ترجمہ کی اہمیت وافادیت میں روز افزوں اضافہ اردو یونیورسٹی میں بین الاقوامی کانفرنس کا آغاز،

Source: S.O. News Service | By Staff Correspondent | Published on 10th October 2018, 12:04 AM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

حیدرآباد ،09 اکتوبر (آئی این ایس انڈیا؍ایس او نیوز) ترجمہ کی اہمیت و افادیت بڑھتی جارہی ہے۔ فلموں اور معلوماتی و تفریحی پروگراموں کو مقامی زبانوں میں ڈب کرتے ہوئے ٹیلی کاسٹ کرنے کا سلسلہ جاری ہے۔ اس سے ترجمہ کی اندرون و بیرون ملک اہمیت و افادیت کا اندازہ لگایا جاسکتا ہے۔ ان خیالات کا اظہار ڈاکٹر تارکیشور وی بی، شعبۂ مطالعاتِ ترجمہ، ایفلو نے آج مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی میں سہ روزہ بین الاقوامی کانفرنس ’’ٹرانسلیشن اکراس بارڈرس: جنرس  اینڈ جیئو گرافیز(Translation Across Borders: Genres and Geographies)‘‘ کی افتتاحی تقریب میں کیا۔

سیسیورے کلیکٹیو سوسائٹی کی اس دوسری بین الاقوامی کانفرنس کے انعقاد میں شعبۂ انگریزی، اردو یونیورسٹی اور سنٹر فار اڈوانسڈ ریسرچ اینڈ ٹریننگ ۔ ٹرانسلیشن اینڈ ملٹی لنگولزم، عثمانیہ یونیورسٹی تعاون کر رہے ہیں۔ پروفیسر شکیل احمد، پرو وائس چانسلر، مانو نے صدارت کی۔ ڈاکٹر تارکیشور نے کہا کہ عثمانیہ یونیورسٹی کے قیام کے ساتھ ہی دارالترجمہ کا قیام عمل میں آیا اور بڑے پیمانے پر اعلیٰ تعلیم کے کتب کا ترجمہ کیا گیا اور آج اردو یونیورسٹی بھی انہی راہوں پر رواں دواں ہے۔ کئی ناشرین بھی آج مختلف کتابوں کے ترجمے شائع کر رہے ہیں۔ اس کانفرنس کا مقصد مختلف شعبوں کے مترجمین کو ایک پلیٹ پر جمع کرنا اور ان کے تجربات سے آگاہی حاصل کرنا ہے۔ اس کانفرنس میں ترجمہ کی اہمیت و افادیت بڑھتی جارہی ہے۔ فلموں اور معلوماتی و تفریحی پروگراموں کو مقامی زبانوں میں ڈب کرتے ہوئے ٹیلی کاسٹ کرنے کا سلسلہ جاری ہے۔ اس سے ترجمہ کی اندرون و بیرون ملک اہمیت و افادیت کا اندازہ لگایا جاسکتا ہے۔ ان خیالات کا اظہار ڈاکٹر تارکیشور وی بی، شعبۂ مطالعاتِ ترجمہ، ایفلو نے آج مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی میں سہ روزہ بین الاقوامی کانفرنس ’’ٹرانسلیشن اکراس بارڈرس: ژنراس اینڈ جیاگرافیز(Translation Across Borders: Genres and Geographies)‘‘ کی افتتاحی تقریب میں کیا۔ سیسیورے کلیکٹیو سوسائٹی کی اس دوسری بین الاقوامی کانفرنس کے انعقاد میں شعبۂ انگریزی، اردو یونیورسٹی اور سنٹر فار اڈوانسڈ ریسرچ اینڈ ٹریننگ ۔ ٹرانسلیشن اینڈ ملٹی لنگولزم، عثمانیہ یونیورسٹی تعاون کر رہے ہیں۔ پروفیسر شکیل احمد، پرو وائس چانسلر، مانو نے صدارت کی۔ ڈاکٹر تارکیشور نے کہا کہ عثمانیہ یونیورسٹی کے قیام کے ساتھ ہی دارالترجمہ کا قیام عمل میں آیا اور بڑے پیمانے پر اعلیٰ تعلیم کے کتب کا ترجمہ کیا گیا اور آج اردو یونیورسٹی بھی انہی راہوں پر رواں دواں ہے۔ کئی ناشرین بھی آج مختلف کتابوں کے ترجمے شائع کر رہے ہیں۔ اس کانفرنس کا مقصد مختلف شعبوں کے مترجمین کو ایک پلیٹ پر جمع کرنا اور ان کے تجربات سے آگاہی حاصل کرنا ہے۔ اس کانفرنس میں مقامی، قومی اور بین الاقوامی مندوبین کی تعداد زائد از 100 ہے۔ پروفیسر ٹی وجئے کمار، عثمانیہ یونیورسٹی نے اپنی تقریر میں کہا کہ ہمہ لسانیت عثمانیہ یونیورسٹی کے خمیر کا حصہ ہے۔ اس کا اندازہ یونیورسٹی کے لوگو سے کیا جاسکتا ہے۔ اس میں اردو، ہندی، انگریزی اورتیلگوزبانوں کے الفاظ موجود ہیں۔ انہوں نے سال 2013 میں اردو یونیورسٹی میں منعقدہ حیدرآباد لٹریری فیسٹول کے انعقاد کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ اس خوبصورت کیمپس میں دوبارہ آکر پر وہ خوشی محسوس کر رہے ہیں۔ جب بھی ہم اعلیٰ تعلیم میں باہمی تعاون کی بات کرتے ہیں تو بین الاقوامی یونیورسٹی سے یادداشت مفاہمت کی بات کرتے ہیں۔ لیکن اسی ملک، ریاست بلکہ شہر پر توجہ نہیں دیتے، جبکہ صرف حیدرآباد میں 13 یونیورسٹیاں ہیں۔ آج ہم ترجمہ پر اتنی اہم کانفرنس کر رہے ہیں تو حیدرآباد کی دو مشہور جامعات، عثمانیہ اور مانو اس میں حصہ لے رہی ہیں۔ اس بین جامعاتی تعاون کوبرقرار رکھنے کی ضرورت ہے۔پروفیسر شکیل احمد، پرو وائس چانسلر نے صدارتی خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اس طرح کے پروگرامس ہوتے رہنے چاہئیں۔ ابتدا میں پروفیسر سید محمد حسیب الدین قادری ، صدر شعبۂ انگریزی نے خیر مقدم کیا۔پروفیسرشگفتہ شاہین، شعبۂ انگریزی نے شکریہ ادا کیا۔ پروفیسر جئیتا سین گپتا ، سکریٹری، سیسیورے کلیکٹیو سوسائٹی نے کارروائی چلائی۔ 

