حزب اختلاف اگر متحد ہوجائیں تو مودی لہر کو ناکام کیا جاسکتا ہے : ارون شوری کا اظہار خیال

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 29th May 2018, 4:49 AM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بنگلور 28 مئی (ایس او نیوز/ آئی این ایس انڈیا)  سابق کابینہ وزیر ارون شوری کا خیال ہے کہ اگر اپوزیشن اپنے چھوٹے چھوٹے اختلافات کو دور کرکے ایک ساتھ آ جائے اور انتخابی حلقوں میں کام کرے تو 2019 میں نریندر مودی حکومت کو روکا جا سکتا ہے ۔

اپنی نئی کتاب میں ارون نے ہندوستانی عدلیہ پر شدید حملہ کیا ہے اور اس سے نمٹنے کے لئے اقدامات بھی بتائے ہیں۔ میڈیا سے بات چیت میں انہوں نے کرناٹک انتخابات، اپوزیشن کی اتحاد اور 2019 انتخابات کو لے کر اپنی رائے ظاہر کی ہے ۔کرناٹک انتخابات میں کانگریس۔جے ڈ ی ایس کے اتحاد کی جیت اور اس کامیاب ہونے کے سوال پر انہوں نے کہا کہ کوئی اتحاد اچھا یا برا نہیں ہوتا ہے۔ یہ اتحاد کے رہنماؤں پر منحصر ہے۔ اسی طرح کی صورتحال کرناٹک میں بھی ہے۔ وہ کہتے ہیں کہ اسے پڑھ کر افسوس ہوتا ہے کہ وہاں (کرناٹک) اب بھی وزیر کے عہدے اور نائب وزیر اعلی کو لے کر کئی لیڈرمیں عدم اتفاق ہے، جبکہ ملک خطرے میں ہے۔ واقعی اس کی صورتحال بہت ہی خراب ہے ۔ وہ یہ نہیں دیکھ رہے کہ اگربہتر کارکردگی کا مظاہرہ نہیں کریں گے تو ان کے اتحاد کو مسترد کردیا جائے گا ۔

ارون شوری آگے کہتے ہیں کہ آج مودی حکومت اسی موڑ پر ہے جہاں یو پی اے تھی لیکن بی جے پی ملک کو تقسیم کر رہی ہے اور یہ ملک کی سیکورٹی کے نظام کو خطرے میں ڈالے جانے کے مترادف ہے ۔ان تمام ہولناک صورتحال کے برعکس عوام تک یہ پیغام بھیجا جا رہا ہے کہ انہیں مودی کو واپس لانے کی ضرورت ہے۔ یہ ملک اور اپنے ذاتی مفادات کے لیے عوام کے ساتھ ایک بڑا دھوکہ ہے ۔ ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ یہ ہولناکی شدت اتنی تیز ہو گئی ہے کہ اب ا س کو ٹالا یا اس سے صرف نظر نہیں کیا جاسکتا ہے ۔اپوزیشن کو مخاطب کرتے ہوئے ا رون کہتے ہیں کہ آپ کو ساتھ آکر عہد کرنا ہوگا کہ ہر حلقہ میں بی جے پی کے خلاف صرف ایک ہی امیدوار اتارا جائے۔ بہت امیدوار اتارنے کا خمیازہ گجرات اور یوپی میں بھگتنا پڑا تھا ۔ 

ایک نظر اس پر بھی

ڈوکلام جیسا واقعہ دوبارہ برداشت نہیں : چین 

ڈوکلام تنازعہ کے بعد اب چین نے بھارت کے ساتھ تعلقات کو معمول کی سمت لانے کے تئیں پہل کی ہے۔ ایک پروگرام میں بھارت میں چین کے سفیر نے کہا ہے کہ ہم ایک اور ڈوکلام جیسا واقعہ کو نہیں جھیل سکتے ہیں۔

کشمیر: سرچ آپریشنوں کا سلسلہ بحال

وادی کشمیر میں ’رمضان سیز فائر‘ کی مدت ختم ہونے کے ساتھ ہی سیکورٹی فورسز نے کارڈن اینڈ سرچ آپریشنز اور ناکے بٹھاکرگاڑیوں اور مسافروں کی تلاشی لینے کا سلسلہ بحال کردیا ہے۔

کرنل راجیہ وردھن راٹھور نے لمبارام کے لیے 5 لاکھ روپے کی خصوصی مالی امدا کومنظوری دی

نوجوانوں کے امور کھیلوں کے وزیر مملکت (آزادانہ چارج) کرنل راجیہ وردھن راٹھورنے سابق بین الاقوامی تیراندازاورارجن ایوارڈ یافتہ جناب لمبارام کے لیے 5 لاکھ روپے کی خصوصی مالی امداد کو منظوری دی ہے۔

بھٹکل: مرڈیشور سمندر میں ڈوبنے والے ایک سیاح کو لائف گارڈ نے دی نئی زندگی

تعلقہ کے سیاحتی مقام مرڈیشور میں آج بنگلور کے ایک سیاح کو لائف گارڈ نے   ڈوبنے سے بچالیا اور ایک نئی زندگی عطا کی جس کی شناخت  یوراج (36) کی حیثیت سے کی گئی ہے۔ وہ بنگلور کے سری رام پورا کا رہنے والا ہے۔

دبئی ۔مینگلور ایئر انڈیا فلائٹ کوچی ایئر پورٹ کی طرف موڑ دیا گیا۔ عید کے لئے مینگلور پہنچنے والے مسافروں نے کیا رن وے پر احتجاج

دبئی سے آنے والی ایئر انڈیاایکسپریس فلائٹ AIE 814کومنگلورو ایئر پورٹ کے بجائے کوچی ایئر پورٹ پر لینڈ کرانے سے ناراض مسافروں نے کوچی ایئر پورٹ کے رن وے پر احتجاجی مظاہرہ کیا اور ایئر انڈیا کے کوتاہی اور غفلت پر سخت برہمی کا اظہار کیا۔

بنگلوروانٹرنیشنل ایرپورٹ میں 1.5 کے جی سونا ضبط

کسٹمز افسران کی آنکھوں میں دھول جھونک کر غیر قانونی طور پر دوبئی سے حیدرآباد لے جارہے تقریباً 1.5کے جی سو نے کے زیورات ضبط کرکے دو افراد کو گرفتار کرلیا ہے ۔ ملزمین پر الزام ہے کہ وہ ہوائی جہاز کے سیٹ کے نیچے سونا چھپائے ہوئے تھے ۔