نجی اسپتالوں کے متعلق بل سدرامیا کے گلے کی ہڈی بن گئی،بیشتر کانگریس اراکین اسمبلی بل کے خلاف،استعفیٰ دینے رمیش کمار کی دھمکی

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 14th November 2017, 11:46 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،14؍نومبر(ایس اونیوز؍عبدالحلیم منصور) نجی اسپتالوں اور ڈاکٹروں پر لگام کسنے کیلئے ریاستی حکومت کی طرف سے لائے جارہے مجوزہ قانون کا تنازعہ وزیر اعلیٰ سدرامیا کیلئے درد سر بن چکا ہے۔ اس معاملے پر غور وخوض کیلئے کانگریس لیجسلیچر پارٹی کا اجلاس طلب کیا جاچکا ہے۔ اس بل کے متعلق کانگریس پارٹی میں ہی اختلاف رائے کو دیکھتے ہوئے وزیر اعلیٰ سدرامیا نے اس پر مباحثہ کیلئے یہ اجلاس طلب کیا ہے۔ ایک طرف وزیر صحت رمیش کمار قائم ہیں کہ نجی اسپتالوں پر لگام کسنے کیلئے یہ قانون منظور کیا جانا ضروری ہے تو دوسری طرف متعدد کانگریس اراکین اسمبلی کی رائے ہے کہ عوام کو مشکلات میں ڈال کر اس طرح کے قانون کی منظور ی نہیں کی جاسکتی۔ فوری طورپر اس سلسلے میں حالات کو قابو میں کرنے کیلئے مجوزہ قانون کو پس پشت ڈالنے کیلئے زور دیاجارہاہے۔ آج صبح وزیراعلیٰ سدرامیا نے بلگاوی کے سرکٹ ہاؤز میں سینئر وزراء سے تبادلۂ خیال کیا اور اس معاملے کو سلجھانے کیلئے ایک فارمولہ وضع کرنے کی پہل کی ۔ کانگریس کے متعدد وزراء اور اراکین اسمبلی میں نے مشورہ دیا ہے کہ مریضوں کو لاحق پریشانیوں کے مدنظر اس مجوزہ قانون کی منظوری کو فی الوقت ٹال دیاجائے اور موجودہ صورتحال برقرار رہنے دی جائے۔ میڈیکل پیشے سے وابستہ متعدد اراکین اسمبلی نے وزیر اعلیٰ سے کہا ہے کہ موجودہ صورتحال میں مداخلت نہ کی جائے۔ دوسری طرف وزیر صحت رمیش کمار نے کہاکہ کسی بھی حال میں وہ یہ بل ایوان میں پیش کرکے رہیں گے اگر انہیں یہ بل پیش کرنے کا موقع نہیں دیا گیا تو وہ اپنے عہدہ سے استعفیٰ دے دیں گے۔ وزیر اعلیٰ سدرامیا اس صورتحال سے نمٹنے اور رمیش کمار کو اس بات کیلئے منانے کی کوشش میں لگے ہوئے ہیں کہ فی الوقت اس بل کو سرد خانے میں ڈال دیا جائے۔ رمیش کمار نے اس بل کو ٹال دئے جانے کے متعلق سوالات پر کچھ بھی کہنے سے انکار کردیا، جبکہ اپوزیشن لیڈر جگدیش شٹر نے حکومت کو مشورہ دیاکہ وہ ڈاکٹروں سے تبادلۂ خیال کرے اور فوری طور پر ہڑتال ختم کرواکے مریضوں کو لاحق پریشانیوں سے نجات دلانے کیلئے اقدامات کریں۔ آج جگدیش شٹر کی رہائش گاہ کے روبرو نجی ڈاکٹروں کی ہڑتال کے متعلق اپنا ردعمل ظاہر کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ یہ اسمبلی اجلاس شمالی کرناٹک میں اس لئے منعقد کیاگیا ہے کہ یہاں کے سلگتے ہوئے مسائل پر سنجیدہ بحث ہوسکے۔ اس کی بجائے اگر ریاست گیر پیمانے پر کھڑے ہونے والے مسائل میں وقت ضائع کیا جائے تو شمالی کرناٹک کے امور پر کوئی بحث نہیں ہوپائے گی۔

ایک نظر اس پر بھی

گلبرگہ میں پچاس لاکھ روپئے لاگت کے شادی محل کی جگہ پرتعمیر ہوا صرف ایک ڈھانچہ ؛آر ٹی آئی کارکن نے اُٹھایا معاملہ

  کرناٹکا انفارمیشن کمیشن بنگلور کی ہدایت پر معروف آر ٹی آئی کارکن اور  اے پی سی آر کے ریاستی کوآرڈی نیٹر شیخ شفیع احمد نے تعلقہ آفسر اسماعیل صاب کے ساتھ  جب ایک شادی محل کا جائزہ لینے پہنچے تو اُنہیں حیرت کا ایک جھٹکا لگا کیونکہ وہاں کوئی محل موجود نہیں تھا بلکہ  ایک ...

بیلگام کے ایک اسکول میں مڈ ڈے میل کھانے سے 60 بچے بیمار؛ اسپتال میں والدین نے کیا ٹیچروں کا گھیرائو

ضلع بیلگام کے رام دُرگ تعلقہ کے  لکنائکن کوپّا کے ایک پرائمری اسکول میں دوپہر کا کھانا کھانے کے بعد اسکول کے 60 بچے بیمار پڑ گئے جنہیں فوری طور پر قریبی اسپتال لے جایا گیا ہے۔  واردات بدھ کی دوپہر کو پیش آئی ہے۔ 

اُڈپی میں مویشیوں کے بیوپاری حُسین ابّا کے قتل کے معاملے میں گرفتار تین ملزموں کو ملی ضمانت؛ آٹھ کی ضمانت نامنظور

مویشیوں کے بیوپاری حُسین ابا کے قتل کے معاملے میں گرفتار دو لوگوں  پولس ہیڈ کونسٹیبل  موہن کوتوال اور بجرنگ دل لیڈر پرساد کونڈاڈی کی ضمانت عرضی کو    اُڈپی سیشن کورٹ نے  منظور کرلیا ہے اسی طرح ایک اورفرار شدہ بجرنگ دل کارکن  توکارام  کی  پیشگی ضمانت بھی منطور کرلی ہے۔

گوری لنکیش کی طرح دیگر ادیبوں کے قتل کی سازش کا انکشاف 4روشن خیال مفکروں کو سکیورٹی فراہمی زیر غور

ریاستی حکومت روشن خیال مفکرین کو سیکورٹی فراہم کرنے پر سنجیدگی سے غور کر رہی ہے۔ ہندو مخالف نظریات کے حامل دانشوروں کی ہٹ لسٹ تیا ر کرتے ہوئے موت کی نیند سلائے جانے کی سازش کا انکشاف ہونے کے بعد روشن خیال مفکرین میں شامل گنان پیٹھ ایوارڈ یافتہ گریش کرناڈ، معروف قلمکاراور ...

پی یو سی سالِ دوم سائنس طلباء کے لیے مفت کوچنگ

ڈسٹرکٹ کوآرڈینیٹر اے سی سی پی ایل آرگنائزیشن بیدر کے پریس نوٹ کے بموجب بیدر ضلع کے مسلم طلباء جو پی یو سی سالِ دوم سائنس طلباء کو جولائی 2018ء تا جنوری2019تک اے سی سی پی ایل کی جانب سے مفت کوچنگ دی جائے گی۔