ترجمہ کی اہمیت وافادیت میں روز افزوں اضافہ اردو یونیورسٹی میں بین الاقوامی کانفرنس کا آغاز،

Source: S.O. News Service | By Staff Correspondent | Published on 10th October 2018, 12:04 AM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

حیدرآباد ،09 اکتوبر (آئی این ایس انڈیا؍ایس او نیوز) ترجمہ کی اہمیت و افادیت بڑھتی جارہی ہے۔ فلموں اور معلوماتی و تفریحی پروگراموں کو مقامی زبانوں میں ڈب کرتے ہوئے ٹیلی کاسٹ کرنے کا سلسلہ جاری ہے۔ اس سے ترجمہ کی اندرون و بیرون ملک اہمیت و افادیت کا اندازہ لگایا جاسکتا ہے۔ ان خیالات کا اظہار ڈاکٹر تارکیشور وی بی، شعبۂ مطالعاتِ ترجمہ، ایفلو نے آج مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی میں سہ روزہ بین الاقوامی کانفرنس ’’ٹرانسلیشن اکراس بارڈرس: جنرس  اینڈ جیئو گرافیز(Translation Across Borders: Genres and Geographies)‘‘ کی افتتاحی تقریب میں کیا۔

سیسیورے کلیکٹیو سوسائٹی کی اس دوسری بین الاقوامی کانفرنس کے انعقاد میں شعبۂ انگریزی، اردو یونیورسٹی اور سنٹر فار اڈوانسڈ ریسرچ اینڈ ٹریننگ ۔ ٹرانسلیشن اینڈ ملٹی لنگولزم، عثمانیہ یونیورسٹی تعاون کر رہے ہیں۔ پروفیسر شکیل احمد، پرو وائس چانسلر، مانو نے صدارت کی۔ ڈاکٹر تارکیشور نے کہا کہ عثمانیہ یونیورسٹی کے قیام کے ساتھ ہی دارالترجمہ کا قیام عمل میں آیا اور بڑے پیمانے پر اعلیٰ تعلیم کے کتب کا ترجمہ کیا گیا اور آج اردو یونیورسٹی بھی انہی راہوں پر رواں دواں ہے۔ کئی ناشرین بھی آج مختلف کتابوں کے ترجمے شائع کر رہے ہیں۔ اس کانفرنس کا مقصد مختلف شعبوں کے مترجمین کو ایک پلیٹ پر جمع کرنا اور ان کے تجربات سے آگاہی حاصل کرنا ہے۔ اس کانفرنس میں ترجمہ کی اہمیت و افادیت بڑھتی جارہی ہے۔ فلموں اور معلوماتی و تفریحی پروگراموں کو مقامی زبانوں میں ڈب کرتے ہوئے ٹیلی کاسٹ کرنے کا سلسلہ جاری ہے۔ اس سے ترجمہ کی اندرون و بیرون ملک اہمیت و افادیت کا اندازہ لگایا جاسکتا ہے۔ ان خیالات کا اظہار ڈاکٹر تارکیشور وی بی، شعبۂ مطالعاتِ ترجمہ، ایفلو نے آج مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی میں سہ روزہ بین الاقوامی کانفرنس ’’ٹرانسلیشن اکراس بارڈرس: ژنراس اینڈ جیاگرافیز(Translation Across Borders: Genres and Geographies)‘‘ کی افتتاحی تقریب میں کیا۔ سیسیورے کلیکٹیو سوسائٹی کی اس دوسری بین الاقوامی کانفرنس کے انعقاد میں شعبۂ انگریزی، اردو یونیورسٹی اور سنٹر فار اڈوانسڈ ریسرچ اینڈ ٹریننگ ۔ ٹرانسلیشن اینڈ ملٹی لنگولزم، عثمانیہ یونیورسٹی تعاون کر رہے ہیں۔ پروفیسر شکیل احمد، پرو وائس چانسلر، مانو نے صدارت کی۔ ڈاکٹر تارکیشور نے کہا کہ عثمانیہ یونیورسٹی کے قیام کے ساتھ ہی دارالترجمہ کا قیام عمل میں آیا اور بڑے پیمانے پر اعلیٰ تعلیم کے کتب کا ترجمہ کیا گیا اور آج اردو یونیورسٹی بھی انہی راہوں پر رواں دواں ہے۔ کئی ناشرین بھی آج مختلف کتابوں کے ترجمے شائع کر رہے ہیں۔ اس کانفرنس کا مقصد مختلف شعبوں کے مترجمین کو ایک پلیٹ پر جمع کرنا اور ان کے تجربات سے آگاہی حاصل کرنا ہے۔ اس کانفرنس میں مقامی، قومی اور بین الاقوامی مندوبین کی تعداد زائد از 100 ہے۔ پروفیسر ٹی وجئے کمار، عثمانیہ یونیورسٹی نے اپنی تقریر میں کہا کہ ہمہ لسانیت عثمانیہ یونیورسٹی کے خمیر کا حصہ ہے۔ اس کا اندازہ یونیورسٹی کے لوگو سے کیا جاسکتا ہے۔ اس میں اردو، ہندی، انگریزی اورتیلگوزبانوں کے الفاظ موجود ہیں۔ انہوں نے سال 2013 میں اردو یونیورسٹی میں منعقدہ حیدرآباد لٹریری فیسٹول کے انعقاد کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ اس خوبصورت کیمپس میں دوبارہ آکر پر وہ خوشی محسوس کر رہے ہیں۔ جب بھی ہم اعلیٰ تعلیم میں باہمی تعاون کی بات کرتے ہیں تو بین الاقوامی یونیورسٹی سے یادداشت مفاہمت کی بات کرتے ہیں۔ لیکن اسی ملک، ریاست بلکہ شہر پر توجہ نہیں دیتے، جبکہ صرف حیدرآباد میں 13 یونیورسٹیاں ہیں۔ آج ہم ترجمہ پر اتنی اہم کانفرنس کر رہے ہیں تو حیدرآباد کی دو مشہور جامعات، عثمانیہ اور مانو اس میں حصہ لے رہی ہیں۔ اس بین جامعاتی تعاون کوبرقرار رکھنے کی ضرورت ہے۔پروفیسر شکیل احمد، پرو وائس چانسلر نے صدارتی خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اس طرح کے پروگرامس ہوتے رہنے چاہئیں۔ ابتدا میں پروفیسر سید محمد حسیب الدین قادری ، صدر شعبۂ انگریزی نے خیر مقدم کیا۔پروفیسرشگفتہ شاہین، شعبۂ انگریزی نے شکریہ ادا کیا۔ پروفیسر جئیتا سین گپتا ، سکریٹری، سیسیورے کلیکٹیو سوسائٹی نے کارروائی چلائی۔ 

