جے ڈی ایس باغی رکن اسمبلی بالکرشنا کی یڈیورپا سے ملاقات، بی جے پی میں شمولیت کے متعلق قیاس آرائیاں مسترد

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 20th April 2017, 1:25 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو:19/اپریل(ایس او نیوز)گزشتہ راجیہ سبھا انتخابات میں جنتادل (ایس) قیادت کے خلاف بغاوت کرکے کراس ووٹنگ کرنے والے ماگڑی کے رکن اسمبلی ایچ سی بال کرشنا نے بی جے پی میں شمولیت کیلئے پرتولنے شروع کردئے ہیں۔آج انہوں نے اس سلسلے میں سابق وزیراعلیٰ اور ریاستی بی جے پی صدر بی ایس یڈیورپا سے ڈالرس کالونی میں واقع ان کی رہائش گاہ پہنچ کر ملاقات کی اور دونوں رہنما ؤں کے درمیان کافی طویل بات چیت ہوئی۔سیاسی حلقوں میں اس ملاقات کو لے کر یہی کہاجارہا ہے کہ بالکرشنا نے اپنے ماگڑی حلقہ میں سیاسی پہچان بنائے رکھنے کے مقصد سے بی جے پی کا رخ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ یاد رہے کہ ایچ سی بال کرشنا اس سے پہلے بھی بی جے پی ٹکٹ پر ماگڑی سے ایک مرتبہ منتخب ہوچکے ہیں بعد میں انہوں نے جنتادل (ایس) میں شمولیت اختیار کرلی، ایک مرتبہ بی جے پی سے نمائندگی کے بعد تین مرتبہ وہ اسی حلقہ سے جے ڈی ایس سے منتخب ہوئے ہیں۔ یڈیورپا سے ملاقات کے بعد اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے بالکرشنا نے کہاکہ اس ملاقات کے دوران انہوں نے کسی بھی سیاسی امر پر کوئی بات چیت نہیں کی بلکہ ٹمکور کے سدگنگا مٹھ کے سربراہ ڈاکٹر شیوکمار سوامی کے اعزاز میں منعقدہ گرو وندنا پروگرام میں مدعو کرنے کیلئے انہوں نے یڈیورپا سے ملاقات کی۔ انہوں نے کہاکہ جنتادل (ایس) قیادت کے خلاف آواز اٹھانے والے تمام سات اراکین اسمبلی متحد ہیں، ان میں پھوٹ پڑنے کے متعلق کسی طرح کا شک نہ کیا جائے۔ بہت جلد تمام سات اراکین کانگریس میں شمولیت کے متعلق فیصلہ لیں گے۔ انہوں نے کہاکہ کل ہی تمام اراکین نے اے آئی سی سی جنرل سکریٹری ڈگ وجئے سنگھ سے بات چیت کی ہے۔ اس موقع پر یڈیورپا نے اپنے خیالات ظاہر کرتے ہوئے تصدیق کی کہ بالکرشنا کی ان سے سیاسی موضوع پر کوئی بات چیت نہیں ہوئی۔ اے آئی سی سی جنرل سکریٹری ڈگ وجئے سنگھ کے اس تبصرہ پر کہ یڈیورپا کی اب ان کے طبقہ لنگایت میں مقبولیت نہیں رہی، جس کی وجہ سے بی جے پی کو گنڈل پیٹ اور ننجنگڈھ حلقوں میں ہارکا منہ دیکھنا پڑا ہے، سابق وزیراعلیٰ نے تبصرہ کرنے سے انکار کردیا۔

ایک نظر اس پر بھی

بی جے پی کی کرناٹک کی تیسری فہرست جاری

بی جے پی نے آج ریاستی اسمبلی کے انتخابات کے لئے 59 امیدواروں کی تیسری فہرست جاری کردی۔بی جے پی نے اب تک 213 امیدواروں کا اعلان کیا ہے جبکہ 13 سیٹوں پر امیدواروں کا اعلان کیا جانا باقی ہے ۔

دیوے گوڈا نے سدرامیا حکومت کوبدعنوان قرار دیا، مودی اور امت شاہ کی نکتہ چینی کرنے سے سابق وزیر اعظم کا انکار

سابق وزیراعظم اور جنتادل (ایس) صدر ایچ ڈی کمار سوامی نے ریاست کی سدرامیا حکومت کو سب سے بدعنوان حکومت قرار دیا اور کہاکہ سدرامیا جو جنتادل (ایس) کو ختم کردینے کا خواب دیکھ رہے ہیں ریاستی عوام انہیں سبق سکھائیں گے۔

آر ٹی ای کے تحت داخلوں کا عمل شروع

حق تعلیم قانون کے تحت اسکولی بچوں کے داخلوں کا عمل شروع ہوچکا ہے۔ ہزاروں کی تعداد میں لوگوں نے اس قانون کے تحت اپنے قریبی اسکولوں میں اپنے بچوں کے داخلوں کے لئے آر ٹی ای درخواستیں دائر کی ہیں،

امیت شاہ کا باربار دورہ ،ریاست نہیں سیاست کیلئے بی جے پی صدر کو کرناٹک کے بارے میں معلومات ہی نہیں : کے جے جارج

بنگلورو ترقیات وزیر کے جے جارج نے کہاکہ بھارتیہ جنتاپارٹی( بی جے پی) کے قومی صدر امیت شاہ باربار کرناٹک کاجودورہ کرنے لگے ہیں وہ ریاست سے محبت اورلگاؤنہیں بلکہ جھوٹی سیاست کرنے کے مقصد سے آرہے ہیں۔

میں وزیراعظم کی کرسی کے خواب نہیں دیکھتا: سدرامیا

وزیر اعلیٰ سدرامیا نے کہاکہ پچھلے پانچ سال کے دوران ریاست میں کانگریس نے بدعنوانی سے پاک انتظامیہ فراہم کیاہے، اگلے پانچ سال کے دوران بھی ریاست میں کانگریس حکومت انتہائی شفاف انتظامیہ فراہم کرنے کے لئے پوری طرح کمر بستہ ہے، کانگریس پارٹی کو انتخابات میں واضح اکثریت کاپورا ...