کانپور میں آئی پی ایس افسرکی مشتبہ حالت میں طبیعت ناشاز،زہریلی اشیااء کھانے کاخدشہ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 5th September 2018, 9:29 PM | ملکی خبریں |

کانپور،05؍ ستمبر (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) اتر پردیش کے کانپور شہر ضلع میں حال ہی میں پولس سپرنٹنڈنٹ (مشرقی) کے عہدے پر آئے آئی پی ایس افسر سریندرداس کی بدھ کے روز مشتبہ حالت میں طبیعت بگڑ گئی۔اطلاع ملنے پر انہیں ریجنسی اسپتال میں داخل کیا گیا ہے، جہاں ان کی حالت نازک بنی ہوئی ہے۔اے ڈی جی سمیت کی اعلیٰ افسر اسپتال پہنچ گئے ہیں لیکن کچھ بھی بولنے سے انکار کر رہے ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ ایس پی( مشرقی) نے زہریلا مادہ کھایا ہے۔بنیادی طورپر بلیا کے رہنے والے سریندر داس 2014 بیچ کے آئی پی ایس افسر ہیں اور ایس پی کے عہدے پر ان کی پہلی بار کانپور شہر میں تقرری ہوئی ہے۔ضلع میں آئے ابھی ان کو محض ایک ماہ ہوا ہے۔ وہ بدھ کے روز اپنے گھر میں تھے اور اسی دوران مشتبہ حالت میں ان کی طبیعت خراب ہونے لگی۔ اس پر وہاں موجود اسٹاف نے آناً فاناً میں انہیں ریجنسی اسپتال میں داخل کرایا اوراس سلسلہ میں اعلیٰ افسروں کو مطلع کیا گیا۔اطلاع ملنے پر سینئر ایڈیشنل پولس ڈائریکٹر جنرل اویناش چندر، سینئر پولس سپرنٹنڈنٹ اننت دیو کے ساتھ دیگر پولس سپرنٹنڈنٹ سمیت ضلع انتظامیہ کے اعلیٰ عہدیدار ریجنسی اسپتال پہنچ گئے، لیکن کوئی بھی کچھ بول نہیں رہا ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ آئی پی ایس افسر نے زہریلا مادہ کھایا ہے اوران کی حالت نازک ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

کانگریس امیدوار ملند دیوڑا کے خلاف ایف آئی آر درج، مذہب کی بنیاد پر ووٹ مانگنے کا الزام،بی جے پی لیڈروں کے بیانات پرتماشائی

بی جے پی لیڈران مسلسل متنازعہ بیانات دے رہے ہیں لیکن الیکشن کمیشن سادھوی،امت شاہ جیسے لوگوں پرکارروائی تونہیں کررہاہے وہ تماشائی بناہواہے لیکن اپوزیشن کے لیڈران پرفوراََنوٹس لے لیاجارہاہے۔

کرکرے کے بعد بابری مسجد پر بیان: پرگیہ ٹھاکر کو الیکشن کمیشن کا ایک اور نوٹس جاری

دہشت گردانہ حملے میں شہید ہونے والے مہاراشٹر پولس کے سینئر افسر ہیمنت کرکرے کے بارے میں دیئے گئے بیان کے بعد بھوپال پارلیمانی سیٹ سے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی امیدوار پرگیہ سنگھ ٹھاکر اب ایودھیا کے بابری مسجد-رام مندر مسئلے پر دیئے گئے بیان کو لے کر زیر بحث آ گئی ہے۔

سابق وزیراعظم دیوے گوڈا کا بھٹکل دورہ؛ کہا، جمہوریت خطرے میں ہے، اُسے بچانے کے لئے ہر شہری کو آگے آنا ہوگا

اس بار کے انتخابات سب سے زیادہ اہم اس لئے  ہے کہ مودی کے زیر اقتدار ملک کی جمہوریت کو خطرہ لاحق ہوگیا ہے۔جب سے مودی ملک کے وزیراعظم  بنے ہیں ملک کے سرکاری جمہوری اداروں میں  دخل اندازی سے  عدالت تک محفوظ نہیں ہے، ریزروبینک آف انڈیا  ہو ، انفورسمنٹ ڈائرکٹوریٹ ہو، سی بی آئی ...