عراق :موصل میں اولڈ سِٹی پر حملے کا آغاز

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 19th June 2017, 1:42 PM | عالمی خبریں |

بغداد،18؍جون(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) عراق میں عسکری ذرائع کے مطابق سرکاری افواج نے اتوار کی صبح موصل شہر کے مغربی حصے میں اولڈ سِٹی پر حملے کا اغاز کر دیا ہے جہاں داعش تنظیم کے باقی ماندہ ارکان روپوش ہیں۔نینوی میں فوجی آپریشنز کے کمانڈر عبدالامیر رشید یار اللہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ مغربی موصل میں اولڈ سٹی پر دھاوے کی کارروائی میں فوج ، وفاقی پولیس اور انسداد دہشت گردی کی فورس شریک ہے۔ایک عراقی فوجی افسر نے بتایا کہ مذکورہ علاقے پر حملے سے قبل ابتدائی فضائی یلغاروں کا سلسلہ ہفتے اور اتوار کی درمیانی شب سے ہی شروع ہو گیا تھا جس کے بعد سکیورٹی فورسز نے صبح سویرے اولڈ سٹی ٹاؤن کے مختلف حصوں پر دھاوا بول دیا۔واضح رہے کہ اولڈ سٹی کے عراقی سکیورٹی فورسز کے کنٹرول میں آںے کے بعد داعش تنظیم موصل شہر سے مکمل طور پر ہاتھ دھو بیٹھے گی جو شمالی عراق میں تنظیم کا آخری سب سے بڑا گڑھ ہے۔ اقوام متحدہ کے مطابق اولڈ سٹی میں اس وقت بھی تقریبا ایک لاکھ عراقی شہری موجود ہیں۔عراقی افواج نے رواں برس فروری میں مغربی موصل کا کنٹرول واپس لینے کے لیے فوجی آپریشن کا آغاز کیا تھا۔ اس سے قبل مشرقی موصل سے داعش تنظیم کو نکال دینے کے واسطے عسکری کارروائی اکتوبر 2016میں شروع ہوئی تھی۔

ایک نظر اس پر بھی

کابل:حسّاس سفارتی زون میں راکٹ حملہ

افغانستان میں پولیس نے بتایا ہے کہ پیر کی شام افغان دارالحکومت کابل میں ایک راکٹ سخت پہرے والے سفارتی زون میں آ کر گرا۔یہ واقعہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے افغانستان کے حوالے سے اپنی حکمت عملی کے بارے میں متوقع اعلان سے چند گھنٹے قبل پیش آیا۔

ISنے کیا شفیع ارمارکے شام میں مارے جانے کا اعلان؛ پہلے بھی عام ہوئی تھی مرنےکی خبر

کچھ عرصے پہلے میڈیا میں یہ خبر عام ہوئی تھی کہ بھٹکل سے تعلق رکھنے والے شفیع ارمار کو شام میں سرگرم دہشت گرد تنظیم اسلامک اسٹیٹ کا اہم ترین ایجنٹ ہونے کی وجہ سے امریکہ نے اسے دنیا کامطلوب ترین دہشت گرد global terrorist قرار دیا ہے۔