سپریم کورٹ نے کہا،جسٹس لویا کی موت کامسئلہ سنگین ، مہاراشٹر حکومت سے مانگا جواب

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 12th January 2018, 11:06 PM | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے | ملکی خبریں |

نئی دہلی،12؍جنوری ( ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا )سپریم کورٹ نے سہراب الدین شیخ کی سماعت کررہے خصوصی سی بی آئی جج بی ایچ لویا کی پراسرار حالات میں موت کوسنگین مسئلہ ماناہے۔جمعرات کو سماعت کرتے ہوئے سپریم کورٹ نے مہاراشٹر حکومت سے اس معاملے میں آزاد انکوائری کی مانگ کررہی درخواستوں پرجواب مانگاہے۔سپریم کورٹ نے کہا کہ اس معاملے میں ایک طرفہ سماعت کے بجائے دو طرفہ سماعت کی ضرورت ہے۔جسٹس ارون مشرا اور جسٹس ایم ایم شانتانگوار کی بینچ نے 15جنوری تک جواب دینے کے لیے مہاراشٹرحکومت کے وکیل نشانت آر کٹنیشورکرسے جواب مانگاہے۔ سماعت کے آغاز میں’’بمبئی لایرس ایسوسی ایشن‘‘کی نمائندگی کررہے سینئر وکیل دشینت دوے نے کہا کہ ہائی کورٹ اس کی سماعت کر رہی ہے۔ایسی صورت میں سپریم کورٹ کودرخواستوں کو نہیں سننا چاہیے۔۔دوے نے کہاکہ بمبئی ہائی کورٹ نے معاملہ کے بارے میں معلومات حاصل کی ہے اور میرے خیال میں سپریم کورٹ کو یہ معاملہ نہیں سننا چاہئے،اگر عدالت سماعت کررہی ہے تو پھر ہائی کورٹ کے سامنے الجھن ہوسکتی ہے۔درخواست دہندگان اور مہاراشٹر کے صحافی بی بی لون کی جانب سے سینئر وکیل اندرا جے سنگھ نے کہا کہ انہیں بمبئی لایرس ایسوسی ایشن کے ذریعہ بھی ہدایت کی گئی ہے کہ یہ معاملہ سپریم کورٹ کی طرف سے نہیں سننا چاہئے۔بینچ نے کہا کہ وہ اعتراضات کے ساتھ ساتھ درخواستوں پر غور کرنے پر غور کریں گے۔درخواست دہندہ کانگریس لیڈر تحسین پونہ والا کے وکیل ویرندر کمار شرما نے کہا کہ یہ ایک ایسا معاملہ ہے جس میں یکم دسمبر 2014ایک جج کی پراسرار حالات میں موت ہوگئے جس کی تحقیقات کی جانی چاہئے۔بنچ کٹنیشورکر نے حکومت سے ہدایت لینے کے ساتھ ہی پوسٹ مارٹم رپورٹ اور لویا کی موت سے متعلق دستاویزات کو جمع کرنے کو کہا۔بنچ نے 15جنوری کو معاملے کی اگلی سماعت مقرر کی ہے۔آپ کو بتادیں کہ جسٹس لویاکی یکم دسمبر 2014کو ناگپور میں موت ہوگئی تھی۔اس کے بعدسے وہاں ان کی موت کے بارے میں سوالات اٹھ رہے ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

یڈیورپا میرے صبر کا امتحان نہ لیں؛ حکومت کو گرانے کی بارہا کوشش بی جے پی کو زیب نہیں دیتی: کمار سوامی کا بیان

وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی نے ریاستی بی جے پی صدر یڈیورپا کو متنبہ کیا ہے کہ بارہا ریاستی حکومت کو گرانے کی کوشش کرکے وہ ان کے صبر کا امتحان نہ لیں۔اگر یہ کوشش جاری رہی تو یڈیورپا کو اس کی بھاری قیمت ادا کرنی پڑے گی۔

منگلورمیں سواریوں کی تلاشی کے دوران غیر قانونی ریت سپلائی کرنے والی ٹپر لاریاں ضبط

منگلورو جنوبی زون کے اے سی پی ، جنوبی زون راؤڑی نگراں دستہ کے ساتھ مشترکہ طورپر کنکناڑی شہری پولس تھانہ حدود کے پڈیل جنکشن اور پمپ ویل قومی شاہراہ پر سواریوں کی تلاشی کے دوران غیر قانونی طورپر ریت سپلائی کرنےو الی لاریوں کا پتہ چلنے پر سواریوں کو ضبط کرنے کا واقعہ پیش آیا ہے۔

جموں و کشمیر میں مودی سرکارکی پالیسی ناکام ہوئی : محبوبہ مفتی

پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی (پی ڈی پی) صدر اور سابقہ وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے جنوبی کشمیر کے ضلع شوپیان میں جموں وکشمیر پولیس کے تین ایس پی اووز کو اغوا کے بعد گولی مار کر ہلاک کرنے کے واقعہ پر اپنا ردعمل میں کہا ہے کہ وادی کشمیر میں مرکزی حکومت کی طاقت پر مبنی پالیسی ناکام ثابت ہوئی ...

کشمیرکے بدترحالات کے لیے مودی سرکارذمہ دار:کانگریس

کانگریس نے کہاہے کہ پچھلے 24گھنٹے کے دوران جموں کشمیر میں تین پولیس جوانوں کے اغواکے بعد قتل اور دہشت گردوں کے خوف سے دس پولیس جوانوں کے مبینہ استعفیٰ کے واقعات تشویش ناک ہیں اور ریاست کے ان حالات کے لیے مودی حکومت ذمہ دارہے۔