یڈیورپا کرناٹک حکومت کو گرانے کی سازش کررہے ہیں: کانگریس

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 9th February 2019, 9:20 PM | ریاستی خبریں | ملکی خبریں |

نئی دہلی/بنگلورو،9فروری (ایس او نیوز؍یو این آئی) کانگریس نے کرناٹک کے سابق وزیر اعلیٰ اور بی جے پی کے سینئر لیڈر بی ایس یڈیورپا پر ممبران اسمبلی کی خرید و فروخت کے ذریعے ریاست کی مخلوط حکومت گرانے کی سازش کرنے کا الزام لگاتے ہوئے کہا کہ انہوں نے سپریم کورٹ کی ساکھ پر بھی سوال اٹھایا ہے ، اس لئے عدالت عظمیٰ کو اس معاملے کا از خود نوٹس لینا چاہئے ۔

کانگریس جنرل سکریٹری کے سی وینو گوپال اور پارٹی کے میڈیا سیل کے سربراہ رندیپ سنگھ سورجے والا نے ہفتہ کو یہاں پریس کانفرنس میں ایک آڈیو سنا کر یہ دعوی کیا کہ اس میں مسٹر یڈیورپا نے اسمبلی اسپیکر کے آر رمیش کمار کو اپنے حامی ممبران اسمبلی کو تیار کرنے کے لئے 50 کروڑ روپے اور بی جے پی کی حمایت کرنے پر ہر رکن اسمبلی کو 10 کروڑ روپے دینے اور وزیر بنانے کی بات کہی ہے ۔

مسٹر کے سی وینو گوپال نے کہا کہ یہ آڈیو جمعہ کی شام کو کرناٹک کے وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کمارسوامی نے جاری کیا ہے، جس میں بات چیت کے دوران مسٹر یڈیورپا وزیر اعظم نریندر مودی اور بی جے پی صدر کا نام لیتے ہوئے کہہ رہے ہیں کہ اگر ممبران اسمبلی کا معاملہ سپریم کورٹ جائے گا تو مسٹر مودی اور مسٹر امت شاہ دہلی میں ججوں سے ان کے معاملات کو حل کریں گے ۔ کانگریسی لیڈروں نے کہا کہ اس بات چیت سے ظاہر ہوتا ہے کہ بی جے پی کی مرکزی قیادت بھی کرناٹک میں ممبران اسمبلی کی خرید و فروخت کر کے ریاست میں بی جے پی حکومت بنوانے کے لئے سرگرم ہے ۔

آڈیوٹیپ کے مطابق اراکین اسمبلی کی خرید و فروخت پر تقریبا دو سو کروڑ روپے خرچ ہونے ہیں اور ہم جاننا چاہتے ہیں کہ اتنی بڑی رقم کہاں سے آئے گی۔ مرکزی حکومت ریاست کی منتخب حکومت کو غیر مستحکم کر رہی ہے ۔ مسٹر سورجے والا نے کہا کہ بی جے پی کی یہ سازش قومی سطح پر شرم کی بات ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مسٹر مودی نے پارلیمنٹ میں کالے دھن اور شفافیت پر لمبا خطبہ دیا تھا۔ انہیں بتانا چاہئے کہ ممبران اسمبلی کی خریداری کے لئے یہ پیسہ کہاں سے آ رہا ہے ۔ بی جے پی کو کروڑوں روپے کون دے رہا ہے ۔

کانگریس لیڈر نے مسٹر مودی کو مسٹر یڈیورپا کے خلاف بدعنوانی اور کالا دھن کے معاملے میں ایف آئی آر درج کر کے کارروائی کرنے کا چیلنج کیا اور کہا کہ کیا وزیر اعظم ملک کو یقین دلائیں گے کہ وہ اپنے بدعنوان لیڈر کے خلاف انسداد بدعنوانی قانون اور کالا دھن قانون کے تحت کارروائی کریں گے ؟ مسٹر کے سی وینو گوپال نے یہ بھی کہا کہ آڈیو میں مسٹر یڈیورپا جب ممبران اسمبلی کی خریداری کے لئے 10 کروڑ روپے دینے کی بات کر رہے ہیں تو وہ کس بنیاد پر کہہ رہے ہیں کہ سپریم کورٹ میں اس معاملے کو مسٹر مودی اور بی جے پی صدر امت شاہ سنبھال لیں گے، وہاں کی فکر نہ کرو؟۔

کانگریس لیڈروں نے سپریم کورٹ سے اس معاملے کا از خود نوٹس لینے کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ اس سے عدالت عظمیٰ کے وقار پر سوال اٹھا ہے ، اس لئے اسے کارروائی کرنی چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ مسٹر مودی بدعنوانی برداشت نہ کرنے کا دعویٰ کرتے ہیں اور انہیں اب مسٹر یڈیورپا کی بدعنوانی کے خلاف بھی کارروائی کرتے ہوئے ان کے یہاں ای ڈی اورسی بی آئی کے ذریعے چھاپے ڈال کر یہ پتہ لگایا جانا چاہئے کہ ان کے پاس اتنا پیسہ کہاں سے آیا؟۔ انہوں نے کہا کہ اگر مسٹر مودی مسٹر یڈیورپا کی بدعنوانی کو لے کر اٹھنے والے سوالات کا جواب نہیں دیتے ، تو یہ ثابت ہو جائے گا کہ 'چوکیدار ہی چور' ہے ۔

ایک نظر اس پر بھی

کرناٹک کا سب سے اہم حلقہ گلبرگہ؛ کیا ا س بار کانگریس اپنا قلعہ بچا پائے گی..؟ (آز: قاضی ارشد علی)

ملک بھر میں چل رہے 17ویں لوک سبھا کے انتخابات کے دو مراحل مکمل ہوچکے ہیں ۔تیسرا مرحلہ 23؍اپریل کو مکمل ہوگا ۔ریاستِ کرناٹک کے28پارلیمانی حلقہ جات میں سے14حلقہ جات میں رائے دہی مکمل ہوچکی ہے ۔باقی رہ گئے14حلقہ جات میں الیکشن پروپگنڈہ زوروں پر ہے۔18؍اپریل کو ہوئے14حلقہ جات میں ...

