آئی اے ایس افسر سے بدکلامی اور دھمکی کا معاملہ؛ وزیراعلی سدارامیا کا رکن اسمبلی کو انتباہ

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 12th October 2017, 5:11 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو، 11اکتوبر (یو این آئی/ایس او نیوز ) کرناٹک کے وزیراعلی سدارامیا نے پارٹی کے رکن اسمبلی کی جانب سے آئی اے ایس افسر سے مبینہ بدکلامی اور انہیں دھمکی دینے پر شدید اعتراض کیا۔ اس تعلق سے جب میڈیا کے نمائندوں نے ان سے ردعمل جاننا چاہا تو انہوں نے کہا '' اس واقعہ کا علم ہونے کے بعد میں نے رکن اسمبلی شیوامورتی کو سنجیدگی کے ساتھ مشورہ دیا کہ وہ ایسی سرگرمیوں میں ملوث نہ ہوں ۔مجھے ہنوز اس تعلق سے تفصیلات نہیں ملی ہیں۔ رپورٹ ملنے کے بعد میں کارروائی کروں گا۔

'' بتایا جاتا ہے کہ رکن اسمبلی سکریٹری کامرس ' معدنیات و زوالوجیکل ڈپارٹمنٹ راجندر کمار کٹاریہ سے بار بار ملاقات کررہے تھے اور ان کے بیٹے کی کانکنی کے لائسنس کی درخواست کو منطوری دینے کا مطالبہ کرتے ہوئے ان سے مبینہ طور پر بدکلامی کی گئی۔تاہم رکن اسمبلی نے بدکلامی یا دھمکی دینے کے الزامات کی تردید کی۔ اسی دوران کٹاریہ نے آئی اے ایس آفیسرس ایسوسی ایشن کے صدر پی روی کمار ' چیف سکریٹری سبھاش چندرا کنتیا ' پرنسپال سکریٹری ایل کے عتیق سے اس تعلق سے شکایت کرتے ہوئے اس مسئلہ کو سدارامیا کے علم میں لایا۔کٹاریہ نے الزام لگاتے ہوئے کہا کہ گذشتہ روز پیش آئے اس واقعہ کے بعد میں نے سدارامیا سے ملاقات کی اور ان سے کہا کہ ان حالات میں فرائض انجام دینا میرے لئے مشکل ہوگا۔ میں نے پولیس سے شکایت کرنے کے امکان پر غور کیا تھا تاہم اس سے میں نے گریز کیا۔یہ کہتے ہوئے کہ کانکنی کے لئے لائسنس دینے سپریم کورٹ کی ہدایت کی خلاف ورزی کرتے ہوئے وہ کسی مخصوص شخص کی حمایت نہیں کرسکتے ' کٹاریہ نے کہا کہ جب عدالت عظمیٰ کرناٹک میں کانکنی کی تجارت پر قریبی نظر رکھے ہوئے ہے ' کسی کی بھی حمایت ممکن نہیں ہے ۔چیف سکریٹری کو لکھے گئے خط میں کٹاریہ نے کہا کہ رکن اسمبلی کے فرزند سورج نے سدیشور ا درگا گاوں کے سروے نمبر 78کی 6ایکر اراضی کو کانکنی کے لئے لیز پر دینے کی منظوری کی خواہش کی تھی۔ قواعد کے مطابق نائک کی جانب سے داخل کردہ درخواست نامناسب ہے ۔ کٹاریہ نے الزام لگایا کہ رکن ا سمبلی نے کانکنی و معدنیات کے ڈائرکٹر سے اس فائل کی منظوری حاصل کرنے کے لئے ان پر دباو ڈالنے کی کوشش کی ہے ۔ کٹاریہ نے کہا کہ رکن اسمبلی نے کہا کہ وہ حکومت ہیں اور ان کے احکام پر عمل کیا جانا چاہئے ۔ اگر ان کے احکام پر عمل نہیں کیا گیا تو مستقبل میں سنگین عواقب کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے ۔ کٹاریہ نے اپنے خط میں الزام لگایا کہ رکن اسمبلی نے عوام کے سامنے نہ صرف مجھ سے بدکلامی کی بلکہ کہا کہ میں نے محکمہ کی رقم کو لوٹ لیا ہے ۔نائک نے ان الزامات کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ وہ ایس سی /ایس ٹی ویلفیر لیجسلیچر کمیٹی کے صدر ہیں اور مراعات سے محروم طبقہ کی بہبود کے لئے ہی آئی اے ایس افسر سے ملاقات کی گئی ہے ۔
 

ایک نظر اس پر بھی

بعض ریاستی وزراء اور اراکین اسمبلی کی بی جے پی میں شمولیت :یڈیورپا

سابق وزیر اعلیٰ اور ریاستی بی جے پی صدر بی ا یس یڈیورپا نے کہاکہ 2؍ نومبر کو بی جے پی کے قومی صدر امیت شاکی قیادت میں پارٹی کی طرف سے شروع کی جانے والی پرورتن ریلی کے مرحلے میں ریاستی کانگریس حکومت کے بعض وزراء اور اراکین اسمبلی باضابطہ بی جے پی میں شامل ہوجائیں گے۔

ودھان سودھا کی ڈائمنڈ جوبلی کا رنگا رنگ پروگرام؛صدر ہند رامناتھ کووند لیجسلیچر اجلاس سے خطاب کریں گے

ریاست کے مرکز اقتدار ودھان سودھا کی ڈائمنڈ جوبلی تقریبات کیلئے تیاریاں مکمل کرلی گئی ہیں۔ 25اور26اکتوبر کو یہ تقریبات ودھان سودھا میں ہی منعقد ہونے جارہی ہیں۔ اس کیلئے ودھان سودھا کے رنگ وروغن کا کام مکمل کرلیاگیا ہے۔