آتشزدگی متاثرین میں جمعیۃعلماء دھولیہ کی ریلیف 

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 6th September 2018, 7:51 PM | ملکی خبریں |

 

دھولیہ 6؍ ستمبر(ایس او نیوز؍پریس ریلیز) مسلم اکثریتی علاقہ دھولیہ سے 50کلو میٹر کی دوری پر پارولہ نامی گاؤں میں آتشزدگی کا حادثہ پیش آیا ،جس میں گھر کی ساری چیزیں جل کر خاکستر ہوگئیں۔حادثہ کی اطلاع ملتے ہی جمعیۃعلماء دھولیہ (ارشد مدنی) کا وفد حافظ حفظ الرحمٰن صدر جمعیۃعلماء ضلع دھولیہ کی قیادت میں متاثرہ مکان کاسروے کرنے کے لئے پہونچا۔

اطلاع کے مطابق 31اگست کو رات 01:00بجے شارٹ سرکٹ کا واقعہ پیش آیا ۔جس کی زد میں ایک ایسا مکان آیا جس میں چھ بھائیوں پر مشتمل ایک خاندان رہتا تھا ، آگ اتنی شدید تھی کہ اس کی زد میں آکرگھر میں مقیم دو بھائیوں کا سارا سامان خاکستر ہوگیا۔الحمد للہ کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ۔

اس موقع پر مولانا شکیل احمد قاسمی اور الحاج مشتاق صوفی نے متاثرین کو دلاسہ دیتے ہوئے عبوری راحت و ضروریات زندگی کے لئے پچیس ہزار روپیہ نقد عنایت فرمایا ،اور ان کی غمخواری کرتے ہوئے فرمایا کہ ہم آپ کے غم میں برابر کے شریک ہیں اور دعا گو ہیں اللہ رب العزت آپ کی اس مشکل کو آسان فرمائے اور نقصانا ت کا مداوا فرمائے،آمین ۔

وفد میں حافظ حفظ الرحمٰن (صدر جمعیۃعلماء ضلع دھولیہ )محمد اکبرسر،جناب محمد نعمان سر،محمد سلیم بھیا برتن والے،محمد سلیم شیخ وغیرہ شامل تھے۔   
 

ایک نظر اس پر بھی

کانگریس امیدوار ملند دیوڑا کے خلاف ایف آئی آر درج، مذہب کی بنیاد پر ووٹ مانگنے کا الزام،بی جے پی لیڈروں کے بیانات پرتماشائی

بی جے پی لیڈران مسلسل متنازعہ بیانات دے رہے ہیں لیکن الیکشن کمیشن سادھوی،امت شاہ جیسے لوگوں پرکارروائی تونہیں کررہاہے وہ تماشائی بناہواہے لیکن اپوزیشن کے لیڈران پرفوراََنوٹس لے لیاجارہاہے۔

کرکرے کے بعد بابری مسجد پر بیان: پرگیہ ٹھاکر کو الیکشن کمیشن کا ایک اور نوٹس جاری

دہشت گردانہ حملے میں شہید ہونے والے مہاراشٹر پولس کے سینئر افسر ہیمنت کرکرے کے بارے میں دیئے گئے بیان کے بعد بھوپال پارلیمانی سیٹ سے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی امیدوار پرگیہ سنگھ ٹھاکر اب ایودھیا کے بابری مسجد-رام مندر مسئلے پر دیئے گئے بیان کو لے کر زیر بحث آ گئی ہے۔

سابق وزیراعظم دیوے گوڈا کا بھٹکل دورہ؛ کہا، جمہوریت خطرے میں ہے، اُسے بچانے کے لئے ہر شہری کو آگے آنا ہوگا

اس بار کے انتخابات سب سے زیادہ اہم اس لئے  ہے کہ مودی کے زیر اقتدار ملک کی جمہوریت کو خطرہ لاحق ہوگیا ہے۔جب سے مودی ملک کے وزیراعظم  بنے ہیں ملک کے سرکاری جمہوری اداروں میں  دخل اندازی سے  عدالت تک محفوظ نہیں ہے، ریزروبینک آف انڈیا  ہو ، انفورسمنٹ ڈائرکٹوریٹ ہو، سی بی آئی ...