دیوگوڑا پر یدی یورپا کا طنز، 7 سیٹ پر لڑ رہے ہیں اور بنناچاہتے ہیں وزیر اعظم

حال ہی میں سابق وزیر اعظم اور جنتا دل (سیکولر) کے سربراہ ایچ ڈی دیوگوڑا نے کہا تھا کہ انتخابات کے بعد اگر راہل گاندھی وزیر اعظم بنتے ہیں تو وہ ان کا ساتھ دیں گے۔ان کے اسی بیان پر طنز کستے ہوئے بھارتیہ جنتا پارٹی کے لیڈر بی ایس یدی یورپا نے کہا ہے کہ دیوگوڑا سات سیٹوں پر لڑ رہے ہیں ...

مودی نے قومی سلامتی پر جھوٹ بول کر معاشی سلامتی کو نظر انداز کیا: راہل گاندھی

کانگریس کے صدر راہل گاندھی نے جمعہ کو الزام عائد کیا کہ وزیر اعظم مودی جہاں بھی جاتے ہیں، ہمیشہ جھوٹ بولتے ہیں اورقومی سلامتی پر عوام کو گمراہ کرتے ہیں اور اسی سبب انہوں ملک کی معاشی سلامتی کو یکسر نظر انداز کیا۔

شمالی کینرا پارلیمانی امیدوار آنند اسنوٹیکر کی انتخابی مہم میں وزیراعلیٰ کمارا سوامی اور ضلع انچارج وزیر دیشپانڈے کی شرکت

ضلع شمالی کینرا کی پارلیمانی سیٹ پرمرکزی وزیر اور بی جے پی امیدواراننت کمار ہیگڈے کے خلاف جنتادل ایس اور کانگریس کے مشترکہ امیدوار آنند اسنوٹیکر کی تشہیری مہم میں اس وقت تیزی آگئی جب ریاستی وزیراعلیٰ کماراسوامی اور ضلع انچارج وزیر آر وی دیشپانڈے نے مختلف مقامات پر انتخابی ...

مایاوتی نے ملائم سنگھ کو جتانے کی اپیل کی، ’ حقیقی لیڈر ‘ قرار دیا 

برسوں پرانی دشمنی بھول کر بی ایس پی سربراہ مایاوتی اور ایس پی سرپرست ملائم سنگھ یادو نے مین پوری میں جمعہ کو انتخابی ریلی کے دوران ایک اسٹیج پر مایاوتی نے ملائم کو جتانے کی اپیل کرتے ہوئے انہیں ’ حقیقی لیڈر‘ قرار دیا۔ 1995 میں ہوئے سرخیوں میں چھائے گیسٹ ہاؤس کانڈ کے بعد ایس پی سے ...

’ نیائے ‘ معیشت میں نئی جا ن ڈالے گا،نئے روزگارپیدا کرے گا :راہل گاندھی

کانگریس صدر راہل گاندھی نے جمعہ کو کہا کہ ان کی پارٹی کی کم سے کم آمدنی منصوبہ ( نیائے) معیشت میں نئی جان ڈالنے میں مدد کرے گا اور ملک میں روزگار کے مواقع پیدا کرے گی، جو نوٹ بندی اور جی ایس ٹی کی مار جھیل ر ہا ہے ۔ راہل نے یہا ں ایک انتخابی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نریندر ...

سادھوی پرگیہ کے نازیبا تبصرے پر بھاجپا گھرگئی ، صفائی پیش کرنا پڑگئی 

بی جے پی نے ممبئی حملے میں شہید ہوئے پولیس افسر ہیمنت کرکرے کو لے کرکے گئے سادھوی پرگیہ سنگھ ٹھاکر کے متنازعہ تبصرے سے پلہ جھاڑ لیا ہے۔ پارٹی نے کہا کہ بی جے پی کا واضح خیال ہے کہ ہیمنت کرکرے دہشت گردوں سے لڑتے ہوئے شہید ہوئے تھے۔بی جے پی نے انہیں ہمیشہ شہید مانا ہے۔اس سے پہلے ...

رام ولاس پاسوان مہا گٹھ بندھن میں آنا چاہتے تھے

بہار کے سابق وزیر اعلی اور ہندوستانی عوام مورچہ (ہم) کے سربراہ جتن رام مانجھی نے جمعہ کو دعوی کیا کہ لوک جن شکتی پارٹی کے سربراہ رام ولاس پاسوان مہا گٹھ بندھن میں شامل ہونا چاہتے تھے، لیکن انہوں نے ان کی انٹری پر روک لگا دی۔ پٹنہ میں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے مانجھی نے کہاکہ ...

بڑھ رہی ہے بے روزگاری، بہاراوراترپردیش سمیت 11 ریاستوں میں سب سے زیادہ اضافہ

ملک میں انتخابات کا ماحول ہے اور بے روزگاری کو لے کر کانگریس مودی حکومت پر حملہ آور ہے۔دوسری طرف حکومت کا کہنا ہے کہ ملک میں کافی روزگار ہیں لیکن انہیں پیمائش کا سسٹم ابھی نہیں تیار ہوا ہے۔نوکری پر ان الزام تراشیوں کے درمیان سرکاری اعداد و شماراین ایس ایس اوکے ہیں جو ملک کی ...