کیا حقیقتًا اسلام عورتوں کا دشمن ہے ؟؟؟مدہوبنی  سے محمد ولی اللہ ابن محمد زبیر قاسمی کی خصوصی رپورٹ

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 26th October 2016, 5:42 AM | اسپیشل رپورٹس |

عصر حاضر کے ہر کس و ناکس خواہ وہ پانچ دس سال کا معصوم بچہ کیوں نہ ہو یہ بات انکو بخوبی معلوم ہے کہ زمانہ جاہلیت میں عورتوں پر ظلم کے پہاڑ توڑے جاتے تھے اور عورت ذات کو ایک حقیر سی شئی تصور کی جاتی تھی تاریخ کے اوراق ،زمین کی پستی و آسمان کی بلندی پر  کی ہر شئی عینی شاہد ہیکہ قبل اسلام یہودیوں کے یہاں کافی عرصہ تک اس بارے میں اختلاف رہا ہے کہ عورت انسان ہے یا نہیں ؟ بہت سے یہودیوں کا یہی خیال تھا کہ وہ انسان نہیں ؛بلکہ مردوں کی خدمت کے لئے انسان نما حیوان ہے لہذا اسے ہنسنے ،بولنے کا کوئی حق نہیں، بعض یہودیوں کا یہ خیال تھا کہ عورت شیطان کی سواری اور بچھو ہے جو ہر انسان کو ہروقت ڈنک مارنے کی فکر میں رہتی ہے 

عیسائیوں کا ابتدائی نطریہ یہ تھا کہ عورت ہونا گناہ کی اماں اور بدی کی جڑ ہے ، 582 ھ میں کلیسا کی ایک مجلس میں یہ فتوی صادر کیا گیا کہ عورتیں روح نہیں رکھتیں۔ ہندؤوں کے یہاں سب مکرم اور قابل فخر عورت وہی سمجھی جاتی تھی جو شوہر کہ چتا پر جل کر مر جائے   لیکن اسلام نے آتے ہی ان ساری برائیوں کا خاتمہ کر دیا عورت کو عزت کے مقام پر فائز کیا اور بیٹی باپ کے لئے رحمت بھائی کے لئے نعمت  شوہر کے لئے سکون اولاد کیلئے جنت قرار دیا۔

ذات باری نے عورتوں کے حقوق کے متعلق باضابطہ طور پر "سورہ نساء" نازل فرما دیا اس میں عورتوں کے میراث کے متعلق کھل کر بتا دیا اسی طرح عورت کو ایک عزت کا مقام دیا لیکن فرعون وقت بدنام زمانہ ظالم ہند نریندر مودی نے اپنی سیاسی روٹی سیکنے کے لئے بھولی بھالی "مسلم عورتوں "کا سہارا لیکر "تین طلاق کا بہانہ بنا کراسلامی قوانین میں دخل اندازی کی کوشش کی ہے جو مسلمانوں کے دین  میں دست درازی ہے ۔

جس ظالم نے گجرات کی مسلم عورتوں کی عزت نیلام کروائی اور مسلم عورتوں کو زندہ جلا دیا  ننھے ننھے معصوم لڑکیوں کو مادر رحم سے نکال کر خون کی ہولیاں کھیلی آج وہ ظالم یہ کہہ رہا ہے کہ "مسلم بہنوں کے ساتھ ظلم نہیں ہونے دیا جائے گا " آج اس ظالم کو انصاف اور  حقوق نظر آ رہے ہیں تو "ذکیہ جعفری "جیسی کئی مظلومہ انصاف کا  انتظار کر رہی ہے اسے انصاف دے ،مظفر نگر کے مظلومین کو انصاف دے۔ لیکن ایسا نہیں ہوگا کیونکہ "ظالم ہند "خود جیل کی سلاخوں میں چلا جائے گا۔ اگر انصاف دینا ہے تو گجرات کی "جسودا بین "کو انصاف دو اسکی جوانی جو کسی کے انتظار میں گزری ہے وہ لوٹا دو اور اسکو سہاگن کا حق لوٹا دو ۔

لیکن غور کیا جائے تو اس میں کچھ خامیاں ہماری بھی ہے کہ ہم نے اپنی اولاد کو عصری تعلیم مغربی تہذیب میں دینا گوارہ کیا اور اسلامی تہذیب کو حقیر سمجھا بروز ہفتہ ۲۳ اکتوبر کو ایک عصری تعلیم یافتہ مجھ سے کہہ رہا ہیکہ میں مودی کی اس مہم میں ساتھ ہوں عورتوں کو حق ملنی چاہئے۔ جب اس ناچیز نے اسے سمجھایا تو وہ پھر دستخطی مہم میں ساتھ دیا۔ ایسے ہزاروں افراد ہوں گے لیکن انہیں سمجھائے گا کون ؟

