یڈیورپا کے زخموں پر بی جے پی نے ہی چھڑکا نمک؛ ریڈی برادران کو ریاست میں انتخابی مہم نہ چلانے کا حکم

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 28th April 2018, 1:49 AM | ریاستی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بنگلورو27اپریل(ایس او نیوز) ریاست کے اقتدار پر قبضہ کرنے کے خواب دیکھتے ہوئے بلاری کے ریڈی برادران کی مدد حاصل کرنے والی بی جے پی کو آج اس وقت شدید جھٹکا لگا جب بی جے پی اعلیٰ کمان نے ریڈی برادران میں سب سے زیادہ بدنام سابق وزیر جناردھن ریڈی کو یہ سخت تاکید کی کہ وہ ریاست میں بی جے پی کے حق میں انتخابی مہم نہ چلائیں۔

یڈیورپانے کل ہی کہاتھاکہ انہوں نے جناردھن ریڈی کی تمام غلطیوں کو ریاستی عوام کی مفادات کی خاطر معاف کردیا ہے، ان کے اس بیان کے فوراً بعد آج بی جے پی نے دوبارہ جناردھن ریڈی سے اپنے تعلقات سے دامن جھاڑ لیا اور یہ واضح طور پر ہدایت دی کہ جناردھن ریڈی ریاست کے کسی بھی حصے میں بی جے پی کے حق میں انتخابی مہم چلانے کی حماقت نہ کریں۔

پارٹی اعلیٰ کمان نے ان سے کہا ہے کہ درپردہ اگر وہ چاہیں تو پارٹی کی مدد کرسکتے ہیں، لیکن ریاست کے کسی بھی حصے میں وہ کھلے عام انتخابی مہم میں حصہ نہ لیں۔ پارٹی اعلیٰ کمان کی ہدایت سے ایک طرف ریاستی بی جے پی صدر بی ایس یڈیورپا سخت ناراض ہیں تو دوسری طرف بلاری میں اب تک بی جے پی کے حق میں انتخابی جوڑ توڑ میں لگے ہوئے جناردھن ریڈی کو بھی شدید جھٹکا لگا ہے۔ کہا جارہا ہے کہ بی جے پی اعلیٰ کمان کی ہدایت کے بعد مولکالمرو اسمبلی حلقے سے پارٹی کے رکن پارلیمان بی سری راملو کی کامیابی یقینی بنانے کے لئے جناردھن ریڈی کی مہم شروع ہونے سے پہلے ہی ختم ہوگئی ، جبکہ بادامی اسمبلی حلقے میں وزیر اعلیٰ سدرامیا کے خلاف میدان میں اترنے بی سری راملو کو اپنے فیصلے پر پچتانا پڑے گا۔

ایک نظر اس پر بھی

سماج کی غلطیوں کو سدھارنے صحافی رول ادا کرسکتے ہیں تمام صحافیوں کو عنقریب انشورنس کی سہولیت مہیا کرائی جائیگی: جی ٹی دیوے گوڑا

بروز جمعہ میسور کے راماجوجا روڈ پر واقع راجیندرا کلامندر میں میسور ضلع صحافیوں کے زیر اہتمام منعقدہ یوم صحافت کے موقع پر میسور کے صحافیوں کو ایوارڈ سے نوازنے کے بعد خطاب کرتے ہوئے ریاستی وزیر برائے اعلیٰ تعلیم شری جی ٹی دیوے گوڈا نے کہا کہ سماج میں پائی جانے والی غلطیوں کو ...