ایک نظر اس پر بھی

راجستھان میں اس بار 158 کروڑ پتی ممبر اسمبلی

راجستھان کی 15 ویں اسمبلی کے لئے نو منتخب 199 اراکین اسمبلی میں سے 158 کروڑ پتی ہیں۔ سال 2013 کے گزشتہ اسمبلی انتخابات میں یہ تعداد 145 تھی۔ ایسوسی ایشن آف ڈیموکریٹک ریفارمس (اے ڈی آر) کی رپورٹ کے مطابق کانگریس کے 99 میں سے 82 ممبران اسمبلی، بی جے پی کے 73 میں سے 58 ممبران اسمبلی، بی ایس پی ...

رافیل ڈیل پر فیصلے میں مبنی بر حقائق ’ اصلاح ‘کی مانگ کو لے عدلیہ پہنچی مرکزی حکومت

رافیل ڈیل پر سپریم کورٹ کے فیصلہ اور اس پر مچے سیاسی گھمسان کے درمیان مرکزی حکومت ایک بار پھر عدالت عظمی پہنچی ہے۔حکومت نے عرضی داخل کرکے رافیل ڈیل پر دیئے گئے فیصلے میں مبنی بر حقائق اصلاح کا مطالبہ کیا ہے۔ مرکز نے سپریم کورٹ سے فیصلے کے اس پیراگراف میں ترمیم کا مطالبہ کیا ہے، ...

