جے ڈی ایس باغی رکن اسمبلی بالکرشنا کی یڈیورپا سے ملاقات، بی جے پی میں شمولیت کے متعلق قیاس آرائیاں مسترد

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 20th April 2017, 1:25 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو:19/اپریل(ایس او نیوز)گزشتہ راجیہ سبھا انتخابات میں جنتادل (ایس) قیادت کے خلاف بغاوت کرکے کراس ووٹنگ کرنے والے ماگڑی کے رکن اسمبلی ایچ سی بال کرشنا نے بی جے پی میں شمولیت کیلئے پرتولنے شروع کردئے ہیں۔آج انہوں نے اس سلسلے میں سابق وزیراعلیٰ اور ریاستی بی جے پی صدر بی ایس یڈیورپا سے ڈالرس کالونی میں واقع ان کی رہائش گاہ پہنچ کر ملاقات کی اور دونوں رہنما ؤں کے درمیان کافی طویل بات چیت ہوئی۔سیاسی حلقوں میں اس ملاقات کو لے کر یہی کہاجارہا ہے کہ بالکرشنا نے اپنے ماگڑی حلقہ میں سیاسی پہچان بنائے رکھنے کے مقصد سے بی جے پی کا رخ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ یاد رہے کہ ایچ سی بال کرشنا اس سے پہلے بھی بی جے پی ٹکٹ پر ماگڑی سے ایک مرتبہ منتخب ہوچکے ہیں بعد میں انہوں نے جنتادل (ایس) میں شمولیت اختیار کرلی، ایک مرتبہ بی جے پی سے نمائندگی کے بعد تین مرتبہ وہ اسی حلقہ سے جے ڈی ایس سے منتخب ہوئے ہیں۔ یڈیورپا سے ملاقات کے بعد اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے بالکرشنا نے کہاکہ اس ملاقات کے دوران انہوں نے کسی بھی سیاسی امر پر کوئی بات چیت نہیں کی بلکہ ٹمکور کے سدگنگا مٹھ کے سربراہ ڈاکٹر شیوکمار سوامی کے اعزاز میں منعقدہ گرو وندنا پروگرام میں مدعو کرنے کیلئے انہوں نے یڈیورپا سے ملاقات کی۔ انہوں نے کہاکہ جنتادل (ایس) قیادت کے خلاف آواز اٹھانے والے تمام سات اراکین اسمبلی متحد ہیں، ان میں پھوٹ پڑنے کے متعلق کسی طرح کا شک نہ کیا جائے۔ بہت جلد تمام سات اراکین کانگریس میں شمولیت کے متعلق فیصلہ لیں گے۔ انہوں نے کہاکہ کل ہی تمام اراکین نے اے آئی سی سی جنرل سکریٹری ڈگ وجئے سنگھ سے بات چیت کی ہے۔ اس موقع پر یڈیورپا نے اپنے خیالات ظاہر کرتے ہوئے تصدیق کی کہ بالکرشنا کی ان سے سیاسی موضوع پر کوئی بات چیت نہیں ہوئی۔ اے آئی سی سی جنرل سکریٹری ڈگ وجئے سنگھ کے اس تبصرہ پر کہ یڈیورپا کی اب ان کے طبقہ لنگایت میں مقبولیت نہیں رہی، جس کی وجہ سے بی جے پی کو گنڈل پیٹ اور ننجنگڈھ حلقوں میں ہارکا منہ دیکھنا پڑا ہے، سابق وزیراعلیٰ نے تبصرہ کرنے سے انکار کردیا۔

ایک نظر اس پر بھی

کرناٹک کی کانگریس حکومت پر نشانہ لگانے پر سدرامیا نے کیا پلٹ وار؛ کہا مودی میں وزیراعظم بننے کی صلاحیت ہی نہیں

کرناٹک کی کانگریس حکومت پر نشانہ سادھنے پر پلٹ وار کرتے ہوئے ریاست کے وزیر اعلیٰ سدرامیا نے وزیراعظم نریندر مودی کو جھوٹ کا پلندہ   قرار دیتے ہوئے    کہا  کہ نریندر مودی   میں وزیراعظم بننے کی صلاحیت ہی نہیں ہے

کانگریس لیڈر کی بی بی ایم پی دفتر کو آگ لگادینے کی دھمکی؛سی سی ٹی وی میں قیدہوا پورا منظر؛ سدارامیا نے دکھایا پارٹی سے باہر کا راستہ

کانگریس لیڈر نارائن سوامی کے  بی بی ایم پی دفتر میں گھس کر پٹرول چھڑکنے اوردفتر کو آگ لگادینے کی دھمکی کی وڈیو نیوز چینلوں میں نشر ہونے کے بعد فوری حرکت کرتے ہوئے سدرامیا نے نارائن سوامی کو   کانگریس پارٹی سے باہر کا راستہ دکھادیا ہے۔

این اے حارث نے فرزند کی حرکت پر اسمبلی میں کی معذرت خواہی

رکن اسمبلی این اے حارث کے فرزند نلپاڈ محمد کی طرف سے کل پیر کو ایک طالب العلم کو زودوکوب کرنے کا معاملہ سامنے آنے کے بعد آج این اے حارث نے ریاستی اسمبلی میں معذرت طلب کی اور کہا کہ ان کے بیٹے کی حرکت کی وجہ سے  اُنہیں جس طرح ندامت اُٹھانی پڑی، وہ وقت کسی باپ پر نہ آئے۔

بی جے پی صدر امت شاہ کا کرناٹک دورہ؛ کرناٹک سے کانگریس کو اُکھاڑ پھینکنے کا کیا دعویٰ

کرناٹک کے دورہ پر آئے  بی جے پی کے قومی صدر امت شاہ نے کانگریس پر حملہ بولتے ہوئے کہا کہ کرناٹک حکومت لوگوں کی اُمیدوں پر پورا اُترنے میں بری طرح ناکام ہوگئی ہے۔جس کی بنا پر  آئندہ انتخابات میں یہاں بی جے پی کو شاندار جیت حاصل ہوگی۔ وہ یہاں مینگلور کے قریب سولیا میں منگل ...