ایران یمن میں ایک اور حزب اللہ بنانا چاہتا ہے: واشنگٹن میں سعودی سفیر

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 21st March 2018, 11:19 AM | خلیجی خبریں | عالمی خبریں |

واشنگٹن 20مارچ (ایس او نیوز؍ آئی این ایس انڈیا)واشنگٹن میں سعودی سفیر شہزادہ خالد بن سلمان نے کہا ہے کہ ایران یمن میں ایک اور حزب اللہ بنانا چاہتا ہے۔پیر کے روز امریکی ٹی وی چینل "سی این این" کو دیے گئے اں ٹرویو کے دوران خالد بن سلمان نے کہا کہ ایران نہ صرف سعودی عرب بلکہ پورے خطّے کے امن کو غیر مستحکم کرنا چاہتا ہے۔ انہوں نے باور کرایا کہ تہران کا مسئلہ اس کا برتاؤ اور توسیع پسندی کی خواہش ہے۔یمن کے حوالے سے شہزادہ خالد کا کہنا تھا کہ یمن میں باغی حوثی ملیشیا کو ایران کی سپورٹ حاصل ہے جو دہشت گردی کا سب سے بڑا سرپرست ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ سعودی عرب یمن کو سپورٹ کرنے والا سب سے بڑا ملک ہے اور انسانی بنیادوں پر اس کی کارروائیوں میں یمن کے تمام تر علاقے شامل ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

’خفیہ ملاقات‘ کے لیے تاریخ میں پہلی مرتبہ اسرائیلی وزیر اعظم اور موساد کے سربراہ سعودی سرزمین پر

اسرائیلی ذرائع ابلاغ اور نیوز ایجنسیوں نے رپورٹ کیا ہے کہ اتوار کو سعودی عرب میں اسرائیلی وزیر اعظم بینجمن نیتن یاہو، سعودی ولی عہد محمد بن سلمان اور امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو کی ایک خفیہ ملاقات ہوئی۔

’خفیہ ملاقات‘ کے لیے تاریخ میں پہلی مرتبہ اسرائیلی وزیر اعظم اور موساد کے سربراہ سعودی سرزمین پر

اسرائیلی ذرائع ابلاغ اور نیوز ایجنسیوں نے رپورٹ کیا ہے کہ اتوار کو سعودی عرب میں اسرائیلی وزیر اعظم بینجمن نیتن یاہو، سعودی ولی عہد محمد بن سلمان اور امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو کی ایک خفیہ ملاقات ہوئی۔