ایک نظر اس پر بھی

مودی ،خواتین کے حامی یا اکبرکے طرفدار؟ جنسی استحصال کے الزام کے خلاف مقدمہ درج کرانے پر کانگریس نے وزیراعظم کو گھیرا

کانگریس نے وزیر مملکت برائے امور خارجہ ایم جے اکبر پر لگنے والے جنسی استحصال کے الزامات کو انتہائی سنگین قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ یہ ملک کی خواتین کے احترام کا معاملہ ہے اور وزیر اعظم نریندر مودی کو اس پر خاموشی توڑکر اپنا رخ واضح کرناچاہیے۔

دہلی این سی آر میں فضائی آلودگی سے نمٹنے کے لئے ہنگامی منصوبہ لاگو

دہلی این سی آر میں فضائی آلودگی سے نمٹنے کے لئے ایک ہنگامی منصوبہ پیر کو لاگو کیا گیا ہے جس میں مشینوں سے سڑکوں کی صفائی اور اس علاقے کے بھیڑ بھاڑ والے علاقوں میں گاڑیوں کے ہموار ٹریفک کے لئے ٹریفک پولیس کی تعیناتی جیسے اقدامات شامل ہوں گے۔

ریاستی وزارت سے مہیش کا استعفیٰ منظور

پانچ ریاستوں کے اسمبلی انتخابات میں کانگریس اور بی ایس پی کے درمیان مفاہمت کی کوشش ناکام ہوجانے کے نتیجے میں ریاستی کابینہ سے استعفیٰ دینے والے بی ایس پی کے وزیر این مہیش کو استعفیٰ واپس لینے کے لئے منانے میں جے ڈی ایس قیادت کی کوشش ناکام ہوجانے کے بعد آج وزیراعلیٰ نے مہیش کا ...

ای اسٹامپ پیپر اب آن لائن دستیاب ہوگا

کسی طرح کے دستاویزات تیار کرنے کے لئے درکار ای اسٹامپ کاغذ کی دستیابی اب تک ایک بہت بڑا مسئلہ ہوا کرتی تھی، 100 روپے کے اسٹامپ پیپر کے لئے بھی بھاری رقم ادا کرکے اسے حاصل کرنا پڑتا تھا،

ساحلی علاقے میں موسلادھار بارش۔ آسمانی بجلیوں سے نقصانات

ساحلی علاقے میں اور خاص کر جنوبی کینرا ضلع میں اتوار کی شام سے رات دیر گئے تک زبردست بارش ہوئی ہے۔ بادلوں کی گھن گرج کے ساتھ بجلیوں کے کڑکنے کا سلسلہ بھی جاری رہا اور بعض مقامات پر بجلی گرنے سے گھروں کونقصان پہنچنے کی اطلاعات بھی ملی ہیں۔

بھٹکل میں زائد منافع کالالچ دے کر 100کروڑ سے زائد رقم کی دھوکہ دہی کا الزام : کمپنی مالکان کے گھروں کا گھیراؤ اور احتجاج

شہر کے آزاد نگر میں واقع فلالیس نامی کمپنی کے مالکان  پر سو کروڑ سے زائد رقم لے کر فرار ہونے کا الزام عائد کرتے ہوئے  سینکڑوں لوگوں نے آج اُن  کے مکانوں  کا گھیراو کیا اور اپنی رقم واپس دینے کا مطالبہ کرتے ہوئے احتجاج کیا۔  احتجاجیوں کا کہنا تھا کہ   فلالیس نامی جعلی کمپنی ...