ریاست کی مالی حالت بے حد خراب ہوئی ہے؛ ایڈی یورپا کا الزام کمار سوامی بھی سدارامیا کی راہ چل رہے ہیں؛ کچھ دن انتظار کرکے بی جے پی احتجاج کرے گی

ودھان سودھا میں اپوزیشن لیڈر بی ایس ایڈی یورپا نے کہا ہے کہ سابق وزیراعلیٰ سدارامیا کی قرضہ معافی سے ریاست کی معیشت پر بوجھ پڑاتھا، اسے وزیراعلیٰ کمار سوامی کی جانب سے بھی جاری رکھے جانے کے سبب ریاست کی مالی صورتحال خراب ہوگئی ہے۔

منگلور سے عازمین کا دوسرا قافلہ مدینہ منورہ روانہ ؛ حج بھون کی تعمیر کے لئے 10؍کروڑ مختص۔ ضمیر احمد نے زمین کا معائنہ کیا

منگلورو ایر پورٹ سے کل سنیچر شام عازمین حج کا پہلا قافلہ راست مدینہ منورہ روانہ ہوگیا تھا جو 144عازمین پر مشتمل تھا۔ اتنے ہی عازمین کا دوسرا قافلہ آج اتوار  صبح10:15بجے روانہ ہوا۔آخری قافلہ کل بروز پیر23؍جولائی کو سہ پہر تین بجے روانہ ہوگا۔

سائبر سیکورٹی کے نظام کو مستحکم کرنا ضروری 

دہشت گرداانہ حملوں اور سماج دشمن سرگرمیوں پر نظر رکھنے کے لئے جدید ترین ٹیکنالوجی کا استعمال کرتے ہوئے سائبر سیکورٹی قائم کی جارہی ہے جو کہ اس شعبے میں ہندوستان کی ایک اہم پیش رفت ہے۔

بی جے پی کی شکست کے لیے ہم کسی بھی پارٹی سے اتحاد کے لیے تیارہیں : مایاوتی 

بی جے پی کو شکست دینے کے لئے بی ایس پی کسی بھی پارٹی سے اتحاد کو تیار ہے۔ اس فیصلے کا اعلان خود مایاوتی نے کیا۔ دہلی میں ان کے گھر پر ملک بھر سے آئے بی ایس پی کے کو آرڈنیٹر کی میٹنگ ہوئی۔ مایاوتی نے بی ایس پی لیڈروں کو میڈیا سے دور رہنے کی صلاح دی ہے۔ انہوں نے خبردار کرتے ہوئے کہا ...

الور موب لنچنگ واقعہ: اویسی نے کیا ٹویٹ، مودی حکومت کے چار سال ۔ لنچ راج

آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین کے صدر اور رکن پارلیمنٹ اسدالدین اویسی نے راجستھان کے الور میں پیش آئے موب لنچنگ کے تازہ واقعہ پر اپنے سخت ردعمل کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے ایک ٹویٹ کے ذریعہ اس واقعہ کو لے کر مرکز کی مودی حکومت پر سخت حملہ بولا ہے۔  

مودی کی مقبولیت کا ردعمل موب لنچنگ ہے : میگھوال 

راجستھان کے الور ضلع میں ایک بار پھر زر خرید ہجو م کے ذریعہ گائے اسمگلنگ کے شبہ میں اکبر نامی ایک مسلم تاجر کو پیٹ پیٹ کر شہید کر دیا گیا۔اس واقعہ پر مرکزی وزیر ارجن رام میگھوال نے کہا ہے کہ وہ اس واقعہ کی مذمت کرتے ہیں لیکن یہ صرف تنہا واقعہ نہیں ہے ہمیں اس کی تاریخ میں جائیں گے. ...

مرکزی حکومت ماب لنچنگ کے واقعات پرفوری قدم اٹھائے، راجستھان کے تازہ واقعہ نے پھرسے ملک کوشرمسارکیا:مولانااسرارالحق قاسمی

ایک طرف ملک کی عدالت عظمیٰ کی جانب سے ماب لنچنگ کے سلسلے میں قانون سازی کی ہدایت جاری کی جاتی ہے جس کی مخالفت کرتے ہوئے حکومت کی جانب سے کہاجاتاہے کہ قانون بنانے کی ضرورت نہیں ہے اوراس معاملے کوجتنا زیادہ پھیلایاجارہاہے اتنی حقیقت نہیں ہے،مگر دوسری جانب ایسے انسانیت سوز اور ...