پلوامہ تصادم: آخر ایک فوجی نے جنگجوئیت کیوں اختیار کی ؟ ظہور ٹھوکرفوجی کیمپ سے فرار ہو کرجنگجوئیت اختیار کی تھی

جنوبی کشمیر کے پلوامہ ضلع میں ہفتہ کو ایک تصادم میں سکیورٹی فورسز نے تین دہشت گردوں کو مار گرایا۔ اس تصادم میں مارے گئے دہشت گردوں میں ظہور احمد ٹھوکر بھی ہے، جو گزشتہ سال جولائی میں فوج کے کیمپ سے فرار ہو کر دہشت گرد تنظیم میں شامل ہو گیا تھا۔بتایا جا رہا ہے کہ مقامی باشندے ...

چھتیس گڑھ میں کون بنے گا وزیر اعلی؟ راہل گاندھی نے کیا اشارہ

پی اور راجستھان میں سی ایم کا اعلان کرنے کے بعد چھتیس گڑھ کے وزیر اعلی کے عہدے پر کانگریس میں پیچ پھنسا ہوا ہے۔ کانگریس صدر راہل گاندھی نے پی اور راجستھان کی طرح آج بھی ٹویٹر پر چھتیس گڑھ کے تمام سی ایم دعویداروں کے ساتھ تصویر تو پوسٹ کر دی ہے لیکن وزیر اعلی کون ہوگا اس پر پارٹی ...

بھٹکل کے ہیبلے میں ناراض عوام نے لیا رکن اسمبلی کو آڑے ہاتھ؛ احتجاج کے باوجود رکھا گیا دو اسکولوں اور دو کالجوں کا سنگ بنیاد

بھٹکل رکن اسمبلی سُنیل نائک کو آج اتوار کو ہیبلے کے لوگوں نے اُس وقت آڑے ہاتھ لیتے ہوئے احتجاج کیا جب وہ وہاں سرکاری ہاڈی زمین پر دو اسکولوں اور دو کالجوں کا سنگ بنیاد رکھنے کے لئے پہنچے تھے۔ 

بنگلورومیٹرو برڈج میں خرابی کا نائب وزیراعلیٰ پرمیشور نے معائنہ کیا

شہر کے ایم جی روڈ پر ٹرینٹی سرکل کے قریب ایم جی روڈ بیپنا ہلی میٹرو روٹ کے پلر نمبر 155کے قریب ایک بیم میں دراڑ کا آج نائب وزیراعلیٰ ڈاکٹر جی پرمیشور نے معائنہ کیا اور کہاکہ اس سلسلے میں مرمت کا کام جاری ہے۔

ریاست کرناٹک کابینہ کی توسیع میں تاخیر کا امکان

نائب وزیر اعلیٰ ٖ ڈاکٹر جی پرمیشور نے آج کہا کہ کانگریس صدر راہل گاندھی کی مصروفیات اور پارٹی اعلیٰ کمان کی طرف سے ہری جھنڈی نہ ملنے کے سبب 22 دسمبر کو ریاست میں کابینہ کی مجوزہ توسیع ملتوی ہو سکتی ہے ۔

رافیل ڈیل پر فیصلے میں مبنی بر حقائق ’ اصلاح ‘کی مانگ کو لے عدلیہ پہنچی مرکزی حکومت

رافیل ڈیل پر سپریم کورٹ کے فیصلہ اور اس پر مچے سیاسی گھمسان کے درمیان مرکزی حکومت ایک بار پھر عدالت عظمی پہنچی ہے۔حکومت نے عرضی داخل کرکے رافیل ڈیل پر دیئے گئے فیصلے میں مبنی بر حقائق اصلاح کا مطالبہ کیا ہے۔ مرکز نے سپریم کورٹ سے فیصلے کے اس پیراگراف میں ترمیم کا مطالبہ کیا ہے، ...

دبئی: پکڑا گیا چھوٹا شکیل کا بھائی،ہندوستان حراست کی کوشش میں 

انڈر ورلڈ ڈان چھوٹا شکیل کے بھائی انور کو ابو ظہبی کے ایئر پورٹ پر کسٹم پولیس نے جمعہ کو گرفتار کر لیا ہے۔ انور کے پاس پاکستان کا پاسپورٹ ہے۔گرفتاری کے بعد بھارتی سفارت خانہ چھوٹا شکیل کے بھائی انور کو اپنے گرفت میں لینے کی کوششوں میں مصروف ہے جبکہ پاکستانی سفارت خانہ بھی اسے ...