کرناٹک اسمبلی کے لئے 7؍مسلم امیدوار منتخب، روشن بیگ، محمد رحیم خان، ضمیراحمد خان اور دیگر شامل

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 16th May 2018, 11:37 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،15؍مئی(ایس او نیوز) کرناٹک  اسمبلی  انتخابات میں مختلف جماعتوں کے سات مسلم امیدوار بھی منتخب ہوئے ہیں۔ پچھلی اسمبلی  میں مسلم اراکین اسمبلی کی تعداد گیارہ تھی۔

حلقہ اسمبلی چامراج پیٹ سے کانگریس امیدوار ضمیر احمد خان نے بی جے پی امیدوار ایم لکشمی نارائن کو 33,137ووٹوں سے شکست دی۔ حلقہ اسمبلی گلبرگہ شمال سے کانگریس امیدوار محترمہ  کنیز فاطمہ کو کامیاب قرار دیا گیا جنہوں نے بی جے پی امیدوار چندرا کانت پاٹل کو 5,940ووٹوں کی اکثریٹ سے ہرادیا۔ محترمہ کنیز فاطمہ، سابق وزیر مرحوم  قمرالاسلام کی بیوہ ہیں۔

حلقہ اسمبلی منگلورو سے کانگریس امیدوار یوٹی قادر کامیاب ہوگئے، جنہوں نے اپنے قریبی بی جے پی حریف کو 19,739ووٹوں کی اکثریت سے شکست دے دی۔

حلقہ اسمبلی نرسمہاراجہ سے کانگریس امیدوار تنویر سیٹھ کامیاب رہے جنہوں نے بی جے پی امیدوار کو 18,127ووٹوں کی اکثریت سے ہرادیا۔

حلقہ اسمبلی شانتی نگر سے بھی کانگریس امیدواراین اے حارث کو کامیابی حاصل ہوئی جنہوں نے بی جے پی امیدوار کو 18,205ووٹوں کی اکثریت سے ہرادیا ۔

حلقہ اسمبلی شیواجی نگر سے کانگریس امیدوار روشن بیگ  حسب توقع اس بار بھی کامیاب رہے، انہوں نے بی جے پی اُمیدوار کٹا سبرامنیا نائیڈو کو 15040 ووٹوں سے ہرادیا۔ 

بیدر سے کانگریس امیدوار محمد رحیم خان کامیاب رہے جنہوں نے اپنے حریف بی جے  پی امیدوارسوریا کانت ناگ مرپلی کو 10,245ووٹوں کی اکثریت سے شکست دی ۔

اس بار کے انتخابات میں کانگریس نے 17 مسلم اُمیدواروں کو ٹکٹ دیا تھا جس میں سات کامیاب رہے اور دس کو شکست ہوئی۔ اس مرتبہ جےڈی ایس نے بھی 17 مسلم اُمیدواروں کو ٹکٹ دی تھی ، لیکن کوئی بھی اُمیدوار کامیاب نہیں ہوسکا۔ 

ایک نظر اس پر بھی

حجاج کرام کے آٹھویں اور نویں قافلوں کی بنگلورو واپسی؛ حج کمیٹی چیرمین آر روشن بیگ ائرپورٹ پر حاجیوں کے استقبال کے لئے رہےموجود

حجاج کرام کے آٹھویں اور نویں قافلوں کی آج مدینہ منورہ سے بنگلور واپسی ہوئی۔ تقریباً ہر فلائی میں 300حجاج کرام پر مشتمل قافلے 42 دن قبل بنگلور سے سفر مقدسہ پر رخصت ہوئے تھے، فریضۂ حج کی تکمیل ،مکہ مکرمہ میں عبادات اور مدینے میں روضۂ رسول ؐ پر حاضری کی سعادتوں سے سرفراز ہوکر یہ ...

مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ کی آج بنگلور آمد؛ آپریشن کمل کے جواب میں بی جے پی اراکین کے استعفوں کے خدشے؛ کیا اُلٹی پڑگئیں تدبیریں ؟

مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ منگل کو  بنگلور دورہ پر آرہے ہیں۔ حالانکہ بنگلور میں ان کا کوئی سرکاری پروگرام نہیں ہے، لیکن کہا جارہاہے کہ مخلوط حکومت کو گرانے کے لئے بی جے پی کی کوششوں کی مسلسل ناکامی کے بعد اس سلسلے میں ریاستی قائدین کو چند ہدایات دینے کے لئے وزیر داخلہ کا یہ ...

کرناٹکا کی مخلوط حکومت گرانے کے بی جے پی کے منصوبے پر پھر گیا پانی؛ کرناٹک کے بی جے پی قائدین پر امت شاہ گرم؛ پوچھا ،آپریشن کمل کی صلاحت نہیں تھی تو اس میں الجھے کیوں تھے

ریاستی حکومت کو ایک دن ایک ہفتہ اور ایک ماہ میں گرانے کے لئے بی جے پی قیادت بالخصوص ریاستی بی جے پی صدر بی ایس یڈیورپا کے تمام دعوؤں کی کانگریس اور جے ڈی ایس اتحاد نے ہوا نکال دی ہے۔جن اراکین اسمبلی کو آپریشن کمل کا شکار قرار دیاجارہاتھا انہوں نے عوام کے سامنے آکر واضح کردیا ہے ...

کرناٹک کی کماراسوامی سرکار نے ریاست میں پٹرول اور ڈیزل کیا دو روپئے سستا

ریاست کرناٹک کے وزیراعلیٰ کماراسوامی نے آج یہاں حیدرآباد۔کرناٹک کرنتی دیوس کے موقع پر جھنڈا لہرانے کے بعد پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں کٹوتی کرنے کا اعلان کیا۔ کماراسوامی نے کہا کہ  حکومت کے اس قدم سے دونوں ایندھنوں کی قیمت میں دوروپے فی لیٹر کمی ہو جائے گی ،کم ہوئی قیمتیں ...

بی جے پی کا آپریشن کنول جاری، لیکن کمار سوامی حکومت کو کوئی خطرہ نہیں: جارکی ہولی

یہ ا قرار کرتے ہوئے کہ ریاست میں مخلوط حکومت کوگرانے بی جے پی ’’آپریشن کنول‘‘ کا اہتمام کر رہی ہے کانگریس لیڈر ستیش جارکی ہولی جو حکومت کے خلاف بغاوت میں پیش پیش ہیں دعویٰ کیا کہ حکومت کو کوئی خطرہ نہیں ہے۔