دو روزہ بندش کے بعد اسرائیل کا مسجدِ اقصی دوبارہ کھولنے کا اعلان

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 17th July 2017, 12:20 PM | عالمی خبریں |

رملہ،16جولائی(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)اسرائیلی وزیر اعظم بنیامین نیتن یاہو کی جانب سے جاری بیان کے مطابق مسجد اقصی کو اتوار کے روز کھول دیا جائے گا۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ سکیورٹی مشاورت کے بعد فیصلہ کیا گیا ہے کہ مسجد اقصی کو اتوار کی دوپہر سے بتدریج نمازیوں، زائرین اور سیاحوں کے لئے کھول دیا جائے گا۔اس سے قبل فلسطین میں بیت المقدس کے مفتی اعظم شیخ محمد حسین کے مطابق اسرائیلی حکام نے ہفتے کو مسلسل دوسرے روز بھی مسجد اقصی کو مکمل طور پر بند رکھا۔ ایک غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے شیخ نے تمام مسلمانوں سے مطالبہ کیا کہ وہ مسجد اقصی کی حفاظت کے لئے حقیقی موقف اختیار کریں تا کہ قابض حکام کو اس مبارک مسجد کے خلاف اقدامات سے روکا جا سکے۔اسرائیلی پولیس کے مطابق جمعے کی صبح تین فلسطینیوں نے مسجد اقصی کے نزدیک پولیس پر فائرنگ کر کے دو اہل کاروں کو ہلاک کر دیا تھا جس کے بعد سکیورٹی فورسز نے مسجد اقصی کے صحن میں کارروائی کرتے ہوئے تینوں حملہ آوروں کو موت کی نیند سلا دیا۔ اسرائیلی حکام نے واقعے کے بعد سکیورٹی کے پیش نظر مسجد اقصی کی بند کر دی اور مسلمانوں کو مسجد میں نمازِ جمعہ ادا کرنے سے روک دینے کے لیے علاقے کی ناکہ بندی کر ڈالی۔ اس کے نتیجے میں فلسطینی مذہبی رہ نماؤں میں غم وغصے کی لہر دوڑ گئی۔مفتی اعظم کے مطابق مسجد اقصی کو نمازیوں کے لیے دوبارہ کھولنے کے حوالے سے ان کے پاس کوئی معلومات نہیں ہے۔ انہوں نے بتایا کہ حکام نے اعلان کیا تھا کہ وہ مسجد کو اتوار کے روز تک بند کر رہے ہیں جب کہ وہ مطالبہ کر رہے ہیں کہ مسجد کو فوری طور پر دوبارہ کھول دیا جائے۔مفتی اعظم شیخ محمد حسین کو جمعے کے روز گرفتار کر کے کئی گھنٹوں تک حراست میں رکھنے کے بعد رہا کر دیا گیا تھا۔ادھر اسرائیلی وزیر اعظم کے ترجمان اوویر جنڈلمین نے ایک ٹوئیٹ میں کہا ہے کہ "اتوار کے روز موقف کا جائزہ لینے کے حوالے سے منعقد اجلاس کے مطابق مسجد اقصی کے حرم کو نمازیوں اور زائرین کے لیے پھر سے کھول دیا جائے گا۔

ایک نظر اس پر بھی

مسلم خواتین کے لیے حلال جنسی گائیڈ پر تنازع

اس موضوع پر شائع ہونے والی ایک کتاب ای کامرس ویب سائٹ ایمیزون پر فروخت ہو رہی ہے اور اس کی اشاعت پر تنازع شروع ہو گیا ہے۔دی مسلمہ سیکس مینیوئل(اے حلال گائیڈ ٹو مائنڈ بلوئنگ سیکس)کے نام سے شائع ہونے والی کتاب کی مصنفہ نے اپنا نام