کرناٹک اسمبلی کے لئے 7؍مسلم امیدوار منتخب، روشن بیگ، محمد رحیم خان، ضمیراحمد خان اور دیگر شامل

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 16th May 2018, 11:37 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،15؍مئی(ایس او نیوز) کرناٹک  اسمبلی  انتخابات میں مختلف جماعتوں کے سات مسلم امیدوار بھی منتخب ہوئے ہیں۔ پچھلی اسمبلی  میں مسلم اراکین اسمبلی کی تعداد گیارہ تھی۔

حلقہ اسمبلی چامراج پیٹ سے کانگریس امیدوار ضمیر احمد خان نے بی جے پی امیدوار ایم لکشمی نارائن کو 33,137ووٹوں سے شکست دی۔ حلقہ اسمبلی گلبرگہ شمال سے کانگریس امیدوار محترمہ  کنیز فاطمہ کو کامیاب قرار دیا گیا جنہوں نے بی جے پی امیدوار چندرا کانت پاٹل کو 5,940ووٹوں کی اکثریٹ سے ہرادیا۔ محترمہ کنیز فاطمہ، سابق وزیر مرحوم  قمرالاسلام کی بیوہ ہیں۔

حلقہ اسمبلی منگلورو سے کانگریس امیدوار یوٹی قادر کامیاب ہوگئے، جنہوں نے اپنے قریبی بی جے پی حریف کو 19,739ووٹوں کی اکثریت سے شکست دے دی۔

حلقہ اسمبلی نرسمہاراجہ سے کانگریس امیدوار تنویر سیٹھ کامیاب رہے جنہوں نے بی جے پی امیدوار کو 18,127ووٹوں کی اکثریت سے ہرادیا۔

حلقہ اسمبلی شانتی نگر سے بھی کانگریس امیدواراین اے حارث کو کامیابی حاصل ہوئی جنہوں نے بی جے پی امیدوار کو 18,205ووٹوں کی اکثریت سے ہرادیا ۔

حلقہ اسمبلی شیواجی نگر سے کانگریس امیدوار روشن بیگ  حسب توقع اس بار بھی کامیاب رہے، انہوں نے بی جے پی اُمیدوار کٹا سبرامنیا نائیڈو کو 15040 ووٹوں سے ہرادیا۔ 

بیدر سے کانگریس امیدوار محمد رحیم خان کامیاب رہے جنہوں نے اپنے حریف بی جے  پی امیدوارسوریا کانت ناگ مرپلی کو 10,245ووٹوں کی اکثریت سے شکست دی ۔

اس بار کے انتخابات میں کانگریس نے 17 مسلم اُمیدواروں کو ٹکٹ دیا تھا جس میں سات کامیاب رہے اور دس کو شکست ہوئی۔ اس مرتبہ جےڈی ایس نے بھی 17 مسلم اُمیدواروں کو ٹکٹ دی تھی ، لیکن کوئی بھی اُمیدوار کامیاب نہیں ہوسکا۔ 

ایک نظر اس پر بھی

منگلورو:آر ایس ایس پرچارک تربیتی کیمپ میں امیت شاہ کی شرکت۔ سرخ دہشت گردی ، رام مندر، سبریملا اور انتخابات پر ہوئی خاص بات چیت

ملک کی مختلف ریاستوں میں اسمبلی انتخابات کی مصروفیت کے باوجود بی جے پی کے صدر امیت شاہ نے منگلورو میں آر ایس ایس ’ پرچارکوں‘ کے لئے منعقدہ 6 روزہ تربیتی کیمپ کے اختتام سے ایک دن پہلے ’سنگھ نکیتن‘ میں پہنچ نے کے لئے وقت نکالااور تربیتی کیمپ کے شرکاء سے خطاب کیا۔

مشاعروں کو با مقصد بنا کر نفرت کے ماحول کو پیار اور محبت میں بدلا جاسکتا ہے : سید شفیع اللہ

مشاعرے اردو زبان اور ادب کی تہذیب کے ساتھ ساتھ امن اور اتحاد کو فروغ دینے کا ذریعہ بھی ہیں۔ ملک اور سماج کے موجودہ حالات کو بہتر بنانے کیلئے زیادہ سے زیادہ مشاعروں کا انعقاد کیا جائے۔ بنگلورو میں بزم شاہین کے کل ہند مشاعرے میں ان خیالات کا اظہار کیا گیا۔

ٹیپوجینتی منسوخ کرنے کی کوئی تجویز نہیں ہے جواہر لال نہروکی جنم دن تقریب سے وزیراعلیٰ کااظہار خیال

کسانوں کی طرف سے حاصل کردہ زرعی قرضہ معاف کئے جانے کے سلسلہ میں شکوک وشبہات کا شکار نہ ہوں۔ قرضہ وصولی کیلئے کسانو ں کوغیر ضروری طور پر اذیت دی گئی تو بینک منیجرکو بھی گرفتار کیا جاسکتا ہے ۔