بھارتی جنر ل بپن راوت کا اشتعال ساتوں آسمان پر،پاکستان دہشت بھیجتا رہے گا، آپ مار یں گے وہ اور بھیجے گا : راوت 

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 12th January 2018, 10:33 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،12؍جنوری ( ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا ) انڈین آرمی چیف جنرل بپن راوت نے آج کہا کہ تمام کوششوں کے باوجود جموں اور کشمیر میں دہشت گردوں کی تعداد اور دہشت گردی کے واقعات میں کمی نہیں آرہی ہے ۔ راوت نے کہا کہ برہان وانی کے جاں بحق ہونے کے بعدجو حالات بگڑے تھے وہ ساؤتھ کشمیر میں بگڑے تھے جب اس طرح کے حالات آبادعلاقہ میں ہوں تو اس وقت مشکل پیش آتی ہے ۔ راوت نے یہ بھی کہا کہ ہمارا ہیومن رائٹ ریکارڈ بہت اچھا ہے، اگر دہشت گرد کسی گھر میں چھپا ہوتا ہے تو وہ گھبرایا ہوا ہوتا ہے جس کی وجہ سے وہ فائرنگ کی غلطی کر بیٹھتا ہے جس سے ہمیں انہیں گرفتار کرنے میں مدد ملتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے 39 دہشت گرد زندہ بھی پکڑے ہیں۔ ہم ان کو پورا موقع دیتے ہیں، ان کے آقاؤں سے رابطہ کرتے ہیں؛ لیکن میں یہ کہہ سکتا ہوں کہ کشمیر میں دہشت گردی ختم نہیں ہوئی ہے ۔ اس بار ہماری کامل توجہ کا محور شمالی کشمیر ہوگا ۔ ہم بارہمولہ، کپواڑہ، بانڈی پورہ ، ، پٹن وغیرہ شمالی کشمیر کے علاقہ جات میں سخت تلاشی مہم پر خصوصی توجہ دیں گے ۔انہوں نے کہا کہ پاکستان مسلسل بھارت میں دہشت گرد بھیجتا رہے گا، آپ جتنے ماریں گے وہ اور بھیجے گا ۔ اس لئے ہم نے طے کیا ہے کہ پاکستانی فوج کی ان پوسٹوں کو نشانہ بنایا جائے جہاں سے دہشت گردوں کو مدد مل رہی ہے۔ ہمارا واضح مقصد پاکستانی پوسٹس کو برباد کر نا ہے تاکہ ان کے ذریعہ ہمیں جو تکلیف ملی ہے اس کا کچھ نہ کچھ حصہ پاکستان بھی چکھ لے ۔ جب ان سے پوچھا گیا کہ کیا ڈو کلام میں جنگ بھی ہو سکتی تھی؟ تو انہوں نے کہا کہ آپ اس صورت حال کے لئے ہمیشہ تیار رہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جی ہاں ! ایسا ہو سکتا تھا۔ اگر یہ تنازع مزید بڑھتا تو جنگ کا امکان تھا ،ہم اس کے لیے تیار بھی تھے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم چینی افواج کو ان کی حدود کے اندر محدود رکھنا چاہتے تھے ؛ کیونکہ وہ علاقہ جغرافیائی طور سے ہمارے حق میں تھا ۔ 

ایک نظر اس پر بھی

اب مدرسہ تعلیم میں تبدیلی کی تیاری میں مرکزی حکومت ، بورڈ سے منظوری لینا ہوگا لازمی

فروغ انسانی وسائل کی وزارت مدرسہ تعلیم میں تبدیلی کے منصوبہ پر غور و خوض کررہی ہے۔ اس کے پیچھے وزارت کا مقصد مدارس میں پڑھنے والے طلبہ کو اچھی معیار ی تعلیم فراہم کرنا ہے۔ اس منصوبہ کے تحت تعلیمی اداروں کا مدرسہ بورڈ یا پھر اسٹیٹ بورڈ سے الحاق ضروری ہوگا۔

داعش مقدمہ ،اریب مجید کی ضمانت عرضداشت سپریم کورٹ میں داخل، ملزم کے والد کی درخواست پر جمعیۃ علماء نے سپریم کورٹ سے رجوع کیا: گلزار اعظمی

ممنو ع تنظیم داعش کے رکن ہونے اور دہشت گردانہ سرگرمیوں میں ملوث ہونے کے الزامات کے تحت کلیان کے ساکن اریب مجید کی ضمانت عرضداشت ملزم کے والد ڈاکڑاعجاز مجید کی درخواست پر جمعیۃ علماء نے سپریم کورٹ میں داخل کی ہے جس کا ڈائری نمبر 22076/2018 ہے، یہ اطلاع آج یہاں ملزم کو قانونی امداد ...

کولگام میں فوجی ٹکڑی پر حملہ، جوابی کارروائی میں لشکر طییہ کے دو جنگجو جاں بحق 

گورنر راج نافذ ہونے کے بعد بھی جموں و کشمیر میں جنگجوئیت میں کمی نہیں آئی ہے۔ اتوار کو کولگام میں گشت پر نکلی فوج کی ایک ٹکڑی پر گھات لگا کر بیٹھے دہشت گردوں نے حملہ کر دیا۔ حملے کے بعد دہشت گرد وہاں سے فرار ہوگئے۔

امت شاہ کے الزامات پر محبوبہ مفتی کاترکی بہ ترکی جواب، ہر فیصلہ میں بھاجپا کی حمایت شامل تھی : محبوبہ مفتی 

جموں کشمیر کی سابق وزیر اعلی محبوبہ مفتی نے اتوار کو اپنے اوپر لگے جموں اور لداخ کے علاقے کے ساتھ امتیازی سلوک کے الزامات کو مسترد کر تے ہوئے حیرت کا اظہار کیا کہ اگر یہ سچ ہے تو اب تک کسی بھی بی جے پی کے وزیر نے اس کے بارے میں کیوں نہیں کہا۔