ششی تھرور نے کہا: 2019 میں بی جے پی لوٹی تو"ہندو پاکستان" بن جائے گا ہندوستان

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 12th July 2018, 12:30 PM | ملکی خبریں |

ترووننت پورم،12؍جولائی (ایس او نیوز؍ایجنسی) بی جے پی کے 'ہندوتو نظریہ' پر حملہ کرتے ہوئے ششی تھرور نے کہا ہے کہ اگر بی جے پی سال 2019 کا لوک سبھا چناؤ جیت جاتی ہے تو اس سے ہندوستان ' ہندو پاکستان ' بن جائے گا۔ بدھ کو ترووننت پورم میں ایک پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے تھرور نےکہا کہ بی جے پی ایک نیا آئین لکھے گی جو ایک ایسے ملک کیلئے راستہ تیار کرے گا جو پاکستان کی طرح ہوگا اور جہاں اقلیتوں کے حقوق کا احترام نہیں کیا جائے گا۔

نیوز ایجنسی اے این آئی کے مطابق ششی تھرور نے کہا ، " اگر وہ بی جے پی لوک سبھا میں پھر سے جیت کر آتی ہے تو جیسا ہم اپنے جمہوری آئین کو سمجھتے ہیں وہ ویسا نہیں رہ جائے گا کیونکہ ہندستان کے آئین کو الگ کرنے اور ایک نیا لکھنے کیلئے ان کے پاس سبھی ضروری عنصر ہوں گے"۔

ششی تھرور نے کہا ، ' وہ ہندو راشٹر کے اصولوں کو قائم کریں گے جو اقلیتوں کیلئے مساوات کو دور کرے گا، جو ایک ہندو پاکستان بنائے گا اور مہاتما گاندھی ،نہرو، سردار پٹیل ، مولانا آزاد اور عظیم جانبازوں نے آزادی کی لڑائی اس کے لئے نہیں لڑی"۔

تھرور کے اس بیان پر بی جے پی ترجمان سنبت پاترا نے ٹویٹ کر کے تبصرہ کیا ۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ کانگریس صدر راہل گاندھی کو اس بیان کیلئے معافی مانگنی چاہئے ۔سنبت پاترا نے ٹویٹ میں لکھا کہ  " ششی تھرور کا کہنا ہے کہ اگر بی جے پی سال 2019 میں لوٹی تو  ہندوستان"ہندو پاکستان " ہو جائے گا۔نیوز ایجنسی اے این آئی کے مطابق سنبت پاترا نے کہا ششی تھرور نے جو کہا اس پر راہل گاندھی کو معافی مانگنی چاہئے۔کانگریس پاکستان کے بننے کی ذمہ دار تھی۔

ایک نظر اس پر بھی

پارلیمانی انتخابات سے قبل مسلم سیاسی جماعتوں کا وجود؛ کیا ان جماعتوں سے مسلمانوں کا بھلا ہوگا ؟

لوک سبھا انتخابات یا اسمبلی انتخابات قریب آتے ہی مسلم سیاسی پارٹیاں منظرعام  پرآجاتی ہیں، لیکن انتخابات کےعین وقت پروہ منظرعام سےغائب ہوجاتی ہیں یا پھران کا اپنا سیاسی مطلب حل ہوجاتا ہے۔ اورجو پارٹیاں الیکشن میں حصہ لیتی ہیں ایک دو پارٹیوں کو چھوڑکرکوئی بھی اپنے وجود کو ...

بھیم آرمی کے سربراہ کی مولانا ارشد مدنی سے خصوصی ملاقات؛ ریاستی سیاست میں ہلچل

جیل سے رہائی کے بعد بھیم آرمی سربراہ چندر شیکھر آزاد نے دیوبند پہنچ جمعیۃ علماء ہند کے صدر مولانا سید ارشد مدنی سے ان کی رہائش گاہ پر ملاقات کی ۔اس ملاقات کے بعد میڈیا سے صرف یہ کہا کہ دبے کچلے طبقات کو ایک ساتھ لانا اور انہیں متحد کرنا ان کا مقصد ہے اور اسی کے تحت وہ یہاں آئے ...