مجھے واضح، دوٹوک اور درست سیاست پسند ہے، صدر رجب طیب ایردوان

Source: S.O. News Service | By Staff Correspondent | Published on 9th October 2018, 5:29 PM | عالمی خبریں |

انقرہ 9اکتوبر (آئی این ایس انڈیا ) صدر رجب طیب ایردوان کا کہنا ہے کہ سلسلہ رکنیت یورپی یونین میں ہنگری ہمیشہ ترکی کا ساتھ دیتا چلا آیا ہے۔ صدرِ ترکی نے ہنگری کے سرکاری دورے کے دوران وزیر اعظم وکٹر اوربان اور قومی اسمبلی میں مذاکرات کے ایک مشترکہ پریس کانفرس کا اہتمام کیا۔اس دوران ایک اخباری نمائندے نے دریافت کیا کہ ترکی کے سلسلۂ رکنیت یورپی یونین کے تحت مزید تیزگامی کے لیے آپ کی یورپی یونین کے رکن ممالک سے توقعات کیا ہیں؟ کیا آپ سمجھتے ہیں آئندہ کے سلسلے میں یہ معاملہ زیادہ وسیع پیمانے پر ایجنڈے میں لایا جائیگا؟ ان سوالات کے جواب میں صدر ایردوان نے اولین طور پر اس معاملے کا جائزہ پیش کرنے پر وزیر اعظم وکٹر اوربان کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ہنگری نے اس معاملے میں ہمیشہ ترکی کا ساتھ دیا ہے اور ہمارے مؤقف کی تائید کی ہے۔اس سلسلے میں امیدواری کی درخواست دیے جانے والے برس 1963 سے2018 تک ایک طویل عرصہ گزرنے کی وضاحت کرتے ہوئے اردوغان نے واضح کیا کہ 1963 سے اب تک ترکی سے آنکھ مچولی کی جا رہی ہے۔ کسی بھی رکن ملک سے ایسا ظلم نہیں کیا گیا۔ نہ 'ہاں' اور نہ ہی 'نہیں'۔ ان کو دوغلی پالیسیوں کو ایک طرف چھوڑتے ہوئے ہمیں مخلصانہ جواب دینا ہو گا۔ کیونکہ اس طرح نہ ہمارا وقت ضائع ہو گیا اور نہ ان کا۔ ہمیں اس معاملے میں جواب واضح اور عیاں چاہیے۔ میں سیاست میں ہر چیز کے دو ٹوک ، واضح اور درست ہونے کو پسند کرتا ہوں۔ اس قدم کو بھی اسی چیز کو بالائے طاق رکھتے ہوئے اٹھانا چاہیے۔ ہم اس معاملے میں اب اپنے صبر کی آخری لڑی تک پہنچ چکے ہیں، دیکھیں آگے کیا ہوتا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

امریکی رپورٹ کا خلاصہ؛ ہندوستان کی حکومت مسلم مخالف ! مسلم اداروں کے خلاف اقدامات؛ بی جے پی قائدین کی اشتعال انگیز تقاریر کا سلسلہ جاری؛ شہروں کے مسلم نام بدلنے کا بھی حوالہ

مذہبی آزادی سے متعلق  امریکہ کے اسٹیٹ  ڈپارٹمنٹ کی تازہ رپورٹ میں ہندوستان میں ہجومی تشدد، تبدیلی مذہب کی صورتحال، اقلیتوں کے قانونی موقف اور سرکاری پالیسیوں کا احاطہ کیا گیا  ہے۔ رپورٹ میں واضح کیا گیا ہے کہ  ہندوستان میں سال 2018 کے دوران ہندو انتہا پسند تنظیموں کی جانب سے ...

امریکہ اور ایران کے درمیان حالات انتہائی دھماکہ خیز ،خطے میں جنگ کا خطرہ،ہندوستان سمیت مختلف ممالک نے کیاہرمز سے پروازوں کا ر استہ تبدیل، سلامتی کونسل کا ہنگامی اجلاس

گزشتہ چنددنوں سے ایران اور امریکہ کے درمیان جاری کشیدگی میں اس وقت مزید شدت آگئی جب ایران نے امریکہ کے ڈرون کو مارگرایا۔

امریکہ کی طرف سے ہندوستان کو دھمکی روس سے ڈیل کی صورت میں دفاعی امداد محدود ہوجائے گی

امریکہ کی وزارت خارجہ کی افسر ایلس جی ویلس نے جمعہ کو کہا کہ ان کا ملک ہندوستان کی دفاعی ضروریات پورا کرنے کے لئے تیار ہے، لیکن روسی ایس-400 نظام اس میں رکاوٹ بن رہا ہے- ہندوستان-روس ڈیل سے امریکہ کا تعاون محدود کردیا جائے گا -