کاویری نگرانی بورڈ کے قیام کی پہل پر سدرامیا کا اظہار تشویش

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 21st September 2017, 11:56 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،21؍ستمبر(ایس او نیوز؍عبدالحلیم منصور)وزیر اعلیٰ سدرامیا نے کہاکہ کاویری آبی تنازعہ کے سلسلے میں کرناٹک کے ساتھ بدقسمتی سے بارہا نا انصافی ہورہی ہے۔ آج میسور میں دسہرہ تقریبات کا پروفیسر کے ایس نثار احمد کے ہاتھوں افتتاح ہونے کے بعد اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے سدرامیا نے کہاکہ کاویری آبی نگرانی بورڈ کے قیام سے کرناٹک کی حق تلفی ہوگی۔ عدالت کی طرف سے اس سلسلے میں حکم کے پیش نظر ریاستی حکومت کسانوں کے مفادات کی حفاظت کیلئے درکار ہر قدم اٹھانے تیار ہے۔وزیر اعلیٰ نے کہاکہ کاویری نگرانی بورڈ کے قیام کی صورت میں کرناٹک سے ناانصافی کے خدشات بہت پہلے سے ہی ظاہر کئے جارہے ہیں ، اسی لئے انہوں نے ریاست کے وکیلوں سے گذارش کی ہے کہ اس معاملے میں کرناٹک کے ساتھ ناانصافی ہونے کا موقع ہر گز فراہم نہ کریں۔جہاں تک ریاستی حکومت کا سوال ہے وہ ریاست کے کسانوں کے مفادات کی حفاظت کی پابند ہے۔ ریاستی حکومت نے پہلے ہی سے یہ موقف پیش کیا ہے کہ وہ کاویری نگرانی بورڈ کے قیام کی سخت مخالف ہے۔ پچھلے تین چار سال کے دوران ریاست میں سنگین خشک سالی کی وجہ سے دسہرہ تقریبات کو سادگی سے منایا جارتا رہا، لیکن رواں سال اگست میں اطمینان بخش بارش نے کسان طبقوں کو خوش کردیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ریاست کے معروف کنڑا ادیب پروفیسر نثار احمد نے اس بار دسہرہ تقریبات کا افتتاح کیا، جیسے ہی ان کی طرف سے ان تقریبات کا افتتاح کا اعلان ہوا ، ہر طرف سے اس کا خیر مقدم کیا گیا ۔ انہوں نے کہاکہ سیکولر اقدار کے ہمیشہ سے پابند پروفیسر کے ایس نثار احمد نے کنڑا زبان وادب کی ترویج کیلئے بہت ساری خدمات انجام دی ہیں اور سماج میں انہیں کافی احترام کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے۔ سدرامیا نے کہاکہ بحیثیت وزیر اعلیٰ وہ پانچویں مرتبہ دسہرہ تقریبات میں شرکت کررہے ہیں اور عوام سے یہی توقع رکھتے ہیں کہ آنے والے دنوں میں بھی ان کی خدمات کیلئے عوام کی دعائیں ان کے ساتھ رہیں گی۔ اس موقع پر ریاستی وزراء ایچ سی مہادیوپا ، تنویر سیٹھ ، اوما شری، پرمود مادھوا راج، ردرپا لمبانی ، یوٹی قادر ، رکن پارلیمان پرتاب سمہا ، دروا نارائن ، رکن اسمبلی جی ٹی دیوے گوڈا، سارا مہیش ، نریندرا سوامی ، کللے کرشنا مورتی ، ڈپٹی کمشنر رندیپ اور دیگر اہم شخصیات موجود تھیں۔

ایک نظر اس پر بھی

کرناٹکا کی ریاستی حکومت کا ٹو وہیلر بائیک پر ڈبل سواری کو روک لگانے کا فیصلہ؛ کیا یہ فیصلہ عوام کی پریشانیوں میں مزید اضافہ کا سبب بنے گا ؟

کرناٹک حکومت جلدہی ایک فیصلہ کرنے جارہی ہے جسے میں ریاست کے دوپہیوں والے سوار کی زندگی میں تبدیلی آسکتی ہے۔ریاستی حکومت 100سی سی یا اس سے کم انجن کی صلاحیت والے دو پہیوں کی موٹر گاڑیوں پر دو لوگوں کی سواری کرنے پر روک لگانے جارہی ہے ۔

ہبلی :پٹاخوں سے گھر میں لگی آگ ، کئی اشیاء جل کر خاک : کوئی جانی نقصان نہیں

دیوالی کے موقع پر پٹاخوں کو پھوڑنے کو لےکر سرکاری و غیر سرکاری طورپر احتیاطی تدابیر اختیار کرنےکے سلسلےمیں کئی احکامات جاری کئے جاتےہیں اور رہنمائی کی جاتی ہے لیکن اس کے باوجو د ہر سال پٹاخوں سے جانیں تلف ہونے  بچوں کی بینانی متاثر ہونے   پر سماجی ذمہ داران تشویش کا اظہار ...

وزیر اعلیٰ عہدے کے امیدوار کا اعلان نہ ہونے کی کانگریس کی انتخابی امید پر کوئی اثر نہیں ہوگا: جی پرمیشور

کرناٹک ریاستی کانگریس نے آج یہاں کہا کہ اسمبلی انتخابوں سے پہلے ریاست میں وزیر اعلیٰ عہدہ کے امید وار کے نام کا اعلان نہیں کئے جانے سے پارٹی کی امیدوں پر اس کاکوئی اثرنہیں پڑے گا۔