حج کی کامیابی سے سعودی عرب سے مذاکرات کی راہ ہموار ہوگی:ایران

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 5th September 2017, 9:52 PM | خلیجی خبریں | عالمی خبریں |

تہران،5ستمبر(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) ایران نے اس مرتبہ حج کے تمام امور بطریق احسن انجام پانے پر سعودی عرب کا شکریہ ادا کیا ہے اور کہا ہے کہ اس سے دونوں علاقائی حریفوں کے درمیان مذاکرات کی راہ ہموار ہوگی۔ایران کے سرکاری ٹیلی ویژن کے مطابق حج تنظیم کے سربراہ علی غازی عسکر نے ایرانی عازمین کے لیے الگ سے نئی حکمت عملی اختیار کرنے پر سعودی عرب کا شکریہ ادا کیا ہے۔انھوں نے کہاکہ ممالک کے درمیان اختلافات پیدا ہوتے رہتے ہیں لیکن ان کے لیے اہم بات یہ ہے کہ وہ اپنے اختلافات کو ڈائیلاگ اور مذاکرات کے ذریعے طے کریں۔انھوں نے کہا : اب حج کے کامیاب انعقاد کے بعد دونوں فریقوں کے لیے یہ ایک اچھا وقت ہے کہ وہ دوسرے شعبوں میں اپنے دوطرفہ امور کو طے کرنے کے لیے مذاکرات کریں۔

ان کے اس مثبت بیان کے باوجود وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے محتاط ردعمل کا اظہار کیا ہے اور کہا ہے کہ وہ دونوں ممالک کے تعلقات میں ایک واضح تبدیلی کی تصویر کے منتظر ہیں۔اس مرتبہ قریب 86ہزار ایرانیوں نے فریضہ حج کی سعادت حاصل کی ہے اور ایرانی حجاج نے بھی سعودی عرب کی جانب سے کیے گئے انتظامات پراطمینان کا اظہار کیا ہے۔ 2015ء میں منیٰ میں بھگدڑ کے افسوس ناک حادثے کے بعد ایرانی عازمین نے پہلی مرتبہ حج کا فریضہ ادا کیا ہے۔ گذشتہ سال ایران نے اپنے شہریوں کو حج کی اجازت نہیں دی تھی۔

ایرانی صدر حسن روحانی نے قبل ازیں یہ کہا تھا کہ اس سال کسی قسم کے ناخوش گوار واقعے سے پاک حج سے تہران اور الریاض کے درمیان دوسرے شعبوں میں بھی اعتماد کی فضا پیدا کرنے میں مدد مل سکتی ہے۔اس مرتبہ ایران نے اپنے عازمین حج کو نیلے رنگ کے برقی شناختی نشان جاری کیے تھے تاکہ منتظمین ان کا سراغ لگا کر ان کی شناخت کرسکیں۔بعض ایرانی حجاج نے برطانوی خبررساں ایجنسی رائیٹرز کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سعودی حکام نے انھیں بہتر سہولتیں مہیا کی ہیں، انھیں ائیر کنڈیشن خیمے بھی مہیا کیے گئے تھے اور ان سے ہر لحاظ سے اچھا برتاؤ کیا گیا ہے۔ واضح رہے کہ ان میں سے بعض ایرانی ماضی میں بھی حج کی سعادت حاصل کرچکے تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

شارجہ میں ابناء علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کی خوبصورت تقریب؛ یونیورسٹی میں میڈیکل تعلیم صرف 60 ہزار میں ممکن!

علی گڈھ مسلم یونیورسٹی جسے بابائے قوم مرحوم سر سید احمد خان نے دو سو سال قبل قائم کیا تھا آج تناور درخت کی شکل میں ملک میں تعلیم کی روشنی عام کررہا ہے۔اس یونیورسٹی میں میڈیکل کے طلبا کے لئے پانچ سال کی تعلیمی فیس صرف 60,000 روپئے ہے، حالانکہ دوسری یونیورسیٹیوں میں میڈیکل کے طلبا ...

متحدہ عرب امارات میں حفظ قرآن جرم، حکومت کی منظوری کے بغیر کوئی شخص قرآن حفظ نہیں کرسکتا، مساجد میں مذہبی تعلیم اور اجتماع پر بھی پابندی

مشرقی وسطیٰ کے مختلف ممالک میں داخل اندازی اور عرب کی اسلامی تنظیموں کو دہشت گرد قرار دینے کے بعد متحدہ عرب امارات قانون کے ایسے مسودہ پر کام کررہا ہے جس کی رو سے حکومت کی منظوری کے بغیر قرآن شریف کا حفظ بھی غیرقانونی ہوگا۔

ایجنسیوں سے بہتر رپورٹیں تو میڈیا سے مل جائیں گی: سپریم کورٹ

سپریم کورٹ نے فیض آباد دھرنے سے متعلق خفیہ اداروں کی رپورٹوں پر عدم اطمینان کا اظہار کرتے نئی رپورٹیں جمع کرانے کی ہدایت کی ہے۔عدالتِ عظمیٰ کے جج قاضی فائز عیسٰی نے ریمارکس دیے ہیں کہ جب ریاست ختم ہو جائے گی تو قتل سڑکوں پر ہوں گے۔

نائیجیریا میں نمازیوں پر حملہ انتہائی قابلِ مذمت: ترجمان

امریکی محکمہ خارجہ نے منگل کو نائجیریا میں ریاستِ ادماوا میں موبی کے مقام پر ہونے والے دہشت گرد حملے کی مذمت کی ہے۔ترجمان ہیدر نوئرٹ نے کہا ہے کہ ’’اِس جانی نقصان پر ہم نائجیریا کے عوام اور متاثرہ خاندانوں سے دلی تعزیت کا اظہار کرتے ہیں‘‘۔

بنگلہ دیش میں جماعتِ اسلامی کے 6 رہنمائوں کو سزائے موت

 بنگلہ دیش میں ایک عدالت نے بدھ کو جماعتِ اسلامی کے 6 ارکان کو 1971 کی پاکستان کے خلاف جنگِ آزادی کے دوران جنگی جرائم کے مبینہ الزامات پر موت کی سزا سنادی۔ان افراد کو انٹرنیشنل کرائم ٹریبونل کے ایک تین رکنی پینل نے سزاسنائی ۔