برباد گلستاں کرنے کو ایک ہی الو کافی تھا 
ہر شاخ پہ الو بیٹھا ہے انجام گلستاں کیا ہوگا

از :محمد ولی اللہ ابن محمد زبیر قاسمی تیسی مدہوبنی 
شریک دورۂ حدیث دارالعلوم وقف دیوبند
انچارج مجوزہ روزنامہ فاران دہلی 

ایک نظر اس پر بھی

سعودی عربیہ سے واپس لوٹنے والوں کو راحت دلانے کا وعدہ ؛ کیا وزیر اعلیٰ کمارا سوامی کو کسانوں کا وعدہ یاد رہا، اقلیتوں کا وعدہ بھول گئے ؟

انتخابات کے بعد سیاسی پارٹیوں کو اقتدار ملنے کی صورت میں کیے گئے وعدوں کو پورا کرنا بہت اہم ہوتا ہے۔ جنتادل (ایس) کے سکریٹری کمارا سوامی نے بھی مخلوط حکومت میں وزیرا علیٰ کا منصب سنبھالتے ہی کسانوں کا قرضہ معاف کرنے کا انتخابی وعدہ پورا کردیااور عوام کی امیدوں پر پورا اترنے کا ...

سعودی کے نئے قانون سے ہندوستانی عوام سخت پریشان؛ 15 ماہ میں 7.2 لاکھ غیر ملکی ملازمین نے سعودی عربیہ کو کیا گُڈ بائی؛ بھٹکل کے سینکڑوں لوگ بھی ملک واپس جانے پر مجبور

سعودی عرب میں ویز ے کے متعلق نئے قانون کا نفاذ ہوتے ہی بھٹکل کے ہزاروں لو گ اپنی صنعت کاری، تجارت اور ملازمت کو الوداع کہتے ہوئے وطن واپس لوٹنے پر مجبورہوگئے  ہیں۔ اترکنڑا ضلع کے اس خوب صورت شہر بھٹکل کے  قریب 5000 لوگ سعودی عربیہ میں برسر روزگار تھے جن میں سے کئی لوگ واپس بھٹکل ...

گوری لنکیش کے قاتل گرفتار ہوسکتے ہیں تو بھٹکل میں ہوئے قتل کے مجرم کیوں گرفتار نہیں ہوتے؟!

صحافی اور دانشور گوری لنکیش کے قتل کے سلسلے میں ملزمین کی گرفتاریاں ہوتی جارہی ہیں اور اس کیس کی پیش رفت مرحلہ وار سامنے آتی جارہی ہے۔اسی طرح قلمکار اور دانشور کلبرگی کے قتل میں بھی دھیمی رفتار سے ہی سہی تفتیش آگے بڑھ رہی ہے۔

کشمیر 2002 کا گجرات بن سکتا ہے

آخر کشمیر میں گونر راج نافذ ہو ہی گیا۔ کشمیر کے لئے یہ کوئی نئی بات نہیں ہے۔ وہاں اب ساتویں بار گونر راج نافذ ہوا ہے ، ویسے بھی کشمیر کے حالات نا گفتہ بہہ ہیں۔ وادی کشمیر پر جب سے بی جے پی کا سایہ پڑا ہے تب ہی سے وہاں قتل و غارت کا سلسلہ جاری ہے ۔ پہلے تو مفتی سعید اور محبوبہ مفتی نے ...

عید الفطر کے پیش نظر بھٹکل رمضان بازار میں عوام کا ہجوم؛ پاس پڑوس کے علاقوں کے لوگوں کی بھی خاصی بڑی تعداد خریداری میں مصروف

عیدالفطر کے لئے بمشکل تین دن باقی رہ گئے ہیں اور بھٹکل رمضان بازار میں لوگوں  کی ریل پیل اتنی بڑھ گئی ہے کہ پیر رکھنے کے لئے جگہ نہیں ہے۔ عید کی تیاری میں مشغول مسلمان ایک طرف کپڑے، جوتے اور  دیگر اشیاء  کی خریداری میں مصروف ہیں تو وہیں رمضان بازار میں گھریلو ضروریات کی ہر چیز ...

اگر حزب اختلاف متحد رہا تو 2019میں مودی کاجانا طے ........از: عابد انور

اگر متحد ہیں تو کسی بھی ناقابل تسخیر کو مسخر کرسکتے ہیں،کامیابی حاصل کرسکتے ہیں،مضبوط آہنی دیوار کو منہدم کرسکتے ہیں، جھوٹ اور ملمع سازی کوبے نقاب کرسکتے ہیں اور یہ اترپردیش کے کیرانہ لوک سبھا کے ضمنی انتخاب میں ثابت ہوگیا ہے۔ متحد ہوکر میدان میں اترے تو بی جے پی کو شکست ...