کاروار:ایس ایس ایل سی جوابی پرچوں کی جانچ شروع : ضلع سے 210اساتذہ غیر حاضر

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 21st April 2017, 9:21 PM | ساحلی خبریں |

کاروار:21/اپریل(ایس اؤنیوز)مارچ ، اپریل میں ہوئے ایس ایس ایل سی امتحانات کے جوابی پرچوں کی جانچ آج سے شروع ہوچکی ہے، جو اساتذہ پرچوں کی جانچ کے لئے حاضر نہیں ہوئے ہیں ان کے خلاف تعلیمات عامہ محکمہ کی طرف سےکارروائی کرنے کا حکم جاری کیا گیا ہے۔ جس کےنیتجےمیں اترکنڑا ضلع سے غیر حاضر ہوئے 210اساتذہ کے خلاف کارروائی کئے جانے کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں۔

ایس ایس ایل سی پرچوں کی جانچ کا کام 20اپریل سے شروع ہوچکا ہے۔ تعلیمات عامہ محکمہ کی طرف سے جوابی پرچوں کی جانچ کے لئے اساتذہ کو لازماً حاضر ہونے کی تاکید کی گئی تھی اور بتایا گیا تھا کہ ضروری کاموں اور صحت کی خرابی سے کوئی حاضر نہیں ہورہے ہیں تو متعلقہ کام سے رعایت کی منظوری کے لئے دستاویزات کے ساتھ عرضی دینے کہا گیا ہے۔ بورڈ کی طرف سے اگر منظوری ملتی ہے تو ان کے خلاف کوئی کارروائی نہیں ہوگی۔

ایس ایس ایل سی کے جوابی پرچوں کی جانچ کے لئے اترکنڑا ضلع سے کل 824اساتذہ کو نامز د کیا گیا تھا جس میں سے 729حاضر رہ کر 95غیر حاضر ہیں تو اسی طرح سرسی تعلیمی ضلع سے نامزد 817اساتذہ میں 702حاضراور 115اساتذہ غیر حاضر ہیں۔ کاروار تعلیمی ضلع سے 6اساتذہ کو جوائنٹ چیف ایگزامنیر کے طورپر نامزد کیاگیا تھا وہ سب اپنے کام پر موجود ہیں لیکن اسسٹنٹ چیف ایگزامنیر کے طورپر نامزد 115میں سے 109 اساتذہ حاضر ہوئے ہیں تو 703ممتحن اساتذہ میں سے 614ممتحن حضرات شریک ہونے کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں۔ جن اساتذہ نے رعایت کے لئے درخواست دی ہے اس کے ساتھ مناسب دستاویزات کا منسلک رہنا ضروری ہے، اگر ایسانہیں ہواتو قانون کے مطابق کارروائی کئےجانے کی بات کہی گئی ہے۔

اس سلسلے میں ڈی ڈی پی آئی کاروار پی کے پرکاش نے کہا ہے کہ جن اساتذہ کو ممتحن کے طورپر نامزد کیا گیا ہے وہ فوری حاضر ہوجائیں۔ کوئی مسائل کا سامنا ہے تو مناسب دستاویزات کے ساتھ درخواست دیں، ورنہ تعلیمات عامہ محکمہ کے قانون کے مطابق کارروائی کئے جانے کاانتباہ دیاہے۔

ایک نظر اس پر بھی

کانگریسی اراکین کی سرسی بلدیہ رکنیت منسوخی معاملہ؛ احتجاجی مظاہرہ میں کانگریسی لیڈروں کے پتلے نذر آتش

پارٹی وہپ کی خلاف ورزی کرتے ہوئے سرسی بلدیہ صدر کے لئے باغی امیدوار کو ووٹ دینے کے نتیجے میں 6/اراکین کی بلدیہ رکنیت جو منسوخ کی گئی تھی، اس کے خلاف سرسی میں احتجاجی مظاہرہ کرتے ہوئے کانگریس کے ضلعی صدر بھیمنا نائک اور بلاک کانگریس صدر رمیش دوبھاشی کے پتلے نذر آتش کئے گئے ہیں۔

بھٹکل میونسپالٹی ماہانہ میٹنگ میں بارش سے پہلے نالوں کی صفائی پر زور؛ ایک سڑ ک کا نام مرحوم مولانا عبدالباری کے نام موسوم کرنا بھی منظور

بھٹکل میونسپالٹی کی ماہانہ میٹنگ میں بارش سے پہلے برساتی نالوں کی صفائی پر کافی چرچہ ہوا اور گذشتہ سالوں میں نالوں کی نامکمل صفائی پر ممبران نے سخت اعتراض کیا،ممبران نے برساتی نالوں کی صفائی کے لئے تین لاکھ روپئے کے بجٹ کو ناکافی قرار دیا ۔کئی علاقوں بالخصوص شمس الدین سرکل، ...

کروپاڑی کے عبدالجلیل کے قاتلوں کی گرفتاری نہ ہونے پرناراض کانگریسی کارکنان کا ضلع دکشن کنڑا نگراں کار وزیرکاگھیراؤ

کروپاڑی گرام پنچایت کے نائب صدر اے عبدالجلیل جاں بحق ہوکر ہفتہ گزرگیا لیکن ابھی تک ملزموں کی گرفتار ی نہیں ہونے سے ناراض مقامی کانگریسی کارکنان اور عوام نے ضلع نگراں کار وزیر بی رماناتھ رائی کی کار گھیراؤ کرتےہوئے اپنے برہمی کا اظہار کیا۔

کاروار:60ہزارروپئے کی غیرقانونی شراب ضبط : ملزم فرار

مصدقہ خبر پر کارروائی کرتےہوئے محکمہ ایکسائز کے افسران نے گوا سے کاروار سپلائی کی جارہی غیر قانونی 60ہزار روپئے مالیت کی شراب اور سپلائی کے لئے استعمال کئے گئے آٹو کو شہر کے ایک ہوٹل کے قریب ضبط کرلینے کا واقعہ منگل کی رات پیش آیا ہے، جب کہ ملزم فرار بتایا گیا ہے۔

کاروار:بلدیہ وارڈوں کی دوبارہ ترتیب نو :17مئی تک اعتراضات داخل کرنےکا موقع

اترکنڑا ضلع کے مقامی انتظامیہ یعنی میونسپالٹی، بلدیہ ، پٹن پنچایت وغیرہ کے وارڈوں کی دوبارہ تشکیل کاری کا کام جاری ہے۔سال 2011کی مردم شماری کے تحت وارڈوں کی دوبارہ تشکیل کی گئی ہے۔ جن تعلقہ جات میں یہ تقسیم کاری کی گئی ہے انہیں 17مئی کے اندر اعتراضات سونپنے کی مہلت دی گئی ہے