کانگریس امیدواروں کی پہلی فہرست میں ٹکٹ سے محروم رہنے والے اراکین اسمبلی بغاوت پر آمادہ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 16th April 2018, 5:09 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو 16؍اپریل (ایس او نیوز) جیساکہ عام طور پر دیکھا جاتا ہے کہ انتخابات کے موقع پرکسی بھی پارٹی سے ٹکٹ کی آس لگائے بیٹھے ہوئے امیدواروں اور سٹنگ ایم ایل ایز کواگر ٹکٹ نہیں ملتی تو ان کی طرف سے بغاوت یا دل بدلی کی راہ اپنائی جاتی ہے۔ 218حلقوں کے لئے کانگریس امیدواروں کی پہلی فہرست جاری ہونے کے بعد کچھ ایسا ہی دیکھنے کو مل رہا ہے۔کیونکہ اس فہرست میں کم از کم 12موجودہ اراکین اسمبلی کو اگلے انتخابات میں شریک نہیں رکھا گیا ہے۔لہٰذا ٹکٹ سے محروم رہنے والے کئی اراکین اسمبلی اور ان کے حامیوں نے فہرست جاری ہوتے ہی بغاوت اور احتجاج شروع کردیا ہے۔

پارٹی ذرائع کا کہنا ہے کہ بعض موجودہ اراکین اسمبلی کی کارکردگی، عمر،صحت اور عوام میں ان کی شبیہ کو سامنے رکھتے ہوئے اس مرتبہ انہیں فہرست سے خارج کیا گیا ہے۔ مگر ایسے اراکین اسمبلی اور ان کے حامیوں کو یہ بات ہضم نہیں ہورہی ہے۔ایم ایل اے جی ایچ سرینواس(تریکیرے)، منوہر تحصیلدار (ہانگل)اور ایچ پی راجیش (جاگلورو۔ایس ٹی ریزرو) کے حامیوں نے اپنے اپنے علاقوں میں فہرست جاری ہوتے ہی رات کو سڑکوں پر نکل آئے۔ کہیں پر پارٹی دفتر کے پاس یا ضلع انچارج منسٹروں کی رہائش کے سامنے دھرنا دے کر نعرے بازی کی گئی تو کہیں سڑکوں پر ٹائر جلا کر احتجاج کیا گیااور ٹریفک میں خلل ڈالنے کی کوشش کی گئی۔

اسی کے ساتھ بنگلورو میں سی وی رام نگر سے ٹکٹ کی آس لگائے بیٹھے پی رمیش نے یہ محسوس کرتے ہوئے کہ پارٹی انہیں ٹکٹ دینے والی نہیں ہے، کانگریس کو الوداع کہتے ہوئے جنتا دل میں شامل ہونے کا اعلان کر دیا ہے۔اس کے علاوہ پارٹی کو ایک بڑا جھٹکا دیتے ہوئے سینئر لیڈروی آر سدرشن نے کرناٹکا پردیش کانگریس کمیٹی کے نائب صدر کے عہدے سے استعفیٰ دے دیا ہے ،کیونکہ کولار سے انہیں ٹکٹ دینے کے بجائے ابھی حال ہی میں جنتادل سے ہجرت کرکے کانگریس میں شامل ہونے والے سید ضمیر پاشاہ کو پارٹی ٹکٹ دیا گیا ہے۔

پارٹی کے اندر ابھرنے والی اس بغاوت اور ناراضی کے تعلق سے ریاستی صدر ڈاکٹر پرمیشور نے کہا کہ جنہیں ٹکٹ نہیں ملا ہے ان کا مایوس ہونا ایک فطری بات ہے ۔ لیکن پارٹی ایسے اراکین کو سمجھابجھا کر معاملہ سلجھانے کا کام کرے گی۔

اس مرتبہ جن موجودہ اراکین اسمبلی کو پارٹی ٹکٹ سے محروم کیا گیا ہے ان کی فہرست کچھ یوں ہے: بی بی چیمن کٹی (بادامی)،مکبول ایس بھگوان( وجیاپور ا سٹی ) ،آر رام کرشنا (گلبرگہ رورل)،منوہر تحصیلدار (ہانگل)،بی این سرینواس(بیادگی)، بی ایم ناگراج (سیراگُپا)، این وائی گوپال کرشنا (بلاری)، ایچ پی راجیش (جاگلور)شیوامورتی نائک(مایاکونڈا)، جی ایچ سرینواس (تیریکیرے)،کے شادکشری (تپتور) اور ایس جینّا (کولیگال)

ایک نظر اس پر بھی

گلبرگہ میں پچاس لاکھ روپئے لاگت کے شادی محل کی جگہ پرتعمیر ہوا صرف ایک ڈھانچہ ؛آر ٹی آئی کارکن نے اُٹھایا معاملہ

  کرناٹکا انفارمیشن کمیشن بنگلور کی ہدایت پر معروف آر ٹی آئی کارکن اور  اے پی سی آر کے ریاستی کوآرڈی نیٹر شیخ شفیع احمد نے تعلقہ آفسر اسماعیل صاب کے ساتھ  جب ایک شادی محل کا جائزہ لینے پہنچے تو اُنہیں حیرت کا ایک جھٹکا لگا کیونکہ وہاں کوئی محل موجود نہیں تھا بلکہ  ایک ...

بیلگام کے ایک اسکول میں مڈ ڈے میل کھانے سے 60 بچے بیمار؛ اسپتال میں والدین نے کیا ٹیچروں کا گھیرائو

ضلع بیلگام کے رام دُرگ تعلقہ کے  لکنائکن کوپّا کے ایک پرائمری اسکول میں دوپہر کا کھانا کھانے کے بعد اسکول کے 60 بچے بیمار پڑ گئے جنہیں فوری طور پر قریبی اسپتال لے جایا گیا ہے۔  واردات بدھ کی دوپہر کو پیش آئی ہے۔ 

اُڈپی میں مویشیوں کے بیوپاری حُسین ابّا کے قتل کے معاملے میں گرفتار تین ملزموں کو ملی ضمانت؛ آٹھ کی ضمانت نامنظور

مویشیوں کے بیوپاری حُسین ابا کے قتل کے معاملے میں گرفتار دو لوگوں  پولس ہیڈ کونسٹیبل  موہن کوتوال اور بجرنگ دل لیڈر پرساد کونڈاڈی کی ضمانت عرضی کو    اُڈپی سیشن کورٹ نے  منظور کرلیا ہے اسی طرح ایک اورفرار شدہ بجرنگ دل کارکن  توکارام  کی  پیشگی ضمانت بھی منطور کرلی ہے۔

گوری لنکیش کی طرح دیگر ادیبوں کے قتل کی سازش کا انکشاف 4روشن خیال مفکروں کو سکیورٹی فراہمی زیر غور

ریاستی حکومت روشن خیال مفکرین کو سیکورٹی فراہم کرنے پر سنجیدگی سے غور کر رہی ہے۔ ہندو مخالف نظریات کے حامل دانشوروں کی ہٹ لسٹ تیا ر کرتے ہوئے موت کی نیند سلائے جانے کی سازش کا انکشاف ہونے کے بعد روشن خیال مفکرین میں شامل گنان پیٹھ ایوارڈ یافتہ گریش کرناڈ، معروف قلمکاراور ...

پی یو سی سالِ دوم سائنس طلباء کے لیے مفت کوچنگ

ڈسٹرکٹ کوآرڈینیٹر اے سی سی پی ایل آرگنائزیشن بیدر کے پریس نوٹ کے بموجب بیدر ضلع کے مسلم طلباء جو پی یو سی سالِ دوم سائنس طلباء کو جولائی 2018ء تا جنوری2019تک اے سی سی پی ایل کی جانب سے مفت کوچنگ دی جائے گی۔