کابینہ میں جگہ نہیں ملنے کی وجہ سے کانگریس کے خیمہ میں اراکین اسمبلی کی ناراضگی 

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 12th June 2018, 11:28 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،12جون (ایس او نیوز؍ آئی این ایس انڈیا )کرناٹک میں جنتادل(ایس) کے ساتھ اتحاد کے بعد مخلوط حکومت بنانے اور وزراء کے قلمدانوں کی تقسیم ہونے کے بعد بھی کانگریس کی مشکلات ختم ہونے کانام نہیں لے رہی ہیں ۔کمار سوامی حکومت کے کابینہ کی توسیع میں جگہ نہیں ملنے سے کانگریس کے کچھ قائدین کے ناراض ہونے کی خبر پر پارٹی کے سنئیر قائدمسٹرڈی کے شیو کمار نے کہا کہ ’’ کچھ قائدین اس سے ناراض تھے لیکن یہ مسئلہ کو حل کرلیا گیا ہے۔میں خود ان اراکین اسمبلی سے رابطہ میں ہوں ۔بی جے پی قائد بی ایس یدی یورپا کے اس دعویٰ پرکہ کانگریس اور جنتادل(ایس) کے کچھ قائدین ان کے رابطے میں ہیں اور وہ بی جے پی میں شامل ہونا چاہتے ہیں۔اس پرمسٹر ڈی کے شیو کمار نے کہاکہ ’’یدی یورپا کو ہار قبول کرنا پڑا ہے ۔کرناٹک کے لوگوں نے انھیں انتخابات میں اپنی تائید نہیں دی ہے ۔اس درمیان کانگریس کے سنئیر لیڈر ایم بی پاٹل نے کمارسوامی کابینہ میں شامل کئے جانے کے مطالبہ کو لے کر آرہی خبروں کو غلط اور غیر ضروری بتایا ۔انھوں نے کہا کہ میں نے اس ضمن میں اپنے خیالات راہل گاندھی کو بتا دئیے ہیں اور انھوں نے میری باتوں کو سنجیدگی سے سماعت کی ہے۔مسٹر ایم بی پاٹل نے کہا کہ ممیں رکن اسمبلی کی حیثیت اپنے حلقہ انتخاب کے عوام کی خدمت کرکے خوش رہوں گا اوراس بات کا کوئی سوال ہی نہیں اُٹھتا کہ کوئی منتخب کانگریسی لیڈر ریاست میں پارٹی کو توڑنے کی کوشش کررہا ہے ۔انھو ں نے بی جے پی کے کسی لیڈر کے ذریعہ بی جے پی میں شامل ہونے کیلئے رابطہ کئے کجانے سے متعلق سوال کو مسترد کردیا ۔واضح رہے کہ مسٹرایم بی پاٹل کرناٹل میں لنگایتوں کے سب سے بڑے لیڈر ہیں۔ ایسی خبرآئی تھی کہ کمار سوامی کابینہ میں شامل نہیں کئے جانے سے ناراض ہیں۔ سدارامیا حکومت میں وزیرآبپاشی رہے مسٹ رایم بی پاٹل کی نظر ڈپٹی چیف منسٹر کے عہدہ پر تھی۔ذرائع کے مطابق اس بات کو لے کر انھوں نے پارٹی کے اند ربغاوت کی بگل بجا دی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

میٹرو کے کاموں میں تیزی پیدا کرنے کے علاوہ اسے مزید علاقوں تک توسیع دینے کا مطالبہ

شہر کے راستوں کی بدحالی اور ہر جگہ ٹرافک کے اژدھام نے شہریوں کو بے بس کر رکھا ہے اور عام عوام متبادل نظام نقل و حمل کی جستجومیں لگے ہوئے ہیں اسی لئے میٹرو ریل کی خدمات روز بروز عوام میں مقبولیت حاصل کرتی جا رہی ہے،

#می ٹو لہر کی زد میں آگئے بی جے پی کے مرکزی وزیر سدانندگوڈا اورسابق وزیر شیوانند نائک 

ملک میں بھر میں کام یا پیشے سے متعلقہ مقامات پر مرد ساتھیوں کی طرف سے خواتین کی جنسی ہراسانی کے معاملات کو عام کرنے کی جو لہر’’ #می ٹو‘‘ (میرے ساتھ بھی ۔۔یا میں بھی)کے نام سے چل پڑی ہے اس کی زد میں فلمی اداکاروں کے بعد اب صحافی اور سیاست دان بھی آگئے ہیں۔

شاہین ادارہ جات بنگلورو میں سہ روزہ انٹر کلاس اسپورٹس اور دیگر ثقافتی پروگرام ’’Falcon Fiesta 2018‘‘ کا انعقاد

شاہین ادارہ جات بنگلورو میں سہ روزہ انٹر کلاس اسپورٹس اور دیگر ثقافتی پروگرام ’’Falcon Fiesta 2018‘‘ کا انعقاد عمل میں آیا ۔اس پروگرام میں مہمانِ خصوصی کی حیثیت سے شرکت کرتے ہوئے ڈاکٹر اطہر علی کمشنر فوڈ اینڈ سیفٹی حکومتِ کرناٹک نے پروگرام کا اپنے ہاتھوں سے افتتاح کیا ۔ا

ایچ ڈی ریونا کی قیادت والے محکمہ پی ڈبلیو ڈی میں تبادلوں کی تعداد 900

ریاستی وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی کے بڑے بھائی اور جنتا دل ایس کے سربراہ ایچ ڈی دیوے گوڈا کے بڑے فرزند ریاستی وزیر ایچ ڈی ریونا کی قیادت والے محکمہ برائے عوامی خدمات (پی ڈبلیو ڈی) میں تبادلوں کی تعداد 900 کے نشان کو پار کر چکی ہے۔

ملک کے مفادمیں متحد رہنے کانگریس جے ڈی ایس قائدین کا فیصلہ،14سال بعد دیوے گوڈا اور سدرامیا کی ایک ساتھ اخباری کانفرنس

آنے والے لوک سبھا انتخابات میں سیکولر سیاسی طاقتوں کو مضبوط کرنے کی غیر معمولی پہل کرتے ہوئے آج کانگریس اور جے ڈی ایس قیادت نے اتحاد کا غیر معمولی پیغام دیا۔