جاؤرا سیمی مقدمہ:باعزت بری کیے گے ملزمین کے خلاف داخل اپیل سماعت کے لیئے منظور

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 10th June 2018, 11:33 PM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

جمعیۃ علماء جبل پور ہائی کورٹ میں ملزمین کا دفاع کرے گی:گلزاراعظمی
ممبئی10جون(ایس او نیوز؍پریس ریلیز ) مدھیہ پردیش کے شہر جاؤرا سے تعلق رکھنے والے چار ملزمین جن پر ممنوع تنظیم سیمی کے رکن ہونے اور دہشت گردانہ کارروائیاں انجام دینے کے لیئے بینک لوٹنے کے الزامات عائد کیئے گئے تھے کو نچلی عدالت نے ناکافی ثبوت کی بنیاد پر مقدمہ سے باعزت بری کردیا تھا جس کے خلاف ریاستی سرکار نے ہائی کورٹ میں اپیل داخل کی تھی جس کا نمبر 2625/2016 ہے جسے ہائی کورٹ نے سماعت کے لیئے منظور کرتے ہو ئے ملزمین کو نوٹس جاری کیاہے۔

اس معاملے کے تین ملزمین محمد ساجد عبدالستار، ابو فضل خان محمد عمران خان اور محمد اقرا عبدالراؤف نے جمعیۃ علما ء مہاراشٹر (ارشد مدنی) قانونی امداد کمیٹی سے قانونی امداد طلب کی ہے اور اس تعلق سے انہوں نے مقامی وکیل محرم علی کے توسط سے ان کے خلاف داخل اپیل کی نقول اور دیگر دستاویزات دفتر جمعیۃ علماء ارسال کیئے ہیں ۔

جمعیۃ علماء قانونی امداد کمیٹی کے سربراہ گلزار اعظمی نے تینوں مسلم نوجوانوں کی جانب سے ارسال کی گئی قانون امداد کی درخواست کی تصدیق کی ہے اور کہا کہ جمعیۃ علماء جبلپور ہائی کورٹ میں ملزمین کا دفاع کریگی اور اس تعلق سے سینئر وکلاء سے صلاح ومشورہ کیا جارہا ہے۔

گلزاراعظمی نے کہا کہ مقدمہ کا فیصلہ ۲۸؍ اگست ۲۰۱۴ء میں بھوپال ڈسٹرکٹ جج بی ایس بھدوریہ نے دیا تھا اور تمام ملزمین کو تعزیرا ت ہند کی دفعات 395,511,397 اور غیر قانونی سرگرمیوں کی روک تھام والے قانون کی دفعات 13,16نیز دھماکہ خیز مادہ کے قانون کی دفعات 28(1-B) (B) 27 سے ناکافی ثبوت وشواہدکی بنیاد پر باعزت بری کردیا تھا لیکن دو سال کا طویل عرصہ گذر جانے کے بعد ریاستی حکومت نے نچلی عدالت کے فیصلہ کو ہائی کورٹ میں چیلنج کردیا جس سے ملزمین اور ان کے اہل خانہ کی پریشانی میں اضافہ ہوگیا ہے۔

گلزار اعظمی نے کہا کہ ملزمین محمد ساجد عبدالستار، ابو فضل عمران خان اور محمد اقرار عبدالراؤف کے اہل خانہ کی جانب سے موصول قانونی امداد کی درخواست پر کارروائی شروع کردی گئی ہے اور مقامی وکیل محرم علی کو ہدایت دی ہیکہ وہ ریاستی حکومت کی اپیل کا جواب دینے کے لیئے سینئر وکلاء سے گفتگو کریں ۔

ایک نظر اس پر بھی

جموں و کشمیر میں مودی سرکارکی پالیسی ناکام ہوئی : محبوبہ مفتی

پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی (پی ڈی پی) صدر اور سابقہ وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے جنوبی کشمیر کے ضلع شوپیان میں جموں وکشمیر پولیس کے تین ایس پی اووز کو اغوا کے بعد گولی مار کر ہلاک کرنے کے واقعہ پر اپنا ردعمل میں کہا ہے کہ وادی کشمیر میں مرکزی حکومت کی طاقت پر مبنی پالیسی ناکام ثابت ہوئی ...

کشمیرکے بدترحالات کے لیے مودی سرکارذمہ دار:کانگریس

کانگریس نے کہاہے کہ پچھلے 24گھنٹے کے دوران جموں کشمیر میں تین پولیس جوانوں کے اغواکے بعد قتل اور دہشت گردوں کے خوف سے دس پولیس جوانوں کے مبینہ استعفیٰ کے واقعات تشویش ناک ہیں اور ریاست کے ان حالات کے لیے مودی حکومت ذمہ دارہے۔

یڈیورپا میرے صبر کا امتحان نہ لیں؛ حکومت کو گرانے کی بارہا کوشش بی جے پی کو زیب نہیں دیتی: کمار سوامی کا بیان

وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی نے ریاستی بی جے پی صدر یڈیورپا کو متنبہ کیا ہے کہ بارہا ریاستی حکومت کو گرانے کی کوشش کرکے وہ ان کے صبر کا امتحان نہ لیں۔اگر یہ کوشش جاری رہی تو یڈیورپا کو اس کی بھاری قیمت ادا کرنی پڑے گی۔

منگلورمیں سواریوں کی تلاشی کے دوران غیر قانونی ریت سپلائی کرنے والی ٹپر لاریاں ضبط

منگلورو جنوبی زون کے اے سی پی ، جنوبی زون راؤڑی نگراں دستہ کے ساتھ مشترکہ طورپر کنکناڑی شہری پولس تھانہ حدود کے پڈیل جنکشن اور پمپ ویل قومی شاہراہ پر سواریوں کی تلاشی کے دوران غیر قانونی طورپر ریت سپلائی کرنےو الی لاریوں کا پتہ چلنے پر سواریوں کو ضبط کرنے کا واقعہ پیش آیا ہے۔