ایران۔ عراق سرحد پر تباہ کن زلزلہ، 400 ہلاک، 7000 زخمی، کئی عمارتیں منہدم

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 14th November 2017, 11:31 AM | خلیجی خبریں | عالمی خبریں |

تہران،13/ نومبر(ایس او نیوز) ایران۔ عراق سرحد پر 7.3 شدت کے تباہ کن زلزلہ کے سبب دونوں ملکوں میں کم سے کم 400 افراد ہلاک اور تقریباً 7000 زخمی ہوگئے، جس کے ساتھ ہی ہزاروں افراد کو جو رات آئے زلزلہ کے وقت گہری نیند میں تھے ۔ اچانک بیدار ہوکر خوف و ہراسانی کے ساتھ اپنے گھریوں سے نکل آئے ۔ زلزلے کے جھٹکہ خلیج عرب کے ایک بڑے حصے سے لیکر بحیرہ روم کے ساحل تک محسوس کئے گئے ۔ ایران کا مغڑبی صوبہ کرمان شاہ اس زلزلہ سے بری طرح متاثر ہوا جہاں سرکاری خبر رساں ادارہ نے ہلاک ہونے والوں کی تعداد 400 بتائی ہے ۔ سرکاری ٹیلی ویژن نے کہا کہ 7000 افراد زحمی ہوئے ہیں۔ پہاڑیوں میں گھرے ہوئے اس دیہی علاقے کے افراد اپنی زندگی کی گزر بسر کے لئے بالعموم زراعت پر انحصار کرتے ہیں۔ عراقی وزارت داخلہ کے مطابق اس زلزلہ کے سبب عراق میں کم سے کم 13 ا فراد ہلاک اور دیگر 535 زخمی ہوگئے ۔ تمام ہلاکتیں نیم خود مختار شمالی کرد علاقے میں ہوئے ہیں۔ امریکی جیولوجیکل سروے کی تازہ ترین پیمائش کے مطابق 7.3 شدت کے اس زلزلہ کا مبدا عراق کے مشرقی شہر حلبیہ سے 31 کیلو میٹر دور اور 23.2 کیلو میٹر گہرائی میں تھا ۔ یہ ایک ایسی معمولی گہرائی ہے جس کے سبب بھاری نقصانات ہوا کرتے ہیں۔ ایسے زلزلے جن کی شدت 7 ہوتی ہے بڑے پیمانے پر ہلاکتوں اور مالی نقصانات کا سبب ہوتے ہیں۔ اس طاقتور ز لزلے کے بعد 100 سے زائد مابعد کے جھٹکے ہوئے ۔ ایرانی سوشیل میڈیا اور خبر رساں اداروں کی طرف جاری تصاویر اور ویڈیو فٹیج میں رات کے او قات خوف زدہ افراد کو جان بچانے کیلئے گھروں سے باہر نکل کر سڑکوں پر پناہ لیتے ہوئے دکھایا گیا ہے۔ ایرانی کرمان شاہ صوبہ کا سوپور زہب ٹاؤن تباہ کن زلزلہ سے بری طرح متاثر ہوا ہے جو ایران اور عراق کو منقسم کرنے والی پہاڑیوں کے درمیان ہے ۔ اس علاقہ کی ایک گرہست خاتون کوکب فریاد اور 51 سالہ شخص رضا محمدی نے کہا کہ پہلے جھٹکے کے ساتھ ہی وہ لوگ اپنے گھروں سے باہر آگئے تھے جس کے بعد سارا کامپلکس تاش کی گڈی کی طرح بیٹھ گیا اور ان کے فلیٹس بھی ملبہ میں تبدیل ہوگئے ۔ چنانچہ اکثر مکین اپنے تمام تر ساز و سامان سے محروم ہوگئے ہیں۔ زلزلے کے بعد سارے علاقہ میں برقی و آبرسانی اور ٹیلی فون کنکشن ناکارہ ہوگئے ہیں ۔ ایران کے رہبر اعلیٰ آیت اللہ علی خامنہ ای نے آج جو تعزیت کا اظہار کیا انہوں نے تمام امدادی ٹیموں اور سرکاری اداروں کو متاثرین ممکنہ کی ممکنہ مدد کرنے کی ہدایت کی ۔ عراق میں وزیراعظم نے بھی اپنے تمام سرکاری اداروں کو آفات سماوی کے متاثرین کی ممکنہ مدد پہونچانے کیلئے متحرک کردیا ہے ۔ زلزلہ کی شدت کے سبب عراق میں اربیل سے بغداد تک ہزاروں گھر دہل گئے جس سے خوفزدہ افراد اپنی جان بچانے سڑکوں پر نکل آگئے ۔ ترکی کے وزیراعظم نے کہا کہ عراق میں زلزلے کے متاثرین کی مدد کے لئے اپنی امدادی ٹیموںکو روانہ کردیا ہے ۔ زلزلہ سے متاثرہ کرد علاقے کے عراق اور ترکی سے تعلقات حالیہ عرصہ کے دوران منعقدہ ریفرنڈم کے سبب کشیدہ ہوگئے ہیں۔ ایران کا ایک بڑا حصہ زلزلوں سے بدترین متاثرہ علاقوں کے حدود میں شامل ہے جہاں معمولی شدت کے جھٹکے اگرچہ روزمرہ کا معمول ہے لیکن وقفہ وقفہ سے زائد شدت کے زلزلے بھی ہوتے رہے ہیں۔ بالخصوص 2003 ء کے دوران نارینی شملہ بام میں ز لزلہ کے سبب 26000 افراد ہلاک ہوگئے تھے ۔ 2012 ء میں ایرانی صوبہ مشرقی آذر بائجان میں ایک بڑا زلزلہ ہوا تھا جس میں 300 افراد ہلاک ہوئے تھے ۔

