سپریم کورٹ تنازعہ: چیف جسٹس سے ملنے پہنچے وزیر اعظم کے پرنسپل سکریٹری، انتظار کے بعد واپس لوٹے

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 14th January 2018, 12:12 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی، 13جنوری(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) ملک کی سب سے بڑی عدالت کے چار جج گزشتہ دن ملک کے سب سے بڑے جج کی شکایت کرنے کے لئے میڈیا کے سامنے آپہنچے ۔ چاروں ججوں نے سپریم کورٹ میں انتظامی بے ضابطگیوں کا الزام لگایا۔ جس کے بعد اندرون ملک اتھل پتھل دیکھنے کو ملی۔آج سپریم کورٹ تنازعہ کو لے کر بڑی خبر سامنے آئی ہے۔ وزیر اعظم دفتر میں پرنسپل سکریٹری نرپیندر مشرا نے آج صبح چیف جسٹس دیپک مشرا سے ملنے کی کوشش کی، لیکن ان کی ملاقات دیپک مشرا سے نہیں ہو پائی۔ جس کے بعد پی ایم او کے پرنسپل سکریٹری نرپیندر کو چیف جسٹس کے گھر کے گیٹ پر انتظار کر کے خالی ہاتھ لوٹنا پڑا۔پریس کانفرنس میں جسٹس چلمیشور، جسٹس رنجن گوگوئی، جسٹس مدن بھیم راؤ لوکر اور جسٹس کورین جوزف موجود تھے۔ اس تنازعہ پر اٹارنی جنرل کے کے وینو گوپال نے آج پھر کہا ہے کہ یہ تنازعہ حل جائے گا۔چیف جسٹس آف انڈیا دیپک مشرا سے ان چاروں ججوں نے دو ماہ پہلے ہی سات صفحات کا مکتوب لکھ کر ناراضگی ظاہر کر چکے تھے ۔ ان چاروں کے لکھے مکتوب میں ناراضگی کی وجہ بھی صاف ہوتی ہے۔ جو سب سے بڑی وجہ ہے وہ یہ ہے ۔ججوں کے روسٹر بنانے کا حق یعنی یہ فیصلہ کہ کون جج یا کون سا بنچ کس کیس کی سماعت کرے گا ۔ الزام یہ بھی ہے کہ چیف جسٹس نے باقی سینئر ججوں کو نظر انداز کرتے ہوئے اپنی پسندکے بنچ کو مقدمات کی سماعت کے لیے منتخب کیا ۔ یعنی ایک طرح سے چیف جسٹس پر من مانی اور جانبدارانہ رویہ اپنانے کا الزام لگایا گیا ہے۔ علاوہ ازیں مکتوب میں ججوں کی تقرری کے معاملے میں میمورنڈم اور پروسیجر کا مسئلہ بھی اٹھایا گیا ہے۔میمورنڈم آف پروسیجر کا مطلب یہ ہے کہ ہائی کورٹ اور سپریم کورٹ کے ججوں کی تقرری کے قوانین و ضوابط ۔ الزام یہ بھی ہے کہ میمورنڈم اور پروسیجر تیار کرنے میں سینئر ججوں کے مشورہ کو نظر انداز کیا گیا ۔ 

ایک نظر اس پر بھی

وزیر اعظم کی کسان بہبود ریلی کا ہفتہ کو انعقاد 

وزیر اعظم نریندر مودی کل شاہ جہاں پور میں کسان بہبود ریلی سے خطاب کریں گے۔ اس دوران وہ کسانوں کے لیے کئی اعلانات کر سکتے ہیں۔ وزیر اعظم کے سرکاری پروگرام کے مطابق مودی کل دہلی سے بریلی واقع اتر ترشول ہوائی اڈے پر اتریں گے اور وہاں سے ہیلی کاپٹر سے دوپہر 12 بج کر 20 منٹ پر روضہ واقع ...

وزیر اعظم مودی آئندہ ہفتہ جنوبی افریقہ سمیت کئی ممالک کے دورے پر

وزیر اعظم نریندر مودی اگلے ہفتے 23 سے 27 جولائی تک روانڈا، یوگنڈا اور جنوبی افریقہ کے دورے پر جائیں گے۔ جنوبی افریقہ کے دورے کے دوران وہ برکس کانفرنس میں بھی حصہ لیں گے جس میں بین الاقوامی امن اور سلامتی سمیت کئی عالمی مسائل پر بات چیت متوقع ہے۔وزارت خارجہ کے سکریٹری نے صحافیوں ...

عدم اعتماد تحریک میں مودی حکومت کو ملی بڑی کامیابی، اپوزیشن کواُٹھانی پڑی سخت ہزیمت

اپوزیشن کانگریس کو آج جمعہ کو اُس وقت سخت حزیمت کا سامنا کرنا پڑا، جب لوک سبھا میں ​عدم اعتماد کی تحریک پر 12 گھنٹے کی بحث کے بعد مودی حکومت نے اعتماد کا ووٹ حاصل کرلیا۔ عدم اعتماد کی تحریک کی مخالفت میں اور مودی حکومت کی حمایت میں 325 ووٹ پڑے جبکہ عدم اعتماد کی تحریک کی ...

نئی دہلی میں چھ ستمبر کو ہو گی پہلی امریکہ ۔بھارت مذاکرات: امریکی وزارت خارجہ

طویل انتظار اور بار بار تاریخ مقرر کرنے کے بعد بالآخر امریکہ اور بھارت کے درمیان پہلی مذاکرات چھ ستمبر کو نئی دہلی میں ہونی طے ہوئی ہے۔امریکہ نے ناگزیر وجوہات کا حوالہ دیتے ہوئے گزشتہ ماہ مذاکرات ملتوی کر دی تھی۔ مذاکرات بھارت اور امریکہ کے وزیر اور وزرائے دفاع کے درمیان ہونے ...

ہیلی کاپٹر اسکینڈل میں ای ڈی کے چارج شیٹ پر عدالت 23 جولائی کو کرے گی غور

دہلی کی ایک عدالت نے وی وی آئی پی ہیلی کاپٹر رشوت معاملے میں ای ڈی کی طرف سے دائر چارج شیٹ پر 23 جولائی کو نوٹس لے گی ۔ خصوصی جج اروند کمار نے تفتیشی افسر کے موجود نہ ہونے کا نوٹس لیتے ہوئے معاملے کو پیر کے لئے درج کر دیا ہے۔ ای ڈی نے کہا کہ اس نے تمام ملزمان کے خلاف الزامات کی حمایت ...