مشرق وسطی کے تمام مسائل کے پیچھے ایران کا ہاتھ ہے: جیمز میٹس

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 12th February 2018, 8:40 PM | خلیجی خبریں | عالمی خبریں |

دبئی12فروری (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا )امریکی وزیر دفاع جیمز میٹس کا کہنا ہے کہ ایران مشرق وسطی کو درپیش مسائل اور بحرانات کا سبب ہے۔اتوار کے روز اخباری بیان میں انہوں نے کہا کہ دلچسپ بات یہ ہے کہ ہم مشرق وسطی میں جہاں کہیں بھی مشکل دیکھتے ہیں اس کے پیچھے ایران نظر آتا ہے.. خواہ وہ یمن ہو، بیروت ہو یا پھر شام آپ ہمیشہ ایران کو ہی دیکھیں گے۔میٹس نے امریکی افواج کے شامی حکومت کی فورسز کے ساتھ عسکری مقابلے کو خارج از امکان قرارد یا۔ انہوں نے زور دیتے ہوئے کہا کہ شام میں امریکا کی موجودگی کا سبب ’’داعش‘‘ تنظیم کے خلاف لڑائی ہے۔ میٹس کا مزید کہنا تھا کہ خطرہ درپیش ہونے کی صورت میں خود کا دفاع کرنا ہمارا حق ہے۔ بہرکیف ہمارا آپشن یہ ہے کہ جنگ کو پھیلایا نہ جائے کیوں کہ یہ ہمارے مفاد میں نہیں ہو گا ۔داعش تنظیم کے خلاف برسر جنگ بین الاقوامی اتحاد میں شریک 14 ممالک کے وزراء دفاع کا اجلاس منگل کے روز روم میں ہو رہا ہے۔ اجلاس میں ان ممالک کے مشترکہ عمل بالخصوص شام میں داعش تنظیم کے گرفتار شدگان جنگجوؤں کے انجام کو زیر بحث لایا جائے گا۔اتوار کے روز روم جاتے ہوئے طیارے میں میٹس کا کہنا تھا کہ یقیناًیہ معرکہ ابھی اختتام کو نہیں پہنچا ہے ۔

ایک نظر اس پر بھی

یمن : حوثیوں کے لیے کام کرنے والے ایرانی جاسوس عرب اتحاد کے نشانے پر

یمن میں آئینی حکومت کو سپورٹ کرنے والے عرب اتحاد کے لڑاکا طیاروں نے تعز شہر کے مشرقی حصّے میں جاسوسی کے ایک مرکز کو نشانہ بنایا۔ اس مرکز میں ایرانی ماہرین بھی موجود ہوتے ہیں جو باغی حوثی ملیشیا کے لیے کام کرتے ہیں۔

شاہ سلمان اور صدر السیسی کے درمیان ٹیلیفونک رابطہ

سعودی عرب کے فرمانروا خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعود اور مصری صدر عبدالفتاح السیسی کے درمیان ٹیلیفون پر رابطہ ہوا ہے۔ اس موقع پر شاہ سلمان نے مصر کی سلامتی اور استحکام کی خواہش کا اظہار کیا ہے۔

ایران میں رواں سال تین کم سن بچوں کو پھانسی پر لٹکا دیا گیا:یو این

ایران میں کم عمر افراد کو سزائے موت دیے جانے اور ان سزاؤں پر عمل درآمد میں ماضی کی نسبت اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔ اقوام متحدہ کی طرف سے جاری کردہ ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ رواں سال 2018 کے پہلے ڈیرھ ماہ میں ایران میں تین کم عمر افراد کو پھانسی دے کر موت سے ہم کنار کردیا گیا۔