ایک نظر اس پر بھی

متحدہ عرب امارات میں حفظ قرآن جرم، حکومت کی منظوری کے بغیر کوئی شخص قرآن حفظ نہیں کرسکتا، مساجد میں مذہبی تعلیم اور اجتماع پر بھی پابندی

مشرقی وسطیٰ کے مختلف ممالک میں داخل اندازی اور عرب کی اسلامی تنظیموں کو دہشت گرد قرار دینے کے بعد متحدہ عرب امارات قانون کے ایسے مسودہ پر کام کررہا ہے جس کی رو سے حکومت کی منظوری کے بغیر قرآن شریف کا حفظ بھی غیرقانونی ہوگا۔

سعودیہ میں مقیم غیر قانونی تارکین وطن میں سب سے زیادہ تعداد پاکستانیوں کی نکلی

سعودی عرب کی وزارت داخلہ کے ترجمان میجر جنرل منصور الترکی نے واضح کیا ہے کہ اقامہ و محنت قوانین اور سرحدی سلامتی کے ضوابط کی خلاف ورزی کرنے والے 140 مما لک کے 758570 غیر ملکیوں نے شاہی مہلت سے فائدہ اٹھایا۔

چین علاقائی بے یقینی کے تناظر میں سعودی عرب کے ساتھ ہے:صدر ڑی جن پنگ

چین، سعودی عرب میں بڑے پیمانے پر ترقی کے عمل اور قومی سالمیت کی کوششوں کی مکمل حمایت کرتا ہے۔ علاقائی سطح پر سعودی عرب، ایران، لبنان اور یمن میں کشیدگی کے تناظر میں یہ یقین دہانی چینی صدر ڑی جن پنگ نے سعودی فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز کو گذشتہ روز ٹیلی فون پر کرائی۔

امریکا: کانگریس نے عراقی ملیشیا ’النجباء‘ کو دہشت گرد قرار دیا

امریکی کانگریس نے عراق کی شیعہ ملیشیا الحشد الشعبی میں شامل ایک عسکری گروپ ’حرکۃالنجباء‘ کو دہشت گرد قرار دیتے ہوئے صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اس گروپ سے وابستہ شخصیات پر 90 دن کے اندر اندر پابندیاں عاید کرنے کے احکامات جاری کریں۔