بجلی کی پیداوار میں کرناٹک خود کفیل بنے گا: شیوکمار

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 11th January 2017, 11:54 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو۔10؍جنوری(ایس او نیوز) ریاستی وزیر توانائی ڈی کے شیوکمار نے کہاکہ آئندہ سال کے اختتام تک شعبۂ توانائی میں کرناٹک مکمل طور پر خود کفیل ہوجائے گا۔ بجلی کی اضافی پیداوار کیلئے حکومت نے کئی منصوبے اپنائے ہیں۔ جن کو انجام تک پہنچانے کے ساتھ ہی اگلے سال کی شروعات سے ریاست میں بجلی کے مسئلے کو مکمل طور پر قابو میں کرلیا جائے گا۔ انہوں نے کہاکہ ریاست میں فی الوقت بجلی کی قلت کو سلجھانے کیلئے عارضی طور پر جندال پاور کمپنی سے 600میگاواٹ بجلی حاصل کرنے کا فیصلہ کیا گیاہے۔ چھ ماہ میں جندال کمپنی کی طرف سے ریاست کو اس بجلی کی ترسیل کی جائے گی۔ انہوں نے کہاکہ آئندہ سال کوڈلگی میں 1200 میگاواٹ توانائی پیدا کرنے والے ایرمراس پراجکٹ کو تیار کرلیا جائے گا۔ ساتھ ہی بلاری میں700 میگاواٹ کی بجلی دستیاب رہے گی۔ جو بعد میں 1600 میگاواٹ تک بڑھائی جائے گی۔ انہوں نے کہاکہ روایتی بجلی کی پیداوار کے ساتھ دیگر امکانات کا جائزہ بھی لیا جائے گا۔

ایک نظر اس پر بھی

ہاؤزنگ بورڈ کی طرف سے کنگیری میں فلاٹس کی عمارتیں تیار،مناسب قیمتوں پر انہیں عوام میں فروخت کیاجائے گا: کرشنپا

ریاستی وزیر ہاؤزنگ ایم کرشنپا نے کہاکہ کرناٹکا ہاؤزنگ بورڈ کی طرف سے کنگیری سوریہ نگر، اور بنڈے مٹھ علاقوں میں جدید ترین مکانات کی تعمیر کی جا ئے گی اور انہیں سبسیڈی قیمتوں پر فروخت کیا جائے گا۔

کیفے کافی ڈے پر چھاپوں کے بارے میں سدرامیا خاموش

سابق وزیر اعلیٰ اور بی جے پی لیڈر ایس ایم کرشنا کے داماد سدھارتھ کے مکان اور ان کے کیفے کافی ڈے آؤٹ لیٹ پر انکم ٹیکس محکمہ نے جو چھاپے مارے ان کے متعلق وزیراعلیٰ سدرامیا نے کچھ بھی کہنے سے انکار کردیا۔

ایس ایم کرشنا کو ڈرانے انکم ٹیکس چھاپے مارے گئے: ریونا

ریاستی وزیر ٹرانسپورٹ ایچ ایم ریونا نے سابق وزیر اعلیٰ ایس ایم کرشنا کے داماد سدھارتھ کی رہائش گاہ اور ان کی کمپنی کیفے کافی ڈے پر انکم ٹیکس کے چھاپوں کو ایس ایم کرشنا پر دباؤ ڈالنے بی جے پی کی کوششوں سے تعبیر کیا،

نجی اسپتالوں پر گرفت مضبوط کرنے کیلئے قانون،لیجسلیچر کاخصوصی اجلاس طلب کرنے پر غور

وزیر صحت کے آر رمیش کمار نے کہاکہ نجی اسپتالوں پر گرفت مضبوط کرنے کیلئے جو مسودۂ قانون تیار کیا گیاہے، اسے منظور کرانے کیلئے اکتوبر میں ریاستی لیجسلیچر کا خصوصی اجلاس طلب کئے جانے کا امکان ہے،