واٹال ناگراج کا صوبائی پرچم کو تسلیم کرنے سے انکار

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 10th March 2018, 8:29 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،9؍مارچ(ایس او نیوز)کنڑا چلوولی لیڈر واٹال ناگراج نے ریاستی حکومت کی طرف سے وضع کئے گئے نئے کنڑا پرچم کی شدید مخالفت کی ہے۔ کل اس سلسلے میں وزیر اعلیٰ سدرامیا کی طرف سے طلب کردہ میٹنگ سے غیر حاضر رہنے کے بعد آج اس پرچم کی مخالفت کرتے ہوئے جو کل منظر عام پر لایا گیا، واٹال ناگراج نے کہاکہ گزشتہ 50 سال سے ریاستی عوام کے ذہنوں میں زردوسرخ پرچم گھر کرچکا ہے۔ ریاستی حکومت کی طرف سے اس میں ایک اور رنگ کا اضافہ کرتے ہوئے جو پرچم جاری کیا گیا ہے وہ قطعاً قابل قبول نہیں۔ انہوں نے کہا کہ ریاست کے ادباء ، مصنفین ، دانشوران نے بھلے ہی مل کر صوبائی پرچم ترتیب دیا ہوگا، پچھلے پانچ دہائیوں سے جس پرچم کو علاقائی پرچم قرار دیا جارہاتھا، اس کو اتنی آسانی سے بدلا نہیں جاسکتا ۔انہوں نے کہاکہ یکم نومبر کو کنڑا راجیواتسوا کے موقع پر ریاست بھر میں زرد وسرخ پرچم ہی ریاست کے اتحاد کی علامت بن کر لہراتا ہے۔ اسے چھوڑ کر ایک سفید رنگ کا اضافہ کرتے ہوئے جو پرچم اپنایا گیا ہے وہ درست نہیں۔ انہوں نے کہاکہ کل پرچم کے اجراء کے موقع پر ان کی غیر حاضری اس پرچم کی مخالفت کیلئے ہی تھی۔ اگر کل وہ اس موقع پر حاضر رہتے تو ضرور نئے پرچم کی مخالفت کرتے۔ واٹال ناگراج نے کہا کہ جس صوبائی پرچم کو لے کر انہوں نے کنڑا تحریک چلائی ہے، یہی پرچم لے کر وہ آنے والے دنوں میں بھی اپنی تحریک کا سلسلہ جاری رکھیں گے۔ ریاستی حکومت کی طرف سے جو پرچم اپنایا گیا ہے اسے وہ صوبائی پرچم کے طور پر تسلیم نہیں کریں گے۔ 

ایک نظر اس پر بھی

کانگریس لیجسلیچر پارٹی میٹنگ میں سدرامیا پھر غالب، ہنگامہ خیزی کے اندیشوں کے برعکس میٹنگ میں کسی نے بھی زبان نہیں کھولی

حسب اعلان 22دسمبر کو ریاستی کابینہ میں توسیع کی تصدیق کرتے ہوئے آج سابق وزیراعلیٰ اور کانگریس لیجسلیچر پارٹی لیڈر سدرامیا نے تمام کانگریسی اراکین کو خاموش کردیا۔

مندروں کو دئے جانے والے فنڈز کو فرقہ وارنہ رنگ دینے بی جے پی کی مذموم کوشش، اسمبلی میں اسپیکر نے فرقہ پرست جماعت کی ایک نہ چلنے دی

وقفۂ سوالات میں بی جے پی رکن اسمبلی سی ٹی روی کی طرف سے سوالات تک خود کو محدود رکھنے کی بجائے ایک معاملے پر بحث شروع کرنے کی کوشش کو جب اسپیکر رمیش کمار نے روک دیا تو اس بات پر بی جے پی اراکین اور اسپیکر کے درمیان نوک جھونک شروع ہوگئی۔

ریاست کرناٹک میں 800 نئے سرویرس کا تقرر

وزیر مالگزاری آر وی دیش پانڈے نے آج ریاستی اسمبلی کو بتایاکہ ریاست بھر میں اراضی سروے کی ذمہ داری ادا کرنے کے لئے محکمے کی طرف سے 800نئے سرویرس کا تقرر کیا گیا ہے۔

پسماندہ طبقات کے سروے کی رپورٹ تیاری کے مراحل میں: پٹ رنگا شٹی

ریاستی وزیر برائے پسماندہ طبقات پٹ رنگا شٹی نے کہا ہے کہ سابقہ سدرامیا حکومت کی طرف سے درج فہرست طبقات کی ہمہ جہت ترقی کو یقینی بنانے کے مقصد سے جو سماجی ومعاشی سروے کروایا گیا تھا اس کے اعداد وشمار کو کمپیوٹرائز کرنے کا عمل جاری ہے۔