کی گوا کی شراب برآمد کی جسے دوسرے سامانوں کےدرمیان چھپا کر  غیرقانونی طور پر  حیدرآباد لے جانے کی ...

اُڈپی میں بائک کو ٹکر دے کر فرار ہونے والے ٹمپو ڈرائیور پرچار سال بعد عدالت نے عائد کیا 2500 روپیہ جرمانہ

اُڈپی چیفسیویل جج اینڈ چیف میجسٹریٹ  فرسٹ کلاس عدالت نے  ایک ٹمپو ڈرائیور پر بائک کو  ٹکر دے کر فرار ہونے کے جرم میں 2500 روپیہ جرمانہ عائد کیا ہے اور رقم نہ بھرنے کی صورت میں اُسے چھ ماہ کی جیل کی سزا سنائی ہے۔

اُڈپی میں مویشیوں کے بیوپاری حُسین ابّا کے قتل کے معاملے میں گرفتار تین ملزموں کو ملی ضمانت؛ آٹھ کی ضمانت نامنظور

مویشیوں کے بیوپاری حُسین ابا کے قتل کے معاملے میں گرفتار دو لوگوں  پولس ہیڈ کونسٹیبل  موہن کوتوال اور بجرنگ دل لیڈر پرساد کونڈاڈی کی ضمانت عرضی کو    اُڈپی سیشن کورٹ نے  منظور کرلیا ہے اسی طرح ایک اورفرار شدہ بجرنگ دل کارکن  توکارام  کی  پیشگی ضمانت بھی منطور کرلی ہے۔

عید الفطر کے پیش نظر بھٹکل رمضان بازار میں عوام کا ہجوم؛ پاس پڑوس کے علاقوں کے لوگوں کی بھی خاصی بڑی تعداد خریداری میں مصروف

عیدالفطر کے لئے بمشکل تین دن باقی رہ گئے ہیں اور بھٹکل رمضان بازار میں لوگوں  کی ریل پیل اتنی بڑھ گئی ہے کہ پیر رکھنے کے لئے جگہ نہیں ہے۔ عید کی تیاری میں مشغول مسلمان ایک طرف کپڑے، جوتے اور  دیگر اشیاء  کی خریداری میں مصروف ہیں تو وہیں رمضان بازار میں گھریلو ضروریات کی ہر چیز ...

اگر حزب اختلاف متحد رہا تو 2019میں مودی کاجانا طے ........از: عابد انور

اگر متحد ہیں تو کسی بھی ناقابل تسخیر کو مسخر کرسکتے ہیں،کامیابی حاصل کرسکتے ہیں،مضبوط آہنی دیوار کو منہدم کرسکتے ہیں، جھوٹ اور ملمع سازی کوبے نقاب کرسکتے ہیں اور یہ اترپردیش کے کیرانہ لوک سبھا کے ضمنی انتخاب میں ثابت ہوگیا ہے۔ متحد ہوکر میدان میں اترے تو بی جے پی کو شکست ...

آئندہ لوک سبھا انتخابات: جے ڈی یو اور شیوسینا کے لیے چیلنج؛ دونوں کے سامنے اہم سوال، بی جے پی کا سامنا کریں یا خودسپردگی؟

شیوسیناسربراہ ادھو ٹھاکرے اور جے ڈی یو چیف نتیش کمار دونوں اس وقت این ڈی اے سے غیر مطمئن نظر آرہے ہیں۔ جس طرح سے اس باربی جے پی کا اثر ورسوخ بڑھا ہے، اس سے دونوں جماعتیں خود کو غیر محفوظ سمجھ رہی ہیں۔

اسمبلی انتخاب کے بعدبھٹکل حلقے میں کانگریس اور بی جے پی کے اندر بدلتا ہوا سیاسی ماحول؛ کیا برسات کا موسم ختم ہونے کے بعدپارٹیاں بدلنے کا موسم شروع ہو جائے گا ؟

حالیہ اسمبلی انتخاب میں کانگریسی امیدوار منکال وئیدیا کی شکست کے بعد ایسا لگتا ہے کہ کانگریس پارٹی کے اندر ہی سیاسی ماحول ایک آتش فشاں میں بدلتا جارہا ہے ۔ انتخاب سے پہلے تک بظاہرکانگریس پارٹی کا جھنڈا اٹھائے پھرنے اور پیٹھ پیچھے بی جے پی کی حمایت کرنے والے بعض لیڈروں کو اب ...

ہندو نیشنلسٹ گروپ سے اقلیتی طبقہ خوفزدہ، امریکی وزارت خارجہ کی رپورٹ

امریکی وزارت خارجہ نے منگل کے روز بین الاقوامی مذہبی آزادی پر ایک رپورٹ جاری کی ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ ہندوستان میں 2017 کے دوران ہندو نیشنلسٹ گروپ کے تشدد کے سبب اقلیتی طبقہ نے خود کو انتہائی غیر محفوظ محسوس کیا۔

مودی حکومت کے چار سال: بدعنوانی، لاقانونیت،فرقہ پرستی اور ظلم و جبر سے عبارت ......... از: عابد انور

ہندوستان میں حالات کتنے بدل گئے ہیں، الفاظ و استعارات میں کتنی تبدیلی آگئی ہے ، الفاظ کے معنی و مفاہیم اور اصطلاحات الٹ دئے گئے ہیں ،سچ کو جھوٹ اور جھوٹ کو سچ کہا جانے لگا ہے، قانون کی حکمرانی کا مطلب کمزور اور سہارا کو ستانا رہ گیا ہے، دھاندلی کو جیت کہا جانے لگا ہے، ملک سے ...