بیرونی ممالک جانے والوں کو حکومت کا تعاون نوجوانوں کو روزگار کی تربیت اور مالی تعاون فراہم کیا جائے گا : آر وی دیش پانڈے

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 13th June 2018, 11:33 AM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

بنگلورو،13جون (ایس او  نیوز) روز گار کی تلاش میں عرب ممالک سمیت بیرونی ملکوں کو روانہ ہونے والے کرناٹک کے نوجوانوں کو مناسب تربیت اور بیرونی ممالک کا سفر کرنے کیلئے درکار مالی مدد فراہم کرنے کیلئے ’نیشنل امیگریشن سنٹر‘ قائم کرنے کا فیصلہ حکومت کے زیر غور ہے ۔ وزیر برائے محصولات اور اسکل ڈیولپمنٹ آر وی دیش پانڈے نے یہ بات بتائی ۔گزشتہ روز ودھان سودھا میں منعقدہ محکمۂ اسکل ڈیولپمنٹ کے افسروں کی میٹنگ کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے آر وی دیش پانڈے نے بتایا کہ ہزاروں نوجوان روزگار کی تلاش میں ریاست کے مختلف مقامات سے سعودی عرب روانہ ہوئے ہیں ان میں سے کئی نوجوان روزگاری نہ ملنے پر وطن واپس لوٹ آرہے ہیں ۔ ایسے نوجوانوں سے ہمدردی کرنے کے ساتھ ہی روزگار کیلئے بیرونی ممالک جانے والوں کو مناسب تربیت دینے اور حکومت کے ذریعہ ہی انہیں بیرونی ممالک پہنچنے کیلئے درکار انتظام کرنے پر غور کیا جارہا ہے ۔ اس سلسلہ میں بحث بھی چل رہی ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ بیرونی ممالک جانے والے نوجوانوں کو روکنا ممکن نہیں ہے ۔ کئی نوجوان بیرونی ممالک میں رہ کر روزگار حاصل کرنا چاہتے ہیں، جبکہ کئی روزگاری کے بہانے دلالوں سے دھوکہ کھارہے ہیں ۔ ایسے دھوکہ باز دلالوں سے چھٹکارہ دلانے کیلئے حکومت نے یہ اہم فیصلہ کیا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ ایس سی ، ایس ٹی اور جسمانی طور پر معذور نوجوانوں کو گھروں سے روزگار کیلئے تربیت دینے کی غرض سے حکومت موبائل ٹریننگ سنٹر قائم کرے گی ۔ ’اسکلس آن وھیل ‘ کے نام سے یہ سنٹر شروع کیا جائے گا اس کیلئے غیر سرکاری اداروں کا تعاون رہے گا۔ انہوں نے بتایاکہ پہلے مرحلے میں 8 اضلاع میں اس منصوبے کو جاری کیا جائے گا۔ ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے وزیر موصوف نے بتایا کہ ہنرمند اکاڈمی کا قیام سمیت سابقہ حکومت کی طرف سے اعلان کردہ اسکیموں کو جاری رکھا جائے گا ۔ اس کیلئے کنگیری کے قریب واقع 14ایکڑ زمین کی نشاندہی کی گئی ہے ۔ کابینہ اجلاس میں عنقریب اس کے لئے منظوری حاصل کرلی جائے گی ۔ 

ایک نظر اس پر بھی

کاروار:انکولہ ۔ہبلی ریلوے لائن کی سدراہ بنے ماحولیاتی این جی اوز کو ملنے والی مالی امداد کی جانچ کریں : رکن اسمبلی روپالی نائک کامرکزی ریلوے وزیر سے مطالبہ

ریاست کے ساحلی علاقے سے شمالی کرناٹک  کو جوڑنے والی ’قسمت کی ریکھا‘ انکولہ ۔ ہبلی ریلوے لائن کی تعمیرمیں جو ماحولیاتی اداروں ، این جی اوزاور ماہرین سدراہ بنے ہوئے ہیں دراصل یہ تمام  بیرونی ممالک کی  کروڑوں دولت کے تعاون سے بےبنیاد چیخ وپکار کررہے ہیں کاروار انکولہ کی رکن ...

کاروار میں انکولہ ۔ہبلی ریلوے لائن منصوبےکو جاری کرنےعوامی احتجاج : قومی شاہراہ بند کرنے پر احتجاجی پولس کی تحویل میں

انکولہ۔ ہبلی ریلوے لائن منصوبہ، سرحد علاقہ کاروار میں صنعتوں کا قیام سمیت مختلف مانگوں کو لے کر لندن برج پر قومی شاہراہ کو بند کرتے ہوئے احتجاج کی تیاری میں مصروف کنڑا چلولی واٹال پارٹی کے واٹال ناگراج سمیت 21جہدکاروں کو پولس نے گرفتار کرنے کے بعد رہاکردیا۔

لوک سبھاانتخابات کی تیاری میں مصروف الیکشن کمشن :اتراکنڑا  ضلع میں 11.40 لاکھ رائے دہندگان : 14ہزار ووٹرس آؤٹ تو 12ہزار ووٹرس اِن

الیکشن کمیشن  آئندہ ہونےو الے لوک سبھا انتخابات کی تیاری میں مصروف ہے۔اندراج و اخراج   اور ترمیم کے بعد تشکیل دی گئی  رائے دہندگان کی  فہرست کے مطابق ضلع کے 6ودھان سبھا حلقہ جات میں کل 11،40،316 ووٹر ہیں۔ چونکہ انتخابات کے قریب تک ووٹروں کے اندراج کے لئے موقع دیا گیا ہے تو رائے ...

شرالی میں قومی شاہراہ کی توسیع کو لےکر ہزاروں عوام  شاہراہ روک کیا  احتجاج : مجموعی استعفیٰ کا انتباہ اور الیکشن بائیکاٹ کا اعلان

تعلقہ کے شرالی میں دن بدن قومی شاہراہ کی توسیع کو لےکر معاملہ گرم ہوتا جارہاہے۔ شرالی میں قومی شاہراہ کی توسیع 45میٹر سے کم کرکے 30میٹر کئے جانےکی مخالفت کرتے ہوئے جمعرات کو ہزاروں لوگو ں نے قومی شاہراہ روک کر سخت احتجاج درج کیا۔ اس دوران عوامی مانگوں کو منظوری نہیں دی گئی تو ...

کانگریس تشہیری کمیٹی کے نئے صدر ایچ کے پاٹل نے عہدہ کا جائزہ لے لیا ملک کواچھے دن کا وعدہ کرکے اقتدار پرآئی بی جے پی کے لیڈروں نے ملک کوبے روزگاروں کا مرکز بنا دیاہے:وینو گوپال

سابق ریاستی وزیر ایچ کے پاٹل نے آج کرناٹک پردیش کانگریس تشہیری کمیٹی کے صدر کی حیثیت سے عہدہ کاجائزہ لے لیا ۔

بی جے پی کوابھیشک منوسنگھوی نے کہا ، کرناٹک میں کھلواڑہوتاتوقانونی منصوبہ تیارتھا

کرناٹک کے تازہ سیاسی واقعات کے پس منظر میں کانگریس کے سینئر لیڈر ابھیشیک منو سنگھوی نے جمعرات کو کہا کہ اگر بی جے پی ریاست کی مخلوط حکومت کو غیر مستحکم کرنے کے لیے اپنے ’آپریشن لوٹس‘پر آگے بڑھتی تو اس کومنہ توڑجواب دینے کے لیے کانگریس نے منصوبہ تیار کر رکھا تھا۔