کرناٹک اسمبلی انتخابات: بی جے پی نے مسلم زیراثر علاقوں میں لگائی نقب ، کانگریس کو اُٹھانا پڑا نقصان

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 17th May 2018, 11:51 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،16؍مئی ( ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا ) کرناٹک انتخابات میں مسلم اکثریتی 17 نشستوں پر بی جے پی نے اس بار چھ سیٹوں پر جیت درج کی ہے جبکہ اس سے پہلے 2013 میں اسے صرف 3 نشستیں ملی تھیں۔ اس بار بی جے پی کو 3 مزید نشستوں کا فائدہ ہوا۔ وہیں اس بار کانگریس کے کھاتے میں 10 سیٹیں ہی آئی ہیں۔ جبکہ 2013 میں اسے 11 سیٹیں ملی تھیں یعنی اس بار کانگریس کو 1 سیٹ کا نقصان ہوا۔کانگریس کے بعد مسلمانوں کے لئے متبادل کے طور پر دیکھی جا رہی جے ڈی ایس اس بار صرف ایک ہی سیٹ جیت پائی۔ جبکہ 2013 میں اس کے کھاتے میں 2 نشستیں آئی تھیں، یعنی اس بار جے ڈی ایس کو بھی ایک سیٹ کا نقصان اٹھانا پڑا۔ اس کے علاوہ ان سیٹوں پر بقیہ لوگوں کا تو کھاتہ بھی نہیں کھلا جبکہ 2013 میں ان کے حصے میں بھی ایک نشست آئی تھی۔کرناٹک کی ان 17 نشستوں پر مسلم سوسائٹی سے منسلک ووٹر مؤثر ثابت ہوئے ہیں۔ لیکن اس بار کرناٹک کے انتخابی مساوات کے ساتھ ہندوتو کا بھی مسئلہ چھایا رہا۔ اس کی وجہ سے بی جے پی پولرائزیشن کے سہارے مسلم اثرات والی بہت سی نشستیں جیتنے میں کامیاب رہی ہے۔کرناٹک کی 18 نشستوں پر مسلم کمیونٹی کے ووٹر فیصلہ کن کردار ادا کرتے رہے ہیں۔ 2013 کے اسمبلی الیکشن میں 18 نشستوں میں 11 سیٹوں پر مسلم ووٹرز نے کانگریس امیدواروں کو ہی الیکشن میں جیت دلائی تھی۔ بی جے پی نے بھی 4 نشستوں پر قبضہ کیا تھا۔کانگریس کے بعد مسلمانوں کے لئے متبادل کے طور پر دیکھی جانے والی جے ڈی ایس صرف دو نشستیں ہی جیتنے میں کامیاب رہی۔ اس کے علاوہ ایک سیٹ دوسرے کے کھاتہ میں آئی۔

ایک نظر اس پر بھی

مڈبھیڑ میں مارے گئے سی آر پی ایف جوان امیش مہانگ کی لاش رشتہ داروں کے حوالے

نائب وزیراعلیٰ ڈاکٹر جی پرمیشور نے کہا ہے کہ بلگاوی کے متوطن سی آر پی ایف جوان امیش مہانگ نے جس دلیری کے ساتھ دہشت گردوں کا مقابلہ کرتے ہوئے موت کو گلے لگایا ہے ریاستی حکومت اس جوان کی قربانی کو سلام کرتی ہے،

متحدہ جدوجہد سے رام نگرم اور منڈیا میں کامیابی ممکن، کانگریس اور جے ڈی ایس کارکنوں سے کمار سوامی اور ڈی کے شیوکمار کا خطاب

وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی اور وزیر برائے آبی وسائل ڈی کے شیوکمار نے آنے والے ضمنی انتخابات میں رام نگرم اسمبلی حلقے سے جے ڈی ایس امیدوار انیتا کمار سوامی اور منڈیا پارلیمانی حلقے سے جے ڈی ایس امیدوار ایل آر شیورامے گوڈا کو کامیاب بنانے کے لئے دونوں پارٹیوں کی طرف سے متحد ...

یکم نومبر سے سرکاری کام کاج صرف کنڑا میں : کمار سوامی

وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کمارسوامی نے سخت ہدایت جاری کی ہے کہ یکم نومبر 2018سے ریاست کا تمام سرکاری کام کاج کنڑا میں ہوگا۔ کسی بھی فائل کو جو منظوری کے لئے سرکاری محکموں میں رہے گی کنڑا زبان میں ہی آگے بڑھایا جائے گا

مودی قومی رہنماؤں کو سیاسی فائدے کے لئے استعمال نہ کریں:ملیکارجن کھرگے

لوک سبھا میں کانگریس کے لیڈر ملیکارجن کھرگے نے کہاہے کہ جیسے جیسے انتخابات قریب آرہے ہیں وزیر اعظم مودی سردار ولبھ بھائی پٹیل ، سبھاش چندر بوس اور دیگر قائدین کا نام لے کر ملک کے عوام کو گمراہ کرنے کی کوشش میں لگے ہوئے ہیں۔

کے سی وینو گوپال کے خلاف جنسی ہراسانی کیس میں ایف آئی آر،اے آئی سی سی عہدے سے برطرف کرنے بی جے پی کامطالبہ

اے آئی سی سی جنرل سکریٹری اور کرناٹک میں کانگریس امور کے انچارج کے سی وینو گوپال کے خلاف جنسی ہراسانی کے ایک کیس میں کیرلا پولیس کی کرائم برانچ نے مقدمہ درج کرلیا ہے۔