کاروار:بچہ شادی ایک سماجی بیماری ہے اس کی روک تھام ہم سب کی ذمہ داری :ڈی سی نکول

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 13th September 2017, 10:53 PM | ساحلی خبریں |

کاروار:13/ستمبر (ایس اؤنیوز)ہمارے سما ج اور معاشرے میں آج بھی بچہ شادی جیسی رذیل روایت کا جاری رہنا شرمنا ک ہے اس کی روک تھام کرنا ہم سب کی ذمہ داری ہونے کی اترکنڑا ڈپٹی کمشنر ایس ایس نکول نے بات کہی ۔

ضلع انتظامیہ ، ضلع پنچایت ، محکمہ خواتین واطفال کے اشتراک سے ضلع پنچایت ہال میں مختلف محکمہ جات کے تعاون سے بچہ شادی کے انسداد کے متعلق منعقدہ ضلع سطح کے ورکشاپ میں شرکت کرتے ہوئے وہ خطاب کررہے تھے۔ پروگرام میں ضلع پنچایت ایگزکیٹیو آفیسر ایل چندرشیکھرنایک نے مہمان خصوصی کی حیثیت سے بات کرتے ہوئے کہاکہ بچہ شادی کو روکنے کااہم ذریعہ دیہی سطح پر دیہی عوام میں بیداری پیدا کی جائے ، گرام سبھاؤں کااہتمام کریں اور مختلف محکمہ جات کے تعاون سے انہیں سمجھانے کی کوشش کریں۔

بچہ شادی انسداد قانون پر سنئیر سول منصف ٹی گوندیا نے لکچر دیتے ہوئے کہاکہ آج بھی ہمارے دیہی معاشرے میں لڑکی کو ایک بوجھ سمجھا جاتا ہے اور اس کی جلدی شادی کردی جاتی ہے۔ بچہ شاد ی سماجی برائی اور بیماری ہے، بچہ شادی قانونی طورپر جرم ہونے کے باوجود عوام کو اس کا شعور نہیں ہے ، عوام میں اس سلسلے میں قانونی بیداری پیدا کرنی چاہئے ، ورنہ ایسے قانون بے کار ہیں ، نابالغوں کی شادی کرنے سے کئی مسائل جنم لیتے ہیں۔ لڑکی ہوکہ لڑکا، ہرکسی کی بچہ شادی کو روکنا ضروری ہونے کی بات کہی۔

ڈی سی آئی بی کے پولس انسپکٹر شرن گوڈا نے بچہ شادی کو روکنے میں مختلف محکمہ جات کے آپسی تعاون پر روشنی ڈالتے ہوئے کہاکہ بچہ شادی کو روکنا صرف پولس محکمہ کا ہی کام نہیں ہے۔ اس کی روک تھام کے لئے گرام پنچایت ، بلدیہ ، تعلقہ ، ضلع اور ریاستی سطح پر مختلف محکمہ جات متحرک ہیں، انہوں نے ورکشاپ میں شامل مندوبین سے کہاکہ بچہ شادی کی اطلاع دینے والوں کا نام مخفی رکھا جائےگا نڈر ہوکر کام کریں اور بچہ شادی کوروکیں۔ محکمہ خواتین واطفال کے ڈپوٹی ڈائرکٹر راجیند ربیکل نے صدارت کرتے ہوئے 2006بچہ شادی انسداد قانون کو ضلع بھر میں نافذ کرنا ہمار ااہم مقصد ہونے کی بات کہی۔ ورکشاپ میں مختلف محکمہ جات کے افسران ، عملہ ، این جی اؤز کے عہدیداران وغیرہ شریک تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

ایک ماہ سے منیپال اسپتال کے آئی سی یو میں زیر علاج نوزائیدہ بچہ کے لئے اہل خیر حضرات سے مالی تعاون کی اپیل

مرڈیشور غوثیہ محلے کا ایک نوزائیدہ بچہ پچھلے ایک ماہ سےسانس کی تکلیف (عمل تنفس)کی وجہ سے منی پال اسپتال کے آئی سی یو میں زیر علاج ہے ، ڈاکٹروں کاکہنا ہے کہ جب تک بچے کا عمل تنفس ٹھیک نہیں ہوجاتا اس کو I.C.Uمیں ہی رکھا جائے گا۔ جب کہ اسپتال کے اخراجات کافی زیادہ ہونے سے غریب سرپرست ...

منکی جماعت المسلمین اور منکی کمیونٹی دبئی کے زیرا نتظام26نومبر کو مفت دانت کیمپ کا انعقاد

جماعت المسلمین منکی اور منکی کمیونٹی دبئی کے زیر انتظام اور ینوپویا ڈنٹل کالج ینوپویا یونیورسٹی منگلورو کے تعاون سے 26نومبر 2017بروز اتوار سرکاری اردو ہائی اسکول منکی میں مفت دانت چک اپ کیمپ کا انعقاد ہوگا۔

کاروار میں جلد شروع ہوگا اسکوبا ڈائیونگ کا تربیتی مرکز۔ ٹورزم کوملے گا فروغ

نوجوانوں میں دلچسپی کا سبب بننے والی اسکوبا ڈائیونگ کی تربیت کے لئے ضلع انتظامیہ نے کاروار میں ایک مرکز قائم کرنے فیصلہ کیا ہے۔ جس کی وجہ سے یہاں پر سیاحت کو بہت زیادہ فروغ امکانات پیدا ہوگئے ہیں۔

بھٹکل میں پرشورام اسپورٹس کلب کے زیر اہتمام 25اور26نومبر کو بین الاضلاع کبڈی ٹورنامنٹ کا انعقاد

پرشورام اسپورٹس کلب (ر) موڈ بھٹکل کے زیر اہتمام25اور26نومبر کو شہر کے گرو سدھیندرا کالج میدان میں اترکنڑا، شیموگہ ، اُڈپی اضلاع پر مشتمل بین الاضلاع کبڈی ٹورنامنٹ منعقد کئے جانے کی منتظمین نے پریس کانفرنس کے ذریعے جانکاری دی ۔

وشوا ہندو پریشد کے دھرم سنسد کی میزبانی۔ اڈپی شہر ہوگیا زعفرانی!

اڈپی شہر میں 24نومبر سے شروع ہونے والے 'دھرم سنسد' اجلاس کی میزبانی کرنے کے لئے جو انتظامات کیے گئے ہیں اس کے تحت پورے شہر کو زعفرانی بنادیا گیاہے۔سڑکوں، نکڑوں ، چوراہوں اور عمارتوں پرجس طرف بھی نظر جاتی ہے زعفرانی جھنڈے، بینرس اور ہورڈنگس دکھائی دیتے ہیں۔