کاروار:ایس ایس ایل سی جوابی پرچوں کی جانچ شروع : ضلع سے 210اساتذہ غیر حاضر

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 21st April 2017, 9:21 PM | ساحلی خبریں |

کاروار:21/اپریل(ایس اؤنیوز)مارچ ، اپریل میں ہوئے ایس ایس ایل سی امتحانات کے جوابی پرچوں کی جانچ آج سے شروع ہوچکی ہے، جو اساتذہ پرچوں کی جانچ کے لئے حاضر نہیں ہوئے ہیں ان کے خلاف تعلیمات عامہ محکمہ کی طرف سےکارروائی کرنے کا حکم جاری کیا گیا ہے۔ جس کےنیتجےمیں اترکنڑا ضلع سے غیر حاضر ہوئے 210اساتذہ کے خلاف کارروائی کئے جانے کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں۔

ایس ایس ایل سی پرچوں کی جانچ کا کام 20اپریل سے شروع ہوچکا ہے۔ تعلیمات عامہ محکمہ کی طرف سے جوابی پرچوں کی جانچ کے لئے اساتذہ کو لازماً حاضر ہونے کی تاکید کی گئی تھی اور بتایا گیا تھا کہ ضروری کاموں اور صحت کی خرابی سے کوئی حاضر نہیں ہورہے ہیں تو متعلقہ کام سے رعایت کی منظوری کے لئے دستاویزات کے ساتھ عرضی دینے کہا گیا ہے۔ بورڈ کی طرف سے اگر منظوری ملتی ہے تو ان کے خلاف کوئی کارروائی نہیں ہوگی۔

ایس ایس ایل سی کے جوابی پرچوں کی جانچ کے لئے اترکنڑا ضلع سے کل 824اساتذہ کو نامز د کیا گیا تھا جس میں سے 729حاضر رہ کر 95غیر حاضر ہیں تو اسی طرح سرسی تعلیمی ضلع سے نامزد 817اساتذہ میں 702حاضراور 115اساتذہ غیر حاضر ہیں۔ کاروار تعلیمی ضلع سے 6اساتذہ کو جوائنٹ چیف ایگزامنیر کے طورپر نامزد کیاگیا تھا وہ سب اپنے کام پر موجود ہیں لیکن اسسٹنٹ چیف ایگزامنیر کے طورپر نامزد 115میں سے 109 اساتذہ حاضر ہوئے ہیں تو 703ممتحن اساتذہ میں سے 614ممتحن حضرات شریک ہونے کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں۔ جن اساتذہ نے رعایت کے لئے درخواست دی ہے اس کے ساتھ مناسب دستاویزات کا منسلک رہنا ضروری ہے، اگر ایسانہیں ہواتو قانون کے مطابق کارروائی کئےجانے کی بات کہی گئی ہے۔

اس سلسلے میں ڈی ڈی پی آئی کاروار پی کے پرکاش نے کہا ہے کہ جن اساتذہ کو ممتحن کے طورپر نامزد کیا گیا ہے وہ فوری حاضر ہوجائیں۔ کوئی مسائل کا سامنا ہے تو مناسب دستاویزات کے ساتھ درخواست دیں، ورنہ تعلیمات عامہ محکمہ کے قانون کے مطابق کارروائی کئے جانے کاانتباہ دیاہے۔

ایک نظر اس پر بھی

بی جے پی اور سنگھ پریوار کے احتجاج اور تشدد کے چلتے بالاخر کرناٹک سرکار کا ہوناور کے پریش میستا کی موت کا معاملہ سی بی آئی کے حوالے کرنے کا اعلان

ریاست میں کافی بحث کا موضوع بنے ہوناور کے پریش میستا کی موت کی گتھی سلجھانے کے لئے بالاخر اب ریاستی حکومت نے   اس  معاملے کو سی بی آئی کے ذریعہ تحقیق کروانے کا فیصلہ کیا ہے۔ اخبارنویسوں سے گفتگو کرتے ہوئے وزیرداخلہ رام لنگا ریڈی  نے کہا کہ سچائی کو منظر عام پر لانے کے لئے ...

ضلع اُتر کنڑا میں وہاٹس ایپ پر اشتعال انگیزپیغامات پوسٹ کرنے پر 28 معاملات درج

ہوناور میں ایک نوجوان کی ہلاکت کے بعدبی جے پی اور سنگھ پریوار کی حمایت میں  اور بالخصوص مسلمانوں کے خلاف سوشیل میڈیا پر اشتعال انگیز پیغامات روانہ کئے جارہے تھے، ساتھ ساتھ سوشیل میڈیا کے ذریعے مختلف علاقوں میں بند منائے جانے اور احتجاج کے پیغامات پھیلائے جارہے تھے، جس پر ...

ہوناور پریش میستا کی موت کا معاملہ؛ وہاٹس ایپ پراشتعال انگیز افواہیں پھیلانے کے الزام میں ہائی اسکول ٹیچر گرفتار

ہوناور فساد کے پس منظر میں سوشیل میڈیا اور خاص کر وہاٹس ایپ پر افواہیں پھیلا کر ماحول خراب کرنے کے الزام میں کاروار کے ایک ہائی اسکول ٹیچر کو پولیس نے گرفتار کرلیا ہے۔

پریش میستا کے پوسٹ مارٹم کی فائنل رپورٹ ابھی نہیں ملی ۔ دیشپانڈے

ہوناور میں فرقہ وارانہ فسادات کا سلسلہ شروع ہونے کے بعد پریش میستا نامی نوجوان کی جو لاش دستیاب ہوئی تھی اور اس سے پورے ضلع میں نفرت کی آگ بھڑکائی گئی تھی، اس تعلق سے ضلع انچارج وزیر دیشپانڈے نے کہا ہے کہ پریش کے پوسٹ مارٹم کی قطعی رپورٹ ابھی نہیں آئی ہے۔