کابینہ میں جگہ نہیں ملنے کی وجہ سے کانگریس کے خیمہ میں اراکین اسمبلی کی ناراضگی 

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 12th June 2018, 11:28 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،12جون (ایس او نیوز؍ آئی این ایس انڈیا )کرناٹک میں جنتادل(ایس) کے ساتھ اتحاد کے بعد مخلوط حکومت بنانے اور وزراء کے قلمدانوں کی تقسیم ہونے کے بعد بھی کانگریس کی مشکلات ختم ہونے کانام نہیں لے رہی ہیں ۔کمار سوامی حکومت کے کابینہ کی توسیع میں جگہ نہیں ملنے سے کانگریس کے کچھ قائدین کے ناراض ہونے کی خبر پر پارٹی کے سنئیر قائدمسٹرڈی کے شیو کمار نے کہا کہ ’’ کچھ قائدین اس سے ناراض تھے لیکن یہ مسئلہ کو حل کرلیا گیا ہے۔میں خود ان اراکین اسمبلی سے رابطہ میں ہوں ۔بی جے پی قائد بی ایس یدی یورپا کے اس دعویٰ پرکہ کانگریس اور جنتادل(ایس) کے کچھ قائدین ان کے رابطے میں ہیں اور وہ بی جے پی میں شامل ہونا چاہتے ہیں۔اس پرمسٹر ڈی کے شیو کمار نے کہاکہ ’’یدی یورپا کو ہار قبول کرنا پڑا ہے ۔کرناٹک کے لوگوں نے انھیں انتخابات میں اپنی تائید نہیں دی ہے ۔اس درمیان کانگریس کے سنئیر لیڈر ایم بی پاٹل نے کمارسوامی کابینہ میں شامل کئے جانے کے مطالبہ کو لے کر آرہی خبروں کو غلط اور غیر ضروری بتایا ۔انھوں نے کہا کہ میں نے اس ضمن میں اپنے خیالات راہل گاندھی کو بتا دئیے ہیں اور انھوں نے میری باتوں کو سنجیدگی سے سماعت کی ہے۔مسٹر ایم بی پاٹل نے کہا کہ ممیں رکن اسمبلی کی حیثیت اپنے حلقہ انتخاب کے عوام کی خدمت کرکے خوش رہوں گا اوراس بات کا کوئی سوال ہی نہیں اُٹھتا کہ کوئی منتخب کانگریسی لیڈر ریاست میں پارٹی کو توڑنے کی کوشش کررہا ہے ۔انھو ں نے بی جے پی کے کسی لیڈر کے ذریعہ بی جے پی میں شامل ہونے کیلئے رابطہ کئے کجانے سے متعلق سوال کو مسترد کردیا ۔واضح رہے کہ مسٹرایم بی پاٹل کرناٹل میں لنگایتوں کے سب سے بڑے لیڈر ہیں۔ ایسی خبرآئی تھی کہ کمار سوامی کابینہ میں شامل نہیں کئے جانے سے ناراض ہیں۔ سدارامیا حکومت میں وزیرآبپاشی رہے مسٹ رایم بی پاٹل کی نظر ڈپٹی چیف منسٹر کے عہدہ پر تھی۔ذرائع کے مطابق اس بات کو لے کر انھوں نے پارٹی کے اند ربغاوت کی بگل بجا دی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

بی جے پی کے سینئر لیڈر آر اشوک نے سدارامیا اور کمار سوامی سے استعفیٰ کا مطالبہ کیا

وکھے درخت کے پتوں کی مانند جھڑرہے کانگریس اراکین اسمبلی کی آنکھوں میں اندھیراچھا گیا ہے۔ انہیں آگے کوئی راستہ نظر نہیں آرہا ہے۔ ریاست کے عوام نے مخلوط حکومت کی چڈی پھاڑدی ہے۔ اس قسم کی طنزیہ باتیں بی جے پی کے سینئر قائدآر اشوک نے کہیں۔

کرناٹک پبلک اسکولوں میں سرکاری اسکولوں کو ضم نہیں کیا جائے گا

سرکاری اسکولوں کو ضم کئے بغیر ہی کرناٹک پبلک اسکول چلانے کی تجویز محکمہ تعلیمات کے زیر غور ہے ۔ سرکاری نظام کے تحت ایک ہی پلاٹ فارم پر پہلی سے بارھویں جماعت تک کی تعلیم کی سہولت فراہم کرنے کے مقصد سے کرناٹک پبلک اسکولوں کا انعقاد 2018-19 سے ہی شروع ہوگیا تھا ۔

کمارسوامی نے وزیراعلیٰ کا عہدہ دیش پانڈے کو سونپنے کی رکھی تھی شرط ، کانگریس لیڈران رہ گئے دنگ؛ کماراسوامی کی قیادت پر ہی ظاہر کیا گیا اعتماد

لوک سبھا انتخابات میں کانگریس جے ڈی ایس اتحاد کی رسواکن شکست کے بعد کل وزیراعلیٰ کمار سوامی کی قیادت میں طلب کی گئی غیر رسمی کابینہ میٹنگ کے دوران وزیراعلیٰ کمار سوامی کی طرف سے استعفے کی پیش کش کے متعلق چند نئے انکشافات سامنے آئے